Book Name:Bunyadi Aqaid Aur Mamolat e Ahlesunnat

سوال : جوکہے  میں جہنم سے  یا عذاب سے  نہیں ڈرتا اس کے  بارے  میں کیا حکم ہے ؟

جواب :  کسی سے  کہا :  گناہ نہ کر، ورنہ خدا تجھے  جہنم میں ڈالے  گا، اس نے  کہا :  میں جہنم سے  نہیں ڈرتا، یا کہا :  خدا کے  عذاب کی کچھ پروا نہیں ۔یا ایک نے  دوسرے  سے  کہا :  تو خدا سے  نہیں ڈرتا؟ اُس نے  غصّہ میں کہا :  نہیں، یا کہا :  خدا کیا کر سکتا ہے  اس کے  سوا کیا کر سکتا ہے  کہ دوزخ میں ڈا لدے  ۔یا کہا :  خدا سے  ڈر، اس نے  کہا :  خدا کہاں ہے ؟ یہ سب کفر کے  کلمات ہیں ۔

سوال :  اگر کوئی یہ کہے  میں اِنْ شَآءَ اللہ کے  بغیر کام کروں گا تو کیا حکم ہے ؟

جواب :  کسی سے  کہا :  اِنْ شَآءَ اللہ تم اس کام کو کرو گے ، اس نے  کہا :  میں بغیر اِنْ شَآءَ اللہ کرونگا یا ایک نے  دوسرے  پر ظلم کیا مظلوم نے  کہا :  خدا نے  یہی مُقدّر کیا تھا، ظالم نے  کہا :  میں بغیر اللہ (عَزَّ وَجَلَّ) کے  مُقدّر کیے  کرتا ہوں، یہ کفر ہے  ۔   

سوال :  کیا محتاجی کفر ہے ؟

جواب : کسی مسکین نے  اپنی محتاجی کو دیکھ کر یہ کہا :  اے  خدا ! فلاں بھی تیرا بندہ ہے  اس کو تو نے  کتنی نعمتیں دے  رکھی ہیں اور میں بھی تیرا بندہ ہوں مجھے  کس قدر رَنج وتکلیف دیتا ہے  آخر یہ کیا انصاف ہے  ایسا کہنا کفر ہے ۔حدیث میں ایسے  ہی کے  لیے  فرمایا :  ’’کَادَ الْفَقْرُاَنْ یَّکُوْنَ کُفْرًا‘‘([1])محتاجی کفر کے  قریب ہے  کہ جب محتاجی کے  سبب ایسے  نا ملائم کلمات صادر ہوں جو کفر ہیں تو گویا خود محتاجی قریب بکفر ہے ۔

سوال :  اللہ عَزَّ وَجَلَّ کے  نام کی تصغیر کرنا کیسا ہے  ؟

جواب :  اللہ عَزَّ وَجَلَّ کے  نام کی تصغیر کرناکفر ہے ، جیسے  کسی کا نام عبد اللہ یا عبد الخالق یا عبدالرحمٰن ہو اسے  پکارنے  میں آخر میں الف وغیرہ ایسے  حروف ملا دیں جس سے  تصغیر سمجھی جاتی ہے ۔

سوال :  تیرا باپ اللہ اللہ کرتا ہے  یہ کہنا کیسا ہے ؟

جواب :  ایک شخص نماز پڑھ رہا ہے  اسکا لڑکا باپ کو تلاش کر رہا تھا اور روتا تھا کسی نے  کہا :  چُپ رہ تیرا باپ اللہ اللہ کرتا ہے  یہ کہنا کفر نہیں کیونکہ اسکے  معنی یہ ہیں کہ خدا کی یاد کرتا ہے ۔اور بعض جاہل یہ کہتے  ہیں، کہ لَا اِلٰہَ پڑھتا ہے  یہ بہت قبیح ہے  کہ یہ نفی محض ہے ، جس کا مطلب یہ ہوا کہ کوئی خدا نہیں اور یہ معنی کفر ہیں ۔

انبیاءِ کرام عَـلَيْـهِمُ الصَّلٰوۃُ  وَ الـسَّـلَام سے  متعلق کفریہ کلمات

سوال : انبیاءِ کرام عَـلَيْـهِمُ الصَّلٰوۃُ  وَ الـسَّـلَام کی طرف بے  حیائی کی نسبت کرنے  کا کیا حکم ہے ؟

    جواب :  انبیاء عَـلَيْـهِمُ الصَّلٰوۃُ  وَ الـسَّـلَامکی توہین کرنا، ان کی جناب میں گستاخی کرنا یا ان کو فَواحش و بے  حیائی کی طرف منسوب کرنا کفر ہے ، مثلاً معاذاﷲ یوسف عَـلَيْـهِ  الصَّلٰوۃُ  وَ الـسَّـلَام کو زنا کی طرف نسبت کرنا۔

سوال :  نبی اکرم صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم کو خاتمُ النّبیین نہ جاننے  والےنیز آپ صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم سے  منسوب اشیاء کی توہین کرنے  والے  کے  بارے  میں کیاحکم ہے  ؟

جواب :  جو شخص حضورِ اقدس صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم کو تمام انبیا میں آخر نبی نہ جانے  یا حضور (صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم) کی کسی چیز کی توہین کرے  یا عیب لگائے ، آپ کے  موئے  مبارک کو تحقیرسے  یاد کرے ، آپ کے  لباس مبارک کو گندہ اور میلا بتائے ، حضور (صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم) کے  ناخن بڑے  بڑے  کہے  یہ سب کفر ہے ، بلکہ اگر کسی کے  اس کہنے  پر کہ حضور (صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم) کو کدّو پسند تھا کوئی یہ کہے  مجھے  پسند نہیں تو بعض علما کے  نزدیک کافر ہے  اور حقیقت یہ کہ اگر اس حیثیت سے  اُسے  ناپسند ہے  کہ حضور (صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم) کو پسند تھا تو کافر ہے  ۔یوہیں کسی نے  یہ کہا کہ حضورِ اقدس صَلَّى اللهُ تَعَالٰى عَلَيْهِ وَاٰلِهٖ وَسَلَّم کھانا تناول فرمانے  کے  بعد تین بار اَنگشت ہائے  مبارکہ چاٹ لیا کرتے  تھے ، اس پر کسی نے  کہا :  یہ ادب کے  خلاف ہے  یا کسی سنّت کی تحقیر کرے ، مثلاً داڑھی بڑھانا، مونچھیں کم کرنا، عمامہ باندھنا یا شملہ لٹکانا، ان کی اِہانت کفر ہے  جبکہ سنّت کی توہین مقصود ہو۔

سوال :  اپنے  آپ کو پیغمبر کہنے  والے  کا کیا حکم ہے  ؟

جواب :  اب جو اپنے  کو کہے  میں پیغمبر ہوں اور اسکا مطلب یہ بتائے  کہ میں پیغام پہنچاتا ہوں وہ کافر ہے  یعنی یہ تاویل مَسموع نہیں کہ عُرف میں یہ لفظ رسول و نبی کے  



[1]    شعب الإیمان، باب فی الحث على ترك الغل والحسد ، ۵/ ۲۶۷، حدیث : ۶۶۱۲



Total Pages: 50

Go To