Book Name:Imamay kay Fazail

207 پر نقل فرماتے ہیں :  ’’کسی سنّت کی تحقیر (یعنی توہین ) کرے مَثَلاً داڑھی بڑھانا، مونچھیں کم کرنا، عمامہ باندھنا یا شملہ لٹکانا، ان کی اِہانَت (یعنی گستاخی) کفر ہے جب کہ سنّت کی توہین مقصود ہو۔ ‘‘ (بہارِ شریعت، ۲/ ۴۶۳)

٭امیرِاہلسنّت دَامَت بَرَکَاتُہُمُ العَالِیَہ فرماتے ہیں :  کسی سے کہا کہ یہ کیا تُونے عِمامہ وغیرہ پاگلوں والا لباس پہنا ہوا ہے! یہ کلِمہ کُفْرہے۔  (کفریہ کلمات کے بارے میں سوال جواب، ص۴۲۱)

٭امیرِاہلسنّت دَامَت بَرَکَاتُہُمُ العَالِیَہ اسی کتاب کے صفحہ 422 پر نقل فرماتے ہیں :  ’’عمامہ شریف کو زمین پر دے مارنا یا پھاڑ ڈالنا یا جلا دینا یہ تینوں باتیں اگر سُنَّت کی توہین کی نیّت سے ہوں تو کُفر ہیں ۔ ‘‘ (کفریہ کلمات کے بارے میں سوال جواب، ص۴۲۲)

خواب میں عمامہ دیکھے تو…

        اِمَامُ المُعَبِّرِین حضرت سیّدنا امام محمدبن سیرین عَلَیہ رَحمَۃُ  اللّٰہ  المُبِیْن فرماتے ہیں (1) چونکہ عمامے عرب کے تاج ہیں اس لئے اسے خواب میں پہننا کسی علاقے کی ولایت (حکمرانی) ملنے کی دلیل ہے۔  آپ مزید فرماتے ہیں کہ (2) حضرت سیّدنا اسحاق عَلٰی نَبِیّنَا وَ عَلَیہِ الصَّلوۃُ وَالسَّلام نے خواب میں دیکھا کہ ان کا عمامہ اتار لیا گیا ہے آپ بیدار ہوئے تو آپ پر وحی نازل ہوئی کہ اپنی زوجہ کو اپنے سے دور کردیں پھر آپ نے دیکھا کہ آپ کا عمامہ آپ کو لوٹا دیا گیا ہے آپ نے اس سے زوجہ کا واپس آجانا مراد لیا۔  (3)اسی طرح آپ نے حضرت ابو مسلم خراسانی قُدِّسَ سِرُّہُ النُّورَانی کا خواب بیان فرمایا کہ انہوں نے دیکھا کہ رسول  اللّٰہ  صَلَّی  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم نے اپنے مبارک ہاتھوں سے ان کے سر پر سرخ رنگ کا عمامہ باندھا جس کے بائیس پیچ تھے ۔  آپ نے اپنا خواب مُعَبِّر (تعبیر بتانے والے) کو سنایا تو اس نے کہا :  آپ کو بغی میں بائیس سال تک حکومت عطا کی جائے گی۔  چنانچہ ایسا ہی ہوا۔  (تفسیر الاحلام ، الباب التاسع والعشرون فی الکسوات الخ ، ص ۱۲۶)     

’’عمامہ باندھو حلم بڑھے گا ‘‘ کے 20 حروف کی نسبت سے خواب میں عمامہ شریف دیکھنے کی بیس تعبیریں

        حضرت سیّدنا امام عبدالغنی نابلسی عَلیْہ رَحْمَۃُ اللّٰہ  الْقَوِی فرماتے ہیں :

 (1)خواب میں عمامہ دیکھنا آدمی کا تاج ہے اور اس کے مرتبے ، طاقت، ولایت (سرداری) اور اس کی بیوی پر دلالت کرتا ہے۔  آپ رَحْمَۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہ مزید فرماتے ہیں :  

 (2) اگر کسی والی (حکمران) نے دیکھا کہ اس کا عمامہ بل کھاتے ہوئے اس کی گردن میں اٹک گیا یا اس سے چھین لیا گیا یا اُچک لیا گیا تو اس کی ولایت ختم ہو جائے گی۔  

(3) اگر غیر والی نے عمامہ دیکھا تو یہ اس بات کی علامت ہے کہ وہ اپنی بیوی کو طلاق دے گا۔  یا اس بات کی دلیل ہے کہ اس کا مال و مرتبہ چلاجائے گا۔  

(4)اسی طرح اگر کسی نے دیکھا کہ اس کا عمامہ سونے کا ہو گیا ہے تو یہ ولایت ختم ہونے ، بیوی ، مرتبہ اور مال چلے جانے کی دلیل ہے۔  

(5)جس شخص نے دیکھا کہ کسی والی نے اسے عمامہ باندھا تو اسے ولایت حاصل ہو گی یا پرہیز گار عورت سے شادی کرے گا۔  

