Book Name:Dilchasp Malomaat Sawalan Jawaaban Part 01

فرماتے ہیں ۔ یوں ہی حکمت بھرے انداز میں مسلمانوں کوعلمِ دین سکھانے کے لیےمدنی چینل کا سلسلہ”ذہنی آزمائش“بھی مقبول ترین سلسلوں میں  سے ایک ہے ،  اس مقبولِ عام سلسلے میں پوچھے جانے والے سوالات  کے جوابات قرآن و حدیث اورمستنددینی کُتُب سے اخذ شدہ معلومات اورمدنی پھولوں پرمشتمل ہوتے ہیں۔

       دعوتِ اسلامی کی ”مجلس اَلْمَدِیْنَۃُ الْعِلْمِیَّہنے ان سوالات وجوابات کو کانٹ چھانٹ، تنقیح و تحقیق، تقدیم وتاخیراورتصحیح وتخریج کے مراحل سے گزار کرتحریری شکل  میں بنام”دلچسپ معلومات“ پیش کردیا ہے تاکہ معلومات کایہ خزانہ کتابی شکل میں محفوظ ہوجائے۔فی الحال حضور تاجدارِ انبیاوخَاتَمُ الرُّسُل صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکے مقدس نام”محمد“کے عدد 92 کی نسبت سے 92 موضوعات رکھے گئے ہیں، ہرموضوع کے تحت بارہویں شریف کی نسبت سے 12 سوالات  رکھے گئے ہیں اوران  کوجنت کے8دروازوں کی نسبت سےان8عنوانات کے تحت لایاگیاہے: (1)ایمان وعقائد(2)مسائل واحکام (3)سنتیں اورآداب (4)قرآن کریم (5)اچھی خصلتیں (6)بری خصلتیں(7)سیرت وحالات(8)متفرقات۔

       پیشِ نظر کتاب میں علمِ دین کا بہت بڑا خزانہ دلچسپ سوالات جوابات کی شکل میںموجود ہے،  کتاب مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے اسلامی بھائیوں اور اسلامی بہنوں کے لیے یکساں مفید ہے، سوالات کا انداز آسان ہونے کی وجہ سے بچے بھی انتہائی ذوق کے ساتھ اس کا مطالعہ کرسکتے ہیں ۔فرض علوم کے موضوعات بھی شامل ہیں جو ہرمسلمان کے لئے نہایت اہم ہیں، ساتھ ہی ساتھ کثیرسنتیں، آداب اور سیرت کے خوبصورت پہلو بھی اس کتاب میں موجود ہیں۔

       اللہ عَزَّ  وَجَلَّ کی بارگاہ میں دعا ہے کہ ہمیں اس کتاب کو پڑھنے ، اس پر عمل کرنے اور دوسرے اسلامی بھائیوں کو اس کے مطالعہ کی ترغیب دینے کی توفیق عطا فرمائے۔

اٰمین بجاہ النبی الامین صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم

مجلس المدینۃ العلمیہ(دعوتِ اسلامی)

تفسیر کی اہمیت

حضرت اِیاس بن معاویہ رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہ فرماتے ہیں : جو لوگ قرآنِ مجید پڑھتے ہیں اور وہ اس کی تفسیر نہیں جانتے ان کی مثال اُن لوگوں کی طرح ہے جن کے پاس رات کے وقت ان کے بادشاہ کا خط آیا اور ان کے پاس چراغ نہیں جس کی روشنی میں وہ اس خط کو پڑھ سکیں تو ان کے دل ڈر گئے اور انہیں معلوم نہیں کہ اس خط میں کیا لکھا ہے ؟  اور وہ شخص جو قرآن پڑھتا ہے اور اس کی تفسیر جانتا ہے اس کی مثال اس قوم کی طرح ہے جن کے پاس قاصد چراغ لے کر آیا تو انہوں نے چراغ کی روشنی سے خط میں لکھا ہوا پڑھ لیا اور انہیں معلوم ہوگیا کہ خط میں کیا لکھا ہے ۔  (تفسیر قرطبی،  باب ماجاء فی فضل تفسیر القرآن واھلہ،  ۱  /  ۴۱،  الجزء الاول ملخصاً)

  اللہ تعالٰی

سوال   واجبُ الْوُجودکس کو کہتے ہیں  اور اس سے کیا مراد ہے؟

جواب    ذاتِ باری تعالٰی کو واجبُ الْوُجودکہتے ہیں اوراس سے مراد وہ ذات ہے جس کا وجود ضروری ہو ۔([1])

سوال             اللہ تعالٰی کے قدیم اور اَزَلی ہونے کا  کیامطلب ہے؟

جواب   اللہ تعالٰی کے قدیم اور اَزَلی ہونے کا مطلب یہ ہے کہ وہ ہمیشہ سے ہے۔([2])

سوال   اللہ تعالٰی کےاَبَدی  ہونے سےکیا مراد ہے؟

جواب             اللہ تعالٰی کےاَبَدی ہونے سے مراد یہ ہےکہ وہ ہمیشہ رہے گا۔([3])

سوال   عِلمِ ذاتی کا کیا معنیٰ ہے؟

جواب   عِلمِ ذاتی کا یہ معنیٰ  ہے کہ بے خدا کے دیئے خود حاصل ہو۔([4])

سوال   عِلم ِذاتی کس کا خاصہ ہے؟

جواب   عِلمِ ذاتیاللہ تعالٰی کا خاصہ ہے۔([5])

سوال             اللہ تعالٰی کی ذاتی صفات کون کون سی ہیں؟

جواب     (1)حیات(2)قدرت (3)سننا (4)دیکھنا(5)کلام(6)علم  اور(7)ارادہ ۔یہاللہ تعالٰی کی ذاتی صفات ہیں۔([6])

سوال              اللہ تعالٰی کےقادر ہونے سے کیا مراد ہے؟

جواب     مراد یہ ہے کہ وہ ہرمُمکن پر قادر ہے کوئی ممکن اس کی قُدرت سے باہر نہیں۔([7])

سوال     دنیا کی زندگی میں جاگتی آنکھوں سے اللہ تعالٰی کا دیدار کس کے لئے  خاص ہے؟

 



1    بہار شریعت ، حصہ ۱، ۱/۲۔

2    بہار شریعت ، حصہ۱، ۱/۲-۳۔

3    بہار شریعت ، حصہ۱، ۱/۳۔

4    بہار شریعت ، حصہ۱، ۱/۱۱۔

5    الدولۃ المکیۃ بالمادۃ الغیبیۃ، ص۳۹۔

1    المسامرۃ شرح مسایرۃ، ص۳۹۱۔حدیقۃ ندیۃ، ۱/ ۲۵۳۔

2    تفسیر کبیر، پ۱۵، الکھف، تحت الآیۃ:۲۵، ۷/ ۴۵۴۔بہار شریعت ، حصہ١،  ۱/۶۔



Total Pages: 99

Go To