Book Name:Rasail e Madani Bahar

درس کی برکت سے اپنے گناہوں سے تائب ہو کر امیرِ اہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ سے بیعت ہو چکا تھا۔ نیز مدنی ماحول سے وابستہ ہو کر مدنی مقصد ’’مجھے اپنی اور ساری دنیا کے لوگوں کی اصلاح کی کوشش کرنی ہے‘‘ کو اپنا اوڑھنا بچھونا بنا لیا تھا۔   اب میرا دل کڑھتا اور مجھے یوں محسوس ہوتا کہ کوئی مجھ سے کہہ رہاہے’’ آپ خود درس کیوں نہیں شروع کر لیتے۔‘‘ چنانچہ میں نے ایک اسلامی بھائی کوساتھ لیا اور فیضانِ سنّت کا درس دینا شروع کر دیا۔ جس کی برکت سے میں نے اپنے قول و فعل میں ایک نمایاں تبدیلی محسوس کی ۔ میری قسمت کا ستارہ چمک اٹھا ایک رات  سویا ہوا تھا کہ میرے بھاگ جاگ اٹھے کیا دیکھتا ہوں کہ امیرِاہلسنّت  دَامَت بَرَکاتُہُمُ العَالِیَہ  بیان فرما رہے ہیں اور میں کافی دور سے آپ کے دیدار سے فیض یاب ہو رہا ہوں ۔ میرے دل میں خیال آیا کہ کاش امیرِ اہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ کے قریب جا سکتا۔ اس خیال کا آنا تھا اچانک میں نے امیرِاہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکو اپنے قریب پایا۔ آپ مسکرا رہے تھے۔ میں نے مصافحہ کیا اور ادب سے ان کے قریب بیٹھ گیا۔ اس واقعہ کے بعد میں نے باقاعدگی سے درسِ فیضانِ سنّت جاری رکھا اور اَلْحَمْدُ لِلّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  تادم تحریر  دعوت اسلامی کے مہکے مہکے مدنی ماحول سے وابستہ ہوں ۔

صَلُّوْاعَلَی الْحَبِیب!         صلَّی اللّٰہُ تعالٰی عَلٰی محمَّد

(9) درس کی برکت

       ضلع لودھراں (صوبہ پنجاب، پاکستان) کے مقیم اسلامی بھائی کے بیان کا لُبِّ لُباب ہے :  میں باب المدینہ( کراچی) میں ایک اسٹیل انڈسٹری میں ملازم تھا ایک دن نماز پڑھنے کیلئے مسجد میں جانا ہوا ۔ نماز پڑھنے کے بعد جونہی میں واپس آنے لگا ایک سبز سبز عمامے والے اسلامی بھائی نے آگے بڑھ کر نہایت خندہ پیشانی سے ملاقات کرتے ہوئے درس میں شرکت کی دعوت کچھ ایسے دلنشین انداز میں پیش کی کہ میں انکا ر نہ کرسکا اور درسِ فیضانِ سنّت میں بیٹھ گیا۔ فیضانِ سنّت کے عام فہم الفاظ اور درس دینے والے اسلامی بھائی کا انداز کچھ ایسا پراثر تھا کہ میں متأثر ہوئے بغیر نہ رہ سکا۔ درس کے بعد میں واپس جانے لگا تو ایک عاشقِ رسول اسلامی بھائی آگے بڑھے مجھ سے ملاقات کی اور انفرادی کوشش کرتے ہوئے دعوتِ اسلامی کے سنّتوں بھرے ہفتہ وار اجتماع کی دعوت پیش کی۔ میں نے انہیں شرکت کی یقین دہانی کروائی۔ بالآخر میں سنّتوں بھرے اجتماع کی پر کیف فضاؤں میں پہنچ گیا۔ سنّتوں بھرے اجتماع کا ہر منظر ہی نرالہ تھا۔ پرسوز بیان سنا تو دل و دماغ کے بند دریچے کھل گئے۔ ذکر اور آخر میں رقت انگیز دعا نے تو میری کایا ہی پلٹ دی۔ میری سوچ و فکر کو یکسر بدل کر رکھ دیا میرے دل میں نیکیوں کا شوق اور گناہوں سے نفرت کا کچھ ایسا جذبہ پیدا ہوا کہ میں مدنی ماحول کا ہو کر رہ گیا۔ اسلامی بھائیوں کی مزید شفقتوں کی برکت سے دو ہفتے میں ہی عمامہ سجا کر اپنا’’ سر سبز سبز‘‘ کر لیا۔ اَلْحَمْدُ لِلّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  جب سے مدنی ماحول کی پر نور فضائیں میسر آئی ہیں نمازوں کی پابندی کے ساتھ ساتھ مدنی قافلوں میں سنّتوں بھرا سفر اور سنّتوں بھرے اجتماعات میں شرکت میرا معمول بن گیا ہے۔ اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  اپنے برگزیدہ بندوں کے صدقے ہماری مغفرت فرمائے اور مہکے مہکے مدنی ماحول میں استقامت عطا فرمائے۔

