Book Name:Sirat ul Jinan Jild 9

عالِم نہیں  ہے ۔( خازن ،  المجادلۃ ،  تحت الآیۃ: ۱۰ ،  ۴  /  ۲۴۱)

            یہاں  موضوع کی مناسبت سے علم اور علماء کے15فضائل ملاحظہ ہوں :

(1)…ایک ساعت علم حاصل کرناساری رات قیام کرنے سے بہتر ہے۔( مسند الفردوس ،  باب الطائ ،  ۲  /  ۴۴۱ ،  الحدیث: ۳۹۱۷)

(2)…علم عبادت سے افضل ہے۔ (کنز العمال ،  حرف العین ،  کتاب العلم ،  قسم الاقوال ،  الباب الاول ،  ۵  /  ۵۸ ،  الجزء العاشر ،  الحدیث: ۲۸۶۵۳)

(3)…علم اسلام کی حیات اور دین کاستون ہے۔ (کنز العمال ،  حرف العین ،  کتاب العلم ،  قسم الاقوال ،  الباب الاول ،  ۵  /  ۵۸ ،  الجزء العاشر ،  الحدیث: ۲۸۶۵۷)

(4)…علماء زمین کے چراغ اور انبیاء ِکرام  عَلَیْہِ مُ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام کے وارث ہیں  ۔ (کنز العمال ،  حرف العین ،  کتاب العلم ،  قسم الاقوال ،  الباب الاول ،  ۵  /  ۵۹ ،  الجزء العاشر ،  الحدیث: ۲۸۶۷۳)

(5)…مرنے کے بعد بھی بندے کو علم سے نفع پہنچتا رہتا ہے۔( مسلم ،  ص۸۸۶ ،  الحدیث: ۱۴(۱۶۳۱))

(6)…ایک فقیہ شیطان پر ہزار عابدوں  سے زیادہ بھاری ہے۔( ترمذی ،  کتاب العلم ،  باب ما جاء فی فضل الفقہ علی العبادۃ ،  ۴  /  ۳۱۱ ،  الحدیث: ۲۶۹۰)

(7)…علم کی مجالس جنت کے باغات ہیں  ۔( معجم الکبیر ،  مجاہد عن ابن عباس ،  ۱۱  /  ۷۸ ،  الحدیث: ۱۱۱۵۸)

(8)…علم کی طلب میں  کسی راستے پر چلنے والے کے لئے اللّٰہ تعالیٰ جنت کا راستہ آسان کر دیتا ہے۔( ترمذی ،  کتاب العلم ،  باب فضل طلب العلم ،  ۴  /  ۲۹۴ ،  الحدیث: ۲۶۵۵)

(9)…قیامت کے دن علماء کی سیاہی اور شہداء کے خون کا وز ن کیا جائے گا تو ان کی سیاہی شہداء کے خون پر غالب آجائے گی۔( کنز العمال ،  حرف العین ،  کتاب العلم ،  قسم الاقوال ،  الباب الاول ،  ۵  /  ۶۱ ،  الجزء العاشر ،  الحدیث: ۲۸۷۱۱)

(10)…عالِم کے لئے ہر چیز مغفرت طلب کرتی ہے حتّٰی کہ سمندر میں  مچھلیاں  بھی مغفرت کی دعا کرتی ہیں ۔( کنز العمال ،  حرف العین ،  کتاب العلم ،  قسم الاقوال ،  الباب الاول ،  ۵  /  ۶۳ ،  الجزء العاشر ،  الحدیث: ۲۸۷۳۵)

(11)…علماء کی صحبت میں  بیٹھنا عبادت ہے۔( مسند الفردوس ،  باب المیم ،  ۴  /  ۱۵۶ ،  الحدیث: ۶۴۸۶)

(12)…علماء کی تعظیم کرو کیونکہ وہ انبیاء ِکرام  عَلَیْہِ مُ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام کے وارث ہیں ۔( ابن عساکر ،  عبد الملک بن محمد بن یونس بن الفتح ابو قعیل السمرقندی ،  ۳۷  /  ۱۰۴)

(13)…اہلِ جنت،جنت میں  علماء کے       محتاج ہوں  گے۔( ابن عساکر ،  محمد بن احمد بن سہل بن عقیل ابوبکر البغدادی الاصباغی ،  ۵۱  /  ۵۰)

