Book Name:Dilchasp Malomaat Sawalan Jawaaban Part 01

سوال             دن رات کے نوافل میں ایک سلام کے ساتھ کتنی رکعتیں پڑھی جاسکتی ہیں؟

جواب   دن کے نفل میں ایک سلام کے ساتھ چار رکعت سے زیادہ اور رات میں آٹھ رکعت سے زیادہ پڑھنا مکروہ ہے اور افضل یہ ہے کہ دن ہو یا رات ہو چار چار رکعت پر سلام پھیرے۔([1])

سوال             صَلوٰۃُ التَّسبِیح میں کون سی تسبیح پڑھی جاتی ہے ؟  

جواب   سُبْحٰنَ اللّٰہِ وَالْحَمْدُ لِلّٰہِ وَلَآ اِلٰہَ اِلَّا اللّٰہُ وَاللّٰہُ اَکْبَرْ۔([2])

تراویح

سوال             باقاعدہ طور پر تراویح کی جماعت کب سے شروع ہوئی؟

جواب   حضرت سَیِّدُنا عمر بن خطاب رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ کے دَورِ خلافت میں۔([3])

سوال             مولائے کائنات  شیرِ خدا کَرَّمَ اللہُ تَعَالٰی وَجْہَہُ الْکَرِیْمنے اس مبارک کام پر کیا دعائیہ کلمات ارشاد فرمائے؟

جواب   ” اللہ عَزَّ  وَجَلَّحضرت عمر رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی قبر کو روشن و مُنَوَّر فرمائے جیسے انہوں نے ہماری مسجدوں کو مُنَوَّر کر دیا۔“([4])

سوال             اُن پہلے حافظِ قرآن کا نام بتائیں جنہوں  نےتراویح میں قرآنِ پاک کی تلاوت فرمائی؟

جواب   حضرت سیِّدُنا اُبَی بن کعب رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ۔([5])

سوال             تراویح کی کتنی رکعتیں ہیں ؟

جواب   تراویح کی20رکعتیں ہیں ۔امیر المؤ منین حضرت سیِّدُنا عمر فاروقِ اعظم رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُ  کے عہدمبارک میں20 رکعتیں ہی پڑھی جاتی تھیں ۔([6])

سوال             نمازِ تراویح کا حکم بیان کریں؟

جواب   ہر عاقل و بالغ مسلمان پر تراویح پڑھنا سنتِ مُؤکَّدَہ ہے اور اِسے چھوڑنا جائز نہیں۔([7])

سوال             تراویح میں پورا قرآن مجید پڑھنے یا سننے کی شرعی حیثیت کیا ہے ؟

جواب   تراویح میں پورا کلامُ اللہ شریف پڑھنا اور سننا سُنّتِ مُؤکَّدَہ ہے ۔([8])

سوال             تنہا نمازِ تراویح ادا کرنا کیسا؟

جواب   تراویح کی جماعت سنتِ مُؤکَّدَہ عَلَی الْکِفَایَہ ہےیعنی اگر مسجد کے سارے لوگوں نے چھوڑ دی تو سب اِساءَ ت کے مُرْتَکِب ہوئے (یعنی برا کیا )اور اگر چند افراد نے باجماعت پڑھ لی تو تنہا پڑھنے والا جماعت کی فضیلت سے محروم رہا۔([9])

سوال             کیا بالغ افراد نابالغ امام کے پیچھے تراویح پڑھ سکتے ہیں؟

جواب   جی نہیں !  نا بالغ کے پیچھے بالغ افرادکی تراویح (بلکہ کوئی بھی نماز) نہیں ہوگی۔([10])

سوال   تراویح میں”بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمْ“بلند آواز سے پڑھنا چاہئے یا آ ہستہ ؟

جواب   تراویح میں”بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمْ“ ایک بار اونچی آ واز سے پڑھنا سُنَّت ہے اور ہر سورۃ کی ابتدا میں آہستہ پڑھنا مُسْتَحَب ہے۔([11])

سوال             کیا تراویح بیٹھ کر پڑھ سکتے ہیں ؟

جواب   جی نہیں !  تراویح بلا عذر بیٹھ کر پڑھنا مکروہ(تنزیہی )ہے، بلکہ بعض فقہائے کرام  عَلَیْہِمُ الرِّضْوَان کے نزدیک تو (بلا عذر بیٹھ کر ) تراویح ہوتی ہی نہیں۔([12])

سوال             عشاء کے فرضوں سے پہلے تراویح ادا کرلی تو ہوجائے گی؟

جواب   تراویح کا وقت عشاء کے فرض پڑھنے کے بعد سے صبحِ صادق تک ہے۔اگر عشاء کے فرض ادا کرنے سے پہلے پڑھ لی تو نہ ہو گی ۔([13])

 



1    در  مختار ، کتاب الصلاۃ، باب الوتر والنوافل ، ۲/۵۵۰۔

2   غنیۃ المتملي، صلاۃ التسبيح، ص۴۳۱۔

3   بخاری، کتاب صلاة التراویح، باب فضل من قام رمضان، ۱/ ۶۵۸، حدیث:۲۰۱۰۔

4   تاریخ ابن عساکر، رقم:۵۲۰۶، عمر بن الخطاب ، ۴۴/ ۲۸۰۔

1   بخاری، کتاب صلاة التراویح، باب فضل من قام رمضان، ۱/ ۶۵۸، حدیث:۲۰۱۰۔

2   معرفۃ السنن والآثار، کتاب الصلاۃ، باب قیام رمضان، ۲/۳۰۵، حدیث: ۱۳۵۶۔

3   در مختار، کتاب الصلاۃ، باب الوتر والنوافل، مبحث صلاۃ التراویح، ۲/۵۹۶۔

4   فتاویٰ رضویہ، ۷/۴۵۸۔

5   ھدایۃ، کتاب الصلاۃ، باب النوافل ، فصل فی قیام شھر رمضان ، ۱/۷۰۔

1   فتاوی ھندیۃ، کتاب الصلاۃ، الباب الخامس، الفصل الثالث، ۱/۸۵۔

2   بہارِ شریعت، حصہ ۴، ۱/۶۹۴۔

3   در مختار،  کتاب الصلاۃ، باب الوتر والنوافل، مبحث صلاۃ التراویح، ۲/۶۰۳۔

4   فتاوی ھندیۃ، کتاب الصلاۃ، الباب التاسع، فصل فی التراویح، ۱/۱۱۵۔



Total Pages: 99

Go To