Book Name:Guldasta e Durood o Salam

اندھیری رات سنی تھی چراغ لے کے چلے (حدائقِ بخشش، ص۳۶۹)

          میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو !  اللّٰہعَزَّوَجَلَّ نے انسانوں کو زِندگی گزارنے کا طریقہ بتایا اوردو راستے دکھائے ، ایک راستہ  جَنَّت کی طرف جاتا ہے اور دوسرے کی اِنتہا جَہنَّم ہے اور اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ نے ہمیں سیدھے راستے پر چلنے اور اچھے طریقے پر زِندگی گزارنے کے لئیحُضُور نبیِّ کریم، رء ُوفٌ رَّحیم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی اِطاعت وفرمانبرداری کا پابندبنا یا اورحُضُور سراپا نور صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکے کردار کو بہترین نُمُونۂ عمل بتایا ۔  چنانچہ ارشاد باری تعالیٰ ہے ۔

لَقَدْ كَانَ لَكُمْ فِیْ رَسُوْلِ اللّٰهِ اُسْوَةٌ حَسَنَةٌ (پ۲۱، الاحزاب : ۲۱)

ترجمۂ کنزالایمان : بیشک تمہیں رسُول اللّٰہکی پیروی بہتر ہے  ۔

حضرتِ صدر ا لْافاضِل مولانا سیِّدمحمد نعیم الدِّین مُراد آبادی  علیہ رحمۃُ اللّٰہِ الہادی خَزائنُ العرفانمیں اس آیتِ کریمہ کے تَحت فرماتے ہیں  : ’’ ان کا اچھی طرح اتباع کرو اور دینِ الٰہی کی مَدد کرو اور رسولِ کریمصَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکا ساتھ نہ چھوڑو اور رسولِ کریمصَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکی  سُنَّتوں پر چلو یہ بہتر ہے ۔ ‘‘

حضرت جنیدرَحْمَۃُ اللّٰہ تَعَالٰی عَلَیْہِ  کا قول ہے کہ کوئی شخص بھی اللّٰہ (عَزَّوَجَلَّ)تک اس کی توفیق کے بغیر نہیں پہنچا اور اللّٰہ (عَزَّوَجَلَّ) تک پہنچنے کا راستہ محمد صَلَّی اللّٰہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمْ کی اِقتدا و اِتباع ہے ۔

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                                صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو! حُضُور صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی اِتباع یقینا ہماری زِندگی کے ہر گوشے میں ہمارے لئے مَشْعَلِ راہ ہے  ۔ جہاں سُنَّت پر عمل کرنے میں ثواب ملتا ہے وَہیں اِس کے کثیر دُنیوی فوائد بھی ہیں ۔ کھانے سے پہلے دونوں ہاتھ پہنچوں تک دھو لینا سُنَّت ہے ، مُنہ کا اگلا حصّہ دھونا اور کُلّی بھی کر لینا چاہئے ۔ چُونکہ ہاتھوں سے جدا جدا کام کئے جاتے ہیں اور وہ مختلف چیزوں سے مَس ہوتے ہیں لہٰذا ان پرمَیل کُچیل اور کئی طرح کے جراثیم لگ جاتے ہیں ۔ کھانے سے پہلے ہاتھ دھولینے سے ان کی صَفائی ہوجاتی اور اِس سُنَّت کی بَرَکت کے سَبَب ہمیں کئی بیماریوں سے تَحفُّظ بھی حاصِل ہوجاتا ہے ۔ کھانے سے پہلے دھوئے ہوئے ہاتھ نہ پُونچھے جائیں کہ تولیہ وغیرہ کے جَراثیم ہاتھوں میں لگ سکتے ہیں ۔

