Book Name:Guldasta e Durood o Salam

اِنعام نمبر 5 ’’کیا آج آپ نے کم از کم313بار  دُرُود شریف پڑھ لئے ؟‘‘کے عامل بھی بن جائیں گے ۔ اگریکسوئی کے ساتھ دو زانو قِبْلہ رُو سبز گنبد کا تَصَوُّر باندھ کر 313 بار دُرُودِ پاک پڑھنا مُیسر ہو تو بہتر، ورنہ جب بھی گھر سے دُکان، آفس یا کہیں جانے کے لیے نکلیں تو تمام راستے  دُرُود ِپاک پڑھنے کامعمول رکھئے اِنْ شَآءَاللہ عَزَّ  وَجَلَّ آتے جاتے با آسانی313 بار  دُرُود پاک پڑھنے میں کامیاب ہو جائیں گے ۔

بے عدَد اور بے عدَد تسلیم                 بے شُمار اوربے شُمار دُرُود

بیٹھتے اُٹھتے ، جاگتے سوتے              ہو اِلٰہی میرا شِعار دُرُود(ذوقِ نعت، ص۸۷)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                                صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

            بَعْض مُتٔاخِّرین مشا ئخِ شاذلیہ فرماتے ہیں  :  ’’جب کسی کو اَولیائے کاملین اور مُرشدِ باشریعت نہ مل سکے تووہ بکثرت دُرُود شریف پڑھے ۔ اس سے اس کے باطن میں (ایک ایسا) نوِرِ عظیم پیدا ہوگا جو مرشد کامل کا کام دے گا اور (اِنْ شَآءَاللہ عَزَّ  وَجَلَّ) اس کوجنابِ رحْمۃ ٌللعٰلمین صَلَّی اللّٰہُ عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّمَ سے بلاواسطہ فیض پہنچے گا ۔           (رحمتوں کی برسات ، ص۱۷۰)

            عُلَمائے کرام فرماتے ہیں  :  ایمان کی حفاظت کا ایک ذریعہ کسی مرشِد کامل سے مُرید ہونا بھی ہے ۔ اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ قُرآنِ پاک میں ارشاد فرماتا ہے ۔

یَوْمَ نَدْعُوْا كُلَّ اُنَاسٍۭ بِاِمَامِهِمْۚ- (پ ۱۵، بنی اسرائیل : ۷۱)

ترجمۂ کنزالایمان : جس دن ہم ہر جماعت کو اس کے اِمام کے ساتھ بلائیں گے  ۔

            مُفَسّرِ شہیر حکیمُ الْاُمَّت حضرت ِ مُفْتی احمد یار خان  عَلَیْہِ رَحْمَۃُ الْحَنَّان ’’نورُ العرفان‘‘ میں اس آیتِ کریمہ کے تَحت فرماتے ہیں  : ’’اس سے معلوم ہوا کہ دُنیا میں کسی صالح کو اپنا اِمام بنالیناچاہئے شَرِیْعَت میں تَقْلِید کرکے اور طَریقت میں بَیْعَت کرکے ، تاکہ حَشْر اَچھوں کے ساتھ ہو ۔  (مزیدفرماتے ہیں  : ) اس آیتِ کریمہ میں تَقْلِید، بَیْعَت اور مُریدی سب کا ثُبوت ہے ۔ ‘‘

          پیارے اسلامی بھائیو! کسی کو پیر اس لئے بنایا جاتا ہے تاکہ اُمورِ آخِرت میں بہتری آئے اُس کی راہنمائی اور باطنی توجُّہ کی بَرَکت سے مُرید اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ اور اس کے رسول صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی ناراضی والے کاموں سے بچتے  ہوئے رِضائے رَبُّ الاَنام کے مَدَنی کام کے مُطابق اپنے شب و روزگُزار سکیں  ۔ لیکن اَفسوس! موجودہ زمانے میں بیشتر لوگوں نے پیری مُریدی جیسے اَہم مَنْصَب کو حُصُولِ دُنیا کا ذَرِیعہ بنا رکھا ہے ۔ بے شُمار بدعَقیدہ اور گمراہ لوگ بھی تَصَوُّف کا ظاہری لبادہ اَوڑھ کر لوگوں کے دِین و اِیمان کو برباد کر رہے ہیں اور انہی غَلَط کار لوگوں کو بُنیاد بنا کر پیری مُریدی کے مُخالفین اس پاکیزہ رِشتے سے لوگوں کو بَدگُمان کررہے ہیں ۔ دورِ حاضِر میں کامل و ناقِص پیر کا اِمتیاز اِنتہائی مُشْکل ہے ۔

پیرِ کامِل کی شَرائط

          حُجَّۃُ الْاِسلام حضرت سیِّدُنا امام محمد غزالی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللّٰہ الْوَالِی مُرشِدِ کامل کے لیے چند شَرائط و اَوصاف کی وَضاحت کرتے ہوئے فرماتے ہیں  :  ’’رسُول اللّٰہ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکا نائب جس کو مرشِد بنایا جائے ، اس کیلئے یہ شَرط ہے کہ وہ عالِم ہو ۔ لیکن ہر عالِم بھی مُرشِدِ کامل نہیں ہوسکتا ۔  اس کام کے لائق وہی شخص ہوسکتا ہے جس میں یہ چند مخصوص صِفات موجود ہوں  :