اللّٰہ عَزّوَجَلَّ کی امیرِاہلسنّت پَررَحمت ہواوران کے صد قے ہماری مغفِرت ہو۔

صَلُّوْاعَلَی الْحَبِیب!         صلَّی اللّٰہُ تعالٰی عَلٰی محمَّد 

(10) فیشن پرستی سے توبہ

       مرکزالاولیاء (لاہور) کے علاقے مانگا منڈی کے مقیم اسلامی بھائی کا بیان کچھ اس طرح ہے کہ میں ایک فیشن پرست نوجوان تھا۔ دنیا کی رونقوں میں منہمک زندگی کے نادر لمحات ضائع کر رہا تھا۔ میری زندگی کے سیاہ پہر میں سعادتوں کی کرنیں کچھ یوں نمودار ہوئیں کہ ہمارے محلہ کی مسجد میں ایک اسلامی بھائی درسِ فیضانِ سنّت کیلئے تشریف لایا کرتے ۔ خوش قسمتی سے ایک دن میں بھی درس میں شریک ہو گیا۔ انہوں نے درودو سلام کی فضلیت بیان کی جسے سن کر دل خوشی سے جھومنے لگا کہ اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  کے پیارے رسول صَلَّی اللّٰہ تَعالٰی عَلیہ واٰلہٖ وَسلَّم پر درود پاک پڑھنے والوں پر اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  کی رحمتوں کی کیسی چھما چھم بارش برستی ہے۔ درسِ فیضانِ سنّت کے بعد میری ملاقات ایک عاشقِ رسول اسلامی بھائی سے ہو گئی ان کا اندازِ ملاقات اور گفتگو کا دلنشین انداز مجھے بہت اچھا لگا انہوں نے شفقت فرماتے ہوئے مدنی قافلے کی برکتیں بتائیں کہ دعوتِ اسلامی کے مدنی قافلوں میں دعائیں قبول ہوتی ہیں پریشانیاں دور ہوتی اور چین سکون کی دولت نصیب ہوتی ہے۔ لاکھوں لاکھ اسلامی بھائی راہِ خدا میں سفر کی برکتوں سے مالا مال ہو رہے ہیں ۔ آپ بھی مدنی قافلے میں سفر کریں جہاں آپکو بے شمار دینی مسائل سیکھنے کو ملیں گے وہیں سکونِ قلب کی دولت بھی نصیب ہو گی۔ ان اسلامی بھائی کے دنیا و آخرت کے فوائد سے بھر پور کلام کو سن کر میں بہت خوش ہوا اور یوں  ان کی خیر خواہی فرمانے کے سبب میرے دل میں ان کی محبت موجزن ہو گئی اور میں ہاتھوں ہاتھ مدنی قافلے کے لئے تیار ہو گیا۔ مدنی قافلے میں سفر کے دوران عاشقانِ رسول کی رفاقت میں بہت سرور آیا۔ دین کے وہ مسائل سیکھنے کاموقع ملا جن سے میں آج تک ناآشنا تھا نماز کے وہ اہم مسائل جن کانماز میں خیال رکھنا انتہائی ضروری ہے ان کے بارے سنا تو آنکھیں حیرت سے کھلی کی کھلی رہ گئیں کہ نماز میں شرائط و فرائض بھی ہوتے ہیں ۔ بہر حال میں مدنی قافلے میں اسلامی بھائیوں کی شفقتوں اور ان کی ملنساری اخلاق و کردار سے اس قدر متأثر ہوا کہ میں ہمیشہ کے لئے دعوت ِاسلامی کے مدنی ماحول سے وابستہ ہوگیا۔ اپنی قبر و آخرت کے لئے نیکیوں کا ذخیرہ جمع کرنے کے لیے دعوتِ اسلامی کے مدنی کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے لگا ۔ اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ  دعوتِ اسلا می کو دن دگنی رات چگنی ترقی و عروج عطا فرمائے کہ جس کی برکت سے آج لاکھوں لاکھ مسلمانوں کی اصلاح ہو رہی ہے۔

       میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو! دیکھا آپ نے کہ درسِ فیضانِ سنّت کی برکت سے ایک فیشن پرَست کی زندگی کو چار چاند لگ گئے اور سعادتوں بھری زندگی مقدّر بن گئی۔ ہمیں بھی چاہئے کہ ہم بھی اپنے محلہ ، مسجد، گھر گھر میں درس  ِفیضانِ سنّت کو عام کرکے ِخوب خوب رحمتیں حاصل کریں ۔ اللّٰہ  عَزَّوَجَلَّ   ہمیں خلوصِ نیّت کے ساتھ دین کی خدمت کرنے کی توفیق عطافرمائے۔

اللّٰہ عَزّوَجَلَّ کی امیرِاہلسنّت پَررَحمت ہواوران کے صد قے ہماری مغفِرت ہو۔

صَلُّوْاعَلَی الْحَبِیب!             صلَّی اللّٰہُ تعالٰی عَلٰی محمَّد

 (11) بغض و عناد نکل گیا

        تحصیل بھلوال (پنجاب، پاکستان) کے محلہ مخدوم آباد کے مقیم اسلامی بھائی کے بیان کالُبِّ لبُاب ہے کہ مہکے مہکے مدنی ماحول سے وابستگی سے قبل میں بد مذہبیت کی تاریک وادیوں میں بھٹک



Total Pages: 81

Go To