Book Name:Khof e Khuda عزوجل

یہ رونے کا مقام نہیں ؟ کیا اب بھی ہماری آنکھوں سے اللہ   عَزَّوَجَلَّ  کے خوف کے سبب آنسو نہیں نکلیں گے ؟کیا اب بھی ہمارے دل میں نیکیوں کی محبت نہیں بڑھے گی ؟ کیا اب بھی ہمیں گناہوں سے وحشت محسوس نہیں ہوگی ؟ آہ!اگر رحمت ِ خداوندی شامل ِ حال نہ ہوئی تو ہمارا کیا بنے گا؟…

مُنَاجَات

یا الٰہی  عَزَّوَجَلَّ ہر جگہ تیری عطا کا ساتھ ہو

جب پڑے مشکل شہِ مشکل کشا صَلَّی اللہُ  تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا ساتھ ہو

                                                            یا الٰہی  عَزَّوَجَلَّ بھول جاؤں نزع کی تکلیف کو 

            شادیٔ دیدارِ حسنِ مصطفی صَلَّی اللہُ  تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا ساتھ ہو 

یاالٰہی  عَزَّوَجَلَّ گورِ تیرہ کی جب آئے سخت رات

ان صَلَّی اللہُ  تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کے پیارے منہ کی صبح ِجانفزاء کا ساتھ ہو

یاالٰہی  عَزَّوَجَلَّ جب زبانیں باہر آئیں پیاس سے

صاحب ِ کوثر‘ شہِ جودوعطاصَلَّی اللہُ  تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا ساتھ ہو 

یاالٰہی  عَزَّوَجَلَّ گرمی ٔ  محشرسے جب بھڑکیں بدن

دامن ِ محبوب صَلَّی اللہُ  تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کی ٹھنڈی ہوا کا ساتھ ہو

یاالٰہی  عَزَّوَجَلَّ نامۂ اعمال جب کھلنے لگے 

       عیب پوشِ خلق ‘ستّارِ خطا صَلَّی اللہُ  تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا ساتھ ہو 

یاالٰہی  عَزَّوَجَلَّ جب بہیں آنکھیں حساب ِ جرم میں

  ان تبسم ریز ہونٹوں کی دعا کا ساتھ ہو

   

یاالٰہی  عَزَّوَجَلَّ رنگ لائیں جب میری بے باکیاں  

 ان کی نیچی نیچی نظروں کی حیاء کا ساتھ ہو 

     یا الٰہی  عَزَّوَجَلَّ جب چلوں تاریک راہ پل صراط

آفتابِ ہاشمی ‘نورالہدیٰ صَلَّی اللہُ  تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا ساتھ ہو

یاالٰہی  عَزَّوَجَلَّ جب سرِ شمشیر پر چلنا پڑے 

ربِّ سلِّم کہنے والے غمزُدہ صَلَّی اللہُ  تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا ساتھ ہو 

یاالٰہی  عَزَّوَجَلَّ جو دعائیں نیک میں تجھ سے کروں

قدسیوں کے لب سے آمیں ربَّنا کا ساتھ

یاالٰہی  عَزَّوَجَلَّ جب رضا خواب ِ گراں سے سر اٹھائے 

دولتِ بیدارِ عشقِ مصطفی صَلَّی اللہُ  تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا ساتھ ہو 

(حدائق ِ بخشش از امام اہل ِ سنت اعلیٰ حضرت الشاہ مولانا احمد رضا خان علیہ رحمۃ الرحمن)

(4)خوف ِ خدا  عَزَّوَجَلَّ  کے حوالے سے اسلاف کے حالات کا مطالعہ کرنا :

       خوفِ خدا  عَزَّوَجَلَّ  اپنانے میں معاون امور میں سے ایک یہ بھی ہے کہ اَسلافِ کرام کے اُن واقعات کا مطالعہ کیاجائے، جن میں خوفِ الٰہی  عَزَّوَجَلَّ  کا پہلو نمایاں ہو۔چنانچہ ذیل میں سرورِ کائنات صَلَّی اللہُ  تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ ، دیگر انبیاء علیھم السلام ، فرشتوں ، خلفائے راشدین ودیگر صحابہ کرام ، اہل ِ بیت اطہار، تابعین کرام، فقہائے اسلام ، محدثین عظام، علماء و اولیاء وغیرھم رضی اللہ   تَعَالٰی  عنھم اجمعین کے منتخب واقعات پیش کئے گئے ہیں ……

  (1)(قبر کی تیاری کرو… )

        حضرت سیدنا بَرَاء بن عازب رَضِیَ اللہُ  تَعَالٰی  عَنْہُ  فرماتے ہیں کہ ہم سرکارِ مدینہ صَلَّی اللہُ  تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  کے ہمراہ ایک جنازہ میں شریک تھے، آپ صَلَّی اللہُ  تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ   قبر کے کنارے بیٹھے اور اتنا روئے کہ آپ کی چشمانِ اقدس سے نکلنے والے آنسوؤں سے مٹی نم ہوگئی ۔ پھر فرمایا ، ’’اے بھائیو! اس قبر کے لئے تیاری کرو۔‘‘

(سنن ابن ماجہ، کتاب الزھد والبکاء ، ج۴، ص۴۶۶، رقم الحدیث ۴۱۹۵)

  (2) (بادلوں میں کہیں عذاب نہ ہو… )

        حضرت عائشہ صدیقہ رَضِیَ اللّٰہ تعالٰی عَنہا سے مروی ہے کہ جب رسولِ اکرم ، شفیع معظمصَلَّی اللہُ  تَعَالٰی  عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  تیز آندھی کو ملاحظہ فرماتے اورجب بادل آسمان پر چھا جاتے تو آپ



Total Pages: 42

Go To