Book Name:Rasail e Madani Bahar

(مدینہ :  دعوتِ اسلامی کی اِصطلاح میں خود کو مَدَنی کام کرنے کے لئے مَدَنی مرکزکے حوالے کردینے کو ’’وقفِ مدینہ‘‘ کہتے ہیں )

اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  کی امیرِاہلسنّت پَررَحمت ہواوران کے صد قے ہماری مغفِرت ہو۔

صَلُّوْاعَلَی الْحَبِیب!        صلَّی اللّٰہُ تعالٰی عَلٰی محمَّد

(5)خطرناک دوروں کے مرض سے نجات

        باب المدینہ (کراچی) میں مقیم اسلامی بھائی کے بیان کا خلاصہ ہے :  میری بہن (جو کہ امیرِاہلسنّت سے مرید ہیں ) کو کافی عرصے سے عجیب و غریب قسم کے دورے پڑنے کا مرض لاحق تھا۔ جب کبھی دورہ پڑتا تو اچانک ان کی حالت غیر ہو جاتی۔ بہن کی اس حالت کو دیکھ کر گھر کے تمام افراد بہت زیادہ پریشان رہتے۔ اس مرض سے نجات حاصل کرنے کے لئے بڑے بڑے ڈاکٹروں ، حکیموں اور عاملوں سے علاج کروایا لیکن میری بہن کی صحت دن بدن بگڑتی ہی جا رہی تھی۔ اسی پریشانی کے عالم میں ایک دن میری بہن نمازِعشاء پڑھ کر اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  کی رحمت کی امید رکھتے اور مرشدِکریم دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکو یاد کرتے ہوئے سو گئی۔ ظاہری آنکھیں تو کیا بند ہوئیں ان کے تو نصیب ہی جاگ اٹھے بیدار ہونے پر انہوں نے بتایا اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  کا کرم ہو گیا، کیا دیکھتی ہوں کہ حسین و جمیل نورانی چہرہ چمکاتے، سفید لباس میں ملبوس، نظریں جھکائے امیرِاہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہآنکھوں کے سامنے موجود ہیں اور ارشاد فرما رہے ہیں :  ’’بیٹی! پریشان نہ ہوں ، صبح نمازِفجر اداکرنے کے بعد فریج میں رکھا ہوا عرقِ گلاب آنکھوں میں چند قطرے ڈال لینا اِن شَآئَ اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  ٹھیک ہو جاؤ گی۔‘‘ چنانچہ میری بہن نمازِفجر سے فراغت کے بعد فریج کی طرف بڑھی جب فریج کا دروازہ کھولا تو واقعتا وہاں عرقِ گلاب موجود تھا (حالانکہ ہم میں سے کسی نے بھی فریج میں وہ عرق نہیں رکھا تھا)۔ اب تو یقین مزید پختہ ہو گیا کہ اِن شَآئَ اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  شِفا ضرور ملے گی۔ یقینِ کامل کے ساتھ فریج سے عرقِ گلاب کی شیشی اٹھائی اور امیرِاہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکے فرمان کے مطابق آنکھوں میں چند قطرے ٹپکا لئے۔ عرق کے ان قطروں کے آنکھوں میں پہنچنے کے بعد سے میری بہن کی طبیعت سنبھلنے لگی چند روز بعد ہی انہوں نے بتایا کہ میں اپنے اندر تبدیلی محسوس کرنے لگی ہوں ۔ اَلْحَمْدُ لِلّٰہ   عَزَّوَجَلَّ  وہ دن اور آج کا دن تادمِ تحریر دو سال ہو چکے ہیں ڈاکٹروں کی لکھی ہوئی دوائیاں استعمال کئے بغیر ہی اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  نے امیرِ اہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکی نظرِعنایت کے صدقے اس موذی مرض سے اس طرح شفا عطا فرما دی گویا وہ بیمار ہی نہیں تھیں ۔

اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  کی امیرِاہلسنّت  پَررَحمت ہواوران کے صد قے ہماری مغفِرت ہو۔

