Book Name:Wilayat ka Aasan Rasta: Tasawwur-e-Shaikh

تبلیغِ قرآن وسنّت کی عالمگیر غیر سیاسی تحریک ’’دعوتِ اسلامی‘‘ نیکی کی دعوت،  اِحیائے سنّت اور اشاعتِ علمِ شریعت کو دنیا بھر میں   عام کرنے کا عزمِ مُصمّم رکھتی ہے،  اِن تمام اُمور کو بحسن و خوبی سر انجام دینے کے لئے متعد د مجالس کا قیام عمل میں   لایا گیا ہے جن میں   سے ایک مجلس ’’ المد ینۃ العلمیۃ ‘‘ بھی ہے جو دعوتِ اسلامی کے علماء و مفتیانِ کرام کَثَّرَ ھُمُ اللّٰہُ تَعَالٰی پر مشتمل ہے ، جس نے خالص علمی،  تحقیقی اور اشاعتی کام کا بیڑا اٹھایا ہے۔ اس کے مندرجہ ذیل چھ شعبے ہیں  :

{1}شعبۂ کُتبِ اعلیٰ حضرت                        {2}شعبۂ درسی کُتُب

{3}شعبۂ اصلاحی کُتُب                  {4}شعبۂ ترا    جمِ کتب

{5}شعبۂ تفتیشِ کُتُب                     {6}شعبۂ تخریج

            ’’المدینۃ العلمیۃ‘‘ کی اوّلین ترجیح سرکارِ اعلیٰ حضرت اِمامِ اَہلسنّت،  عظیم البَرَکت،  عظیم ُالمرتبت،  پروانۂ شمعِ رِسالت،  مُجَدِّدِ دین ومِلَّت،  حامیٔ سنّت ،  ماحیٔ بِدعت،  عالِمِ شَرِیْعَت،  پیرِ طریقت،  باعثِ خَیْر و بَرَکت،  حضرتِ علاّمہ مولیٰنا الحاج الحافِظ القاری شاہ امام اَحمد رَضا خان عَلَیْہِ رَحْمَۃُ الرَّحْمٰن کی گِراں   مایہ تصانیف کو عصرِ حاضر کے تقاضوں   کے مطابق حتَّی الْوَسْع سَہْل اُسلُوب میں   پیش کرنا ہے۔ تمام اسلامی بھائی اور اسلامی بہنیں   اِس عِلمی ، تحقیقی اور اشاعتی مدنی کام میں   ہر ممکن تعاون فرمائیں   اور مجلس کی طرف سے شائع ہونے والی کُتُب کا خود بھی مطالَعہ فرمائیں   اور دوسروں   کو بھی اِس کی ترغیب دلائیں  ۔

          اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ ’’دعوتِ اسلامی‘‘ کی تمام مجالس بَشُمُول’’المدینۃ العلمیۃ‘‘ کو دن گیارہویں   اور رات بارہویں   ترقّی عطا فرمائے اور ہمارے ہر عملِ خیر کو زیورِ اخلاص سے آراستہ فرما کر دونوں   جہاں   کی بھلائی کا سبب بنائے۔ ہمیں   زیرِ گنبدِ خضرا شہادت،  جنّت البقیع میں   مدفن اور جنّت الفردوس میں   جگہ نصیب فرمائے۔