(14)…علماء آسمان میں  ستاروں  کی مثل ہیں  جن کے ذریعے خشکی اور تری کے اندھیروں  میں  راہ پائی جاتی ہے۔( کنز العمال ،  حرف العین ،  کتاب العلم ،  قسم الاقوال ،  الباب الاول ،  ۵  /  ۶۵ ،  الجزء العاشر ،  الحدیث: ۲۸۷۶۵)

(15)…قیامت کے دن انبیاء ِکرام  عَلَیْہِ مُ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَام کے بعد علماء شفاعت کریں  گے۔( کنز العمال ،  حرف العین ،  کتاب العلم ،  قسم الاقوال ،  الباب الاول ،  ۵  /  ۶۵ ،  الجزء العاشر ،  الحدیث: ۲۸۷۶۶)

            اللّٰہ تعالیٰ ہمیں  علم ِدین حاصل کرنے اور اس پر عمل کرنے کی توفیق عطا فرمائے،اٰمین۔

            نوٹ:علم اور علماء ِکرام کے فضائل وغیرہ سے متعلق مزید معلومات حاصل کرنے کے لئے راقم کی کتاب’’علم اور علماء کی فضیلت‘‘ کا مطالعہ فرمائیں ۔

یٰۤاَیُّهَا الَّذِیْنَ اٰمَنُوْۤا اِذَا نَاجَیْتُمُ الرَّسُوْلَ فَقَدِّمُوْا بَیْنَ یَدَیْ نَجْوٰىكُمْ صَدَقَةًؕ-ذٰلِكَ خَیْرٌ لَّكُمْ وَ اَطْهَرُؕ-فَاِنْ لَّمْ تَجِدُوْا فَاِنَّ اللّٰهَ غَفُوْرٌ رَّحِیْمٌ(۱۲)

ترجمۂ کنزالایمان: اے ایمان والو جب تم رسول سے کوئی بات آہستہ عرض کرنا چاہو تو اپنی عرض سے پہلے کچھ صدقہ دے لو یہ تمہارے لیے بہتر اور بہت ستھرا ہے پھر اگر تمہیں  مقدور نہ ہو تو اللّٰہ بخشنے والا مہربان ہے۔

ترجمۂ کنزُالعِرفان: اے ایمان والو! جب تم رسول سے تنہائی میں  کوئی بات عرض کرنا چاہو تو اپنی عرض سے پہلے کچھ صدقہ دے لو، یہ تمہارے لیے بہت بہتر اور زیادہ پاکیزہ ہے، پھر اگر تم( اس پر قدرت)نہ پاؤ تو بیشک اللّٰہ بہت بخشنے والا، بڑا مہربان ہے۔

{یٰۤاَیُّهَا الَّذِیْنَ اٰمَنُوْۤا اِذَا نَاجَیْتُمُ الرَّسُوْلَ : اے ایمان والو! جب تم رسول سے تنہائی میں  کوئی بات عرض کرنا چاہو۔} ارشاد فرمایا کہ اے ایمان والو! جب تم رسولِ کریم  صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ سے تنہائی میں  کوئی بات عرض کرنا چاہو تو اپنی عرض سے پہلے کچھ صدقہ دے لو کہ اس میں  بارگاہِ رسالت صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ میں  حاضر ہونے کی تعظیم اور فقراء کا نفع ہے، یہ عرض کرنے سے پہلے صدقہ کرنا تمہارے لیے بہت بہتر ہے کیونکہ اس میں  اللّٰہ تعالیٰ اور اس کے حبیب  صَلَّی  اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کی اطاعت ہے اور یہ تمہیں  خطاؤں  سے پاک کرنے والا ہے ،پھر اگر تم اس پر قدرت نہ پاؤ تو اللّٰہ تعالیٰ بخشنے والا مہربان ہے۔( خازن ،  المجادلۃ ،  تحت الآیۃ: ۱۲ ،  ۴  /  ۲۴۱-۲۴۲ ،  روح البیان ،  المجادلۃ ،  تحت الآیۃ: ۱۲ ،  ۹  /  ۴۰۵ ،  ملتقطاً)