صَلُّوْاعَلَی الْحَبِیب!        صلَّی اللّٰہُ تعالٰی عَلٰی محمَّد

(6)مشکبارمَدَنی ماحول کی برکتیں

        بھکر (پنجاب، پاکستان) میں مقیم ایک اسلامی بھائی کے بیان کا خلاصہ ہے :  تبلیغِ قراٰن وسنّت کی عالمگیر غیر سیاسی تحریک دعوتِ اسلامی کے مہکے مہکے مشکبار مدنی ماحول سے وابستگی سے قبل دین سے دوری کی وجہ سے میں گناہوں کی دلدل میں دھنستا چلا جا رہا تھا۔ چوریاں ، ڈکیتیاں ، لڑائی جھگڑے کرنا، حقوق العباد پامال کرنا، غریبوں مسکینوں کی اَملاک پر قبضہ جما لینا علاقے بھر میں میری پہچان بن چکا تھا۔ اس کے علاوہ فضول کھیلوں کی عادت، جانور لڑوانا میرے پسندیدہ مشغلے تھے۔ میری زندگی میں مدنی انقلاب برپا ہونے میں سب سے بڑا کردار ہمارے علاقے میں موجود دعوتِ اسلامی کے مَدَنی ماحول سے وابستہ اسلامی بھائیوں کا ہے کہ جنہوں نے رات دن اِنفرادی کوشش کر کے مجھ گنہگار کو دعوتِ اسلامی کے مَدَنی ماحول سے وابستہ کیا۔ میری مَدَنی ماحول سے وابستگی کچھ اسطرح وقوع پذیرہوئی کہ رمضان المبارک کابابرکت مہینہ اپنی بہاریں لٹا رہا تھا اور دعوتِ اسلامی کے تحت ہونے والا تربیتی اعتکاف قریب آتا جا رہا تھا۔ علاقے کے اسلامی بھائیوں نے انفرادی کوشش کرتے ہوئے مجھے بھی تربیتی اعتکاف کی ترغیب دلائی۔ آخرکاران کی مسلسل انفرادی کوششوں کی برکت سے مجھے تربیتی اعتکاف میں شرکت کی سعادت حاصل ہوگئی۔ مدنی ماحول کی طرف میرایہ پہلا قدم تھا جو کہ مجھے دعوتِ اسلامی کے قریب سے قریب ترہونے میں مددگار ثابت ہوا اور گناہوں سے نفرت، نیکیوں کی محبت دلانے میں معاون بنا۔ اجتماعی اعتکاف میں امیرِاہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکے ہونے والے سنّتوں بھرے بیانات نے میری زندگی میں مدنی انقلاب برپا کر دیا، میں نے سچے دل سے توبہ کی اور آئندہ ان گناہوں سے بچنے کا عزمِ مصمم کرلیا۔ دورانِ اعتکاف ہی میں نے شیخِ طریقت، امیرِاہلسنّت حضرت علاّمہ مولانا ابوبلال محمد الیاس عطّار قادِری رَضَوی دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہسے شرفِ بیعت حاصل کرلیا ۔ اَلْحَمْدُلِلّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  ان برکتوں سے میرے اندر پائی جانے والی تمام برائیاں ختم ہو گئیں ۔ تادمِ تحریر فرائض و واجبات کی پابندی کے ساتھ ساتھ میں نے مدنی قافلوں میں عاشقانِ رسول کے ساتھ راہ خدامیں سفر کو اپنا معمول بنا لیاہے۔     

اَلْحَمْدُ لِلّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  مدنی قافلوں میں سفر کی برکت سے دورانِ قافلہ کئی بار مجھے امیرِاہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکی خواب میں زیارت بھی نصیب ہوئی ہے۔ ایک مرتبہ میرا مدنی منّا سخت بیمار ہو گیا، پریشانی کی حالت میں رات سویا تو میری قسمت جاگ اٹھی شیخِ طریقت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہنے خواب میں کرم نوازی فرمائی کیا دیکھتا ہوں کہ نورانی چہرہ چمکاتے امیرِ اہلسنّت  دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ  میرے سامنے تشریف فرما ہیں اور ارشاد فرما رہے ہیں :  ’’آپ کا مدنی منّاجو بیمار ہے وہ کہاں ہے؟‘‘ میں نے خواب ہی میں اپنے مدنی منے کو آواز دی، میرا بیٹا فوراً آ گیا۔ آپ دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہنے اس کے سر پر اپنا دستِ مبارک پھیرتے ہوئے ارشاد فرمایا :  ’’اِن شآء اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  آپ کا مَدَنی منّا ٹھیک ہو جائے گا۔‘‘ ساتھ ہی آپ دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہنے مدینۃُالاولیاء ملتان میں ہونے والے دعوتِ اسلامی کے تین روزہ بین الاقوامی سنتوں بھرے اجتماع میں شرکت کی بھی ترغیب دلائی اور دیکھتے ہی دیکھتے آپ دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہمیری آنکھوں سے اوجھل ہو گئے۔ اس خواب کے بعد اَلْحَمْدُ لِلّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  میرا مدنی منّا بالکل تندرست ہو گیا۔ شیخِ طریقت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکی خواب میں دی جانے والی دعوت پر لبیک کہتے ہوئے میں نے اسی سال مدینۃُالاولیاء ملتان میں ہونے والے دعوتِ اسلامی کے تین روزہ بین الاقوامی سنتوں بھرے اجتماع میں اپنے مدنی منّے کے ہمراہ شرکت کی سعادت حاصل کی۔

 



Total Pages: 81

Go To