                                 اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم

                                                            رمضان المبارک ۱۴۲۵ھ

پیش لفظ

            تصوُّرِ شیخ کا عمل بزرگانِ دین رَحِمَہُمُ اللّٰہُ الْمُبِیْن سے چلا آرہا ہے،  اور اس کے طریقے بھی ان کی کتابوں   میں   موجود ہیں   اوریہ بہت اچھا عمل ہے لیکن کچھ لوگ شیطانی بہکاوے میں   آکر عوام کو گمراہ کرنے اورانہیں   نیک ہستیوں   سے دور کرنے کیلئے مختلف قسم کے وسوسے دیتے ہیں  ،  انہی وسوسوں   کوجڑ سے کاٹنے کیلئے اعلیٰ حضرت امام اہلسنّت مولانا شاہ امام احمد رضا خان عَلَیْہِ رَحْمَۃُ الرَّحْمٰننے یہ  رسالہ ’’اَلْیَاقُوْتَۃُ الْوَاسِطَۃُ فِيْ قَلْبِ عَقْدِ الرَّابِطَۃِ‘‘ (وہ یاقوت جو خالص عقد رابطہ کا ذریعہ ہے)۱۳۰۹ہجری میں    تحریر فرمایا اورمسلمانوں   کے عقائد کی اصلاح کے عظیم جذبہ کے پیش نظر اِن شیطانی وسوسوں    کو دلائل کے ساتھ دور کرتے ہوئے تصورِ شیخ کے اس عمل کو نہ صرف بزرگانِ دین  رَحِمَہُمُ اللّٰہُ الْمُبِیْنکے فرامین سے ثابت کیا بلکہ دلائل میں   ان اکابرین کی عبارتیں   بھی ذکر کیں  جو وسوسہ دینے والوں   کے نزدیک بھی محترم ومعتبر ہیں  ۔

            یہ رسالہ اپنے اختصار وجامعیت کی بناء پرفی زمانہ تشریح طلب تھا چنانچہ شیخ الحدیث مفتی ابو الصالح محمد قاسم قادری  مَدَّظِلَّہُ الْعَالِی نے اس کے مشکل مقامات کی تشریح،  مشکل الفاظ کی تسہیل کا کام سر انجام دیا اورپڑھنے والے کی توجہ برقرار رکھنے کیلئے خود کو امام اہلسنّت رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْہُکی جانب سے مخاطب کیاہے ۔

             تبلیغ قرآن وسنت کی عالمگیر غیر سیاسی تحریک دعوتِ اسلامی کی مجلس ’’المدینۃ العلمیہ ‘‘ کے شعبۂ کتب اعلیٰ حضرت کے مدنی علماء نے اس پرمندرجہ ذیل کام کئے :

             ۱۔ آیات واحادیث اور دیگر عبارات کی مقدور بھر تخریج کی گئی ہے۔

            ۲۔ آیاتِ قرآنیہ کا ترجمہ ’’کَنْزُالْاِیْمَان‘‘ سے کیا گیاہے۔

            ۳۔ مشکل الفاظ پر بھی حَتَّی الْاِمْکَان اعراب کی ترکیب کی گئی ہے تاکہ تلفُّظ کی غلطی سے بچا جاسکے۔

            ۴۔ اَغلاط سے حَتَّی الْمَقْدُور محفوظ رکھنے کیلئے تقابل،  پروف ریڈنگ کے مراحل سے گزارا گیا ہے ۔

                ۵۔ عربی وفارسی عبارات کا اصل کتب سے تقابل اورنظر ثانی بھی کی گئی ہے۔

            ۶۔جن عبارتوں   کی تخریج کتب کی عدم دستیابی کی بناء پرنہ ہوسکیں  ، حاشیہ میں   ان کے صرف نام لکھدیے گئے ہیں   تاکہ بعد میں  دستیابی کی صورت میں   کسی بڑی تبدیلی کے بغیر ان کی تخریج کی جاسکے ۔

            ۷۔عربی اردو اورفارسی عبارتوں   کو جداگانہ فاؤنٹ سے ممتاز کیا گیا ہے۔

                ۸۔طویل عربی اور فارسی عبارات کا ترجمہ ان کے سامنے ہی کردیا گیا ہے تاکہ پڑھنے اور سمجھنے میں   آسانی ہو۔

            ۹۔ آیاتِ قرآنیہ کو منقش بریکٹ {   } ،  متنِ احادیث کو ڈبل بریکٹ ((  ))،  اور دیگر اَہم عبارات کو Inverted commas  ’’  ‘‘ سے ممتاز کیا گیا ہے۔

            ۱۰۔ نئی گفتگو نئی سطرمیں   درج کی گئی ہے تاکہ پڑھنے والوں   کو آسانی ہو۔

            ۱۱۔ علاماتِ ترقیم مثلاً:فل اسٹاپ(۔)،  کومہ(، )،  کالن(:) وغیرہ کا بھی اہتمام کیاگیاہے۔

            ۱۲۔ فہرست میں  اہم نکات کو جدا جدا لکھ کر پورے رسالہ کا اجمالی خاکہ پیش کر دیا گیا ہے۔

 



Total Pages: 27

Go To