ڈرائیور کی پُر اَسرار موت

            کہا جاتا ہے کہ ایک ٹرک ڈرائیور نے ہوٹل میں کھانا کھایا اور کھانے کے فوراً بعد تڑپ تڑپ کر مرگیا ۔ دوسرے کئی لوگوں نے بھی اُس ہوٹل میں کھانا کھایا مگرا نہیں کچھ بھی نہ ہوا ۔  تَحْقِیق شُروع ہوئی ، کسی نے بتایا کہ ڈرائیور نے کھانے سے قَبل ہوٹل کے قریب ٹرک کے ٹائر چیک کئے تھے ، پھر ہاتھ دھوئے بِغیر اُس نے کھانا کھایا تھا ۔ چُنانچِہ ٹرک کے ٹائروں کو چیک کیا گیا تو اِنکِشاف ہوا کہ پہیّے کے نیچے ایک زَہریلا سانپ کُچلاگیا تھا جس کا زَہر ٹائر پر پھیل گیا اور وہ ڈرائیور کے ہاتھوں پر لگ گیا ، ہاتھ نہ دھونے کے سَبَب کھانے کے ساتھ وہ زَہر پیٹ میں چلاگیا جو کہ ڈرائیور کی فوری موت کا سَبَب بنا ۔

اللّٰہ کی رَحمت سے سُنَّت میں شَرافت ہے

سرکار کی سُنَّت میں ہم سب کی حفاظت ہے

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                                صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

اے ہمارے پیارے اللّٰہعَزَّوَجَلَّ! ہمیں حُضُور جانِ عالم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکی مَحَبَّت  میں آپصَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمپر دُرُود وسلام پڑھنے کی توفیق عطا فرما اور آپ کی  سُنَّتوں پر عمل کی توفیق عطا فرما ۔  اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم

٭٭٭٭

بیان نمبر : 56

بُھولی ہوئی چیز یاد آجائے گی

شہنشاہِ خوش خصال، پیکرِ حُسن وجمال صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکا فرمانِ باکمال ہے  : ’’ اِذَا نَسِیْتُمْ شَیْئاً فَصَلُّوْا عَلَیَّ تَذْکُرُوْہٗ اِنْ شَآء اللّٰہ، جب تم کسی چیز کو بھول جاؤ تو مجھ پر دُرُودِ پاک پڑھو وہ چیز اِنْ شَآءَاللہ عَزَّ  وَجَلَّ تمہیں یاد آجائے گی ۔ ‘‘ (جلاء الافہام، ص۲۳۸)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                                صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو! بیان کردہ حدیثِ پاک سے معلوم ہواکہ دُرُودِ پاک ایسا بہترین وَظیفہ ہے کہ اس کی بَرَکت سے بھولی ہوئی چیزیں یاد آجاتی ہیں ۔ ہمیں بھی حُضُورِ پاکصَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمکی ذاتِ طیبہ پرزِیادہ سے زِیادہ دُرُودِپاک پڑھنے کی عادت بنالینی چاہیے اس کا فائدہ یہ ہوگا کہ اگر کسی کونِسیان (بھولنے ) کامَرَض ہوابھی تو اِنْ شَآءَاللہ عَزَّ  وَجَلَّ اس کی بَرَکت سے دُور ہوجائے گا  ۔ جیسا کہ

حافظہ مَضْبُوط کرنے والا دُرُود

دعوتِ اسلامی کے اِشاعتی اِدارے مکتبۃُ المَدِیْنہ کی مطبوعہ 419 صَفحات پر مشتمل کتاب ، ’’مَدَنی پنج سورہ ‘‘ کے صفحہ 169پر ہے  : ’’ اگر کسی شخص کونِسیان یعنی بھول جانے کی بیماری ہو تو وہ مغرب اور عشاء کے درمیان اس دُرُودِپاک کو کثرت سے پڑھے اِنْ شَآءَاللہ عَزَّ  وَجَلَّ حافظہ قَوی ہوجائے گا ۔  ‘‘

اَللّٰہُمَّ صَلِّ وَسَلِّمْ وَبَارِکْ عَلٰی سَیِّدِنَا مُحَمَّدِنِ النَّبِیِّ الْکَامِلِ وَعَلٰی اٰلِہٖ کَمَالَانِھَایَۃَ لِکَمَالِکَ وَعَدَدَکَمَالِہٖ

 



Total Pages: 141

Go To