            (۱) جو دُنیا کی مَحَبَّت اور دُنیوی عزَّت و مرتبے کی چاہت سے مُنہ موڑ چُکا ہو ۔  (۲)ایسے کامل مرشِد سے بیعَت کرچکا ہو جس کا سلسلہ حُضُور عَلَیْہِ السَّلام تک پہنچتا ہو ۔  (۳) حُضُورِ اکرم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کے اَحکامات کی تعمیل کا مَظہر (یعنی اَحکاماتِ الٰہیہ کی بجاآوَری کے ساتھ ساتھ سُنَنِ نبوِّیہ کی پیروی کرنے اور کروانے کی بھی روشن نظیر) ہو ۔ (۴) وہ شخص تھوڑا کھانا کھاتا ہو ۔ (۵) تھوڑی نیند کرتا ہو ۔ (۶) زِیادہ نمازیں پڑھتا ہو ۔  (۷) زِیادہ روزے رکھتا ہو ۔  (۸) اس کی طَبیعت میں تمام اَچھے اَخلاق مثلاً صَبْرو شکْر، تَوَکُّل و قَناعَت، اَمانت و صَداقت ، اِنکساری و فرمانبرداری اور اسی قسم کے دیگر فَضائل اس کی سیرت و کردار کا جُزو ہونا چا ہئے ۔ اس شخص نے نبیِّ کریم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کے اَنوار سے ایسا نُور اور روشنی حاصل کی ہو جس سے تمام بُری خَصلتیں مَثَلاً بُخل و حَسَد، کینہ و جَلَن ، دُنیاسے بڑی اُمیدیں باندھنا غصَّہ اور سَرکشی وغیرہ اس روشنی میں ختْم ہوگئی ہوں ۔ عِلْم کے سلسلے میں کسی کا مُحتاج نہ ہو، سِوائے اس مَخصوص عِلْم کے جو ہمیں پیغمبرِ اسلام عَلَیْہِ السَّلام سے ملتا ہے  ۔ یہ مذکورہ اَوصاف کامل مرشِدوں یا پیرانِ طریقت کی کچھ نشانیاں ہیں ۔ جو رسولِ خدا صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی نائبی کے لائق ہیں ۔ ایسے مُرشِدوں کی پیروی کرنا ہی صحیح طَریقت ہے  ۔ ‘‘

            مزید فرماتے ہیں  : ’’ ایسے پیر بڑی مُشکل سے ملتے ہیں ۔ اگر یہ دولت کسی کو نصیب ہوئی کہ ایسا کامل مرشِد مل گیا اور وہ مرشِد اسے اپنے مریدوں میں شامل بھی کرلے تو اس مُرید کے لئے لازِم ہے کہ وہ اپنے مُرشِد کاظاہری و باطنی اَدَب کرے  ۔ ‘‘ (مجموعہ رسائل امام غزالی، ص۱۶۷)

            یہ اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ کاخاص کرم ہے کہ وہ ہر َدور میں اپنے پیارے مَحبوب صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکی اُمَّت کی اِصلاح کیلئے اپنے اَولیائے کرام رَحِمہُمُ اللّٰہ السَّلام ضَرور پیدا فرماتا ہے ۔ جو اپنی مومِنانہ حکْمت و فراست کے ذَریعے لوگوں کو یہ ذِہن دینے کی کوشش فرماتے ہیں کہ مجھے اپنی اور ساری دُنیا کے لوگوں کی اِصلاح کی کوشش کرنی ہے ۔ اِنْ شَآءَاللہ عَزَّ  وَجَلَّ

          میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو! سینکڑوں سال پہلے سَیِّدنا امام غزالی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ الْوَالِیجن اَوصاف کے حامل پیر کو کمیاب فرما رہے ہیں ۔ n فی زمانہ یہ تمام اَوصاف شَیخ طریقت ، امیرِاَہلسنّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ کی ذاتِ مبارَکہ میں بَدَرجہ اَتَم واَکمل پائے جاتے ہیں ۔ جن کے تَقْویٰ و پرہیز گاری کی بَرَکات کی ایک مثال دعوتِ اسلامی کا مَدَنی ماحول ہمارے سامنے ہے کہ آپ دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہکی نگاہِ ولایت اور حکْمتوں بھری مَدَنی تَربیَّت نے دُنیا بھر میں لاکھوں مُسلمانوں بالخُصوص نوجوانوں کی زِندگیوں میں مَدَنی انقِلاب برپا کردیا ۔ کتنے ہی بے نمازی آپکی نگاہِ فیض سے نمازی بن گئے ۔ ماں باپ سے نازیبا رویہ اِختیار کرنے والے بااَدب بن گئے ، گانے باجے سننے والے مَدنی مُذاکَرات اور سُنَّتوں بھرے بیانات سننے والے بن گئے ، فُحش گوئی کرنے والے نعتِ مُصْطفٰے پڑھنے والے بن گئے ، مال کی مَحَبَّت میں جینے مرنے والوں کو فکرِآخرت کی مَدَنی سوچ نصیب ہوگئی، تَفریحی مَقامات پر جاکر اپنا وَقت برباد کرنے والے  سُنَّتوں بھرے اجتماعات میں اَوَّل تاآخر شِرکت کرنے والے بن گئے ۔ لہٰذا آپ بھی شیخ طریقت، امیرِاَہلسنَّت دَامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعَالِیَہ کی غُلامی میں آنے ، اپنے مَقصدِحیات کو پانے اور صلوٰۃو سلام کی عادت بنانے کے لیے دعوتِ اسلامی کے مدنی ماحول سے وابستہ



Total Pages: 141

Go To