(6)جس شخص نے دیکھا کہ کسی نبی عَلَیہِ السَّلام نے اسے عمامہ باندھایا موجودہ یا مرحوم بادشاہ نے اسے دستار پہنائی تو ولایت حاصل ہو گی۔  عمامہ نصرت و مدد پر دلالت کرتا ہے۔  

(7)جس شخص نے یہ دیکھا کہ وہ اپنے سر پر عمامہ باندھ رہا ہے تو اس کے فن اور ریاست میں ترقی ہو گی۔  

(8)اور اگر عمامہ خَزّ(اون اور ریشم سے بُنے ہوئے کپڑے)  کا ہو تو مال میں زیادتی ہو گی اور اگر عمامہ اُونی یا سوتی ہو تو یہ ولایت ملنے اور دین میں دُرُستی کا سبب ہے۔  

(9)اور اگر عمامہ ریشم کا ہوتو یہ فسادِ دین میں ولایت کی دلیل ہے اور اس کا مال حرام ہے۔  

(10)جس نے خواب میں اپنے عمامے پر عمامہ باندھا تو اس کی وجاہت میں اضافہ ہو گا اور اس کی ولایت بھی مضبوط ہو گی۔  

(11)جس شخص نے خواب میں اپنے سر پر عمامہ باندھا تو وہ اپنے عمامے کی لمبائی کی بقدر سفر کرے گا۔  

(12)خواب میں زرد عمامہ دیکھنا دردِ سر کی علامت ہے ۔  

(13)خواب میں کالا عمامہ دیکھنا سرداری کی دلیل ہے ۔  

(14)اور اگر بادشاہ نے دیکھا کہ اس کی دستار کمرہ نما ہے یا اس کی انگوٹھی پازیب کی طرح ہے تو وہ اپنی سلطنت سے مَعزُول ہو گا۔  

(15)اور اگر خواب دیکھنے والا والی ہو تو اسے ولایت سے مَعزُول کر دیا جائے گا کیونکہ( عمامے کا خواب میں ) حد سے تجاوز کر جانا اس کے باقی نہ رہنے کی دلیل ہے۔  

(16)عمامے اہلِ عرب کے تاج ہیں اور بسا اوقات عمامے کا لفظ اندھے پن یا عام پریشانی پر بھی دلالت کرتا ہے۔  

(17)جس شخص نے خواب میں بغیر عمامہ کے نماز پڑھی تویہ اس بات کی دلیل ہے کہ وہ اپنے وضو میں شک کرنے والاہے یا رکوع و سجود کو ناقص ادا کرتا ہے۔  

(18)جس شخص نے خواب میں کسی مشرک کے سر پر عمامہ دیکھا تو یہ اس مشرک کے اسلام لانے پر دلالت کرتا ہے۔  کیونکہ حدیثِ مبارک میں آیا ہے کہ ’’ٹوپیوں پر عمامے باندھنا ہمارے اور مشرکین کے درمیان فرق ہے۔  ‘‘(ابوداؤد، کتاب اللباس، باب فی العمائم، ۴/ ۷۶، حدیث : ۴۰۷۸)

(19)جو شخص بادشاہ سے ڈرتا ہو اگر وہ بادشاہ کو خواب میں اچھی دستار سجائے دیکھے تو بادشاہ نہ صرف اس پر مہربان ہو گابلکہ یہ اس بادشاہ کے شر سے بھی محفوظ رہے گا۔  

(20)ایسے ہی خواب میں اپنے سر پر اچھا عمامہ دیکھے تو یہ کسی پر مہربان ہونے اور اسے امن دینے کی دلیل ہے۔  (علامہ نابُلُسی رَحمَۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہ فرماتے ہیں )ایک شخص نے میرے سامنے خواب بیان کرتے ہوئے کہا کہ میں نے اپنے سر پر ایک خوبصورت اور بڑا سا عمامہ دیکھا اور یہ بھی دیکھا کہ ایک راہبہ عورت پر جامع مسجد میں لوگ نمازِ جنازہ پڑھنے کا ارادہ کر رہے ہیں جبکہ کچھ مؤذنین اس جنازے کے آگے کلمۂ توحید پڑھ رہے ہیں ۔  پھرا نہوں نے اس جنازے کی چادر ہٹائی تو اس کا کفن سیاہ تھا۔  میں اس جنازے پر کہے جانے والے کلمۂ توحید کے بارے میں جھگڑ رہا تھا۔  (علامہ نابُلُسی رَحمَۃُ  اللّٰہ  تَعَالٰی عَلَیْہ فرماتے ہیں ) میں نے تعبیر بتاتے ہوئے اس شخص سے کہا :  تو ایسا شخص ہے کہ تیری زوجہ تجھ سے راضی ہے اور تجھ سے محبت کرتی ہے اور تیرا سسر تجھ پر ناراض ہے اور بعض لوگ تیرے اور تیری زوجہ کے درمیان جدائی کی بات کر رہے تھے تو تو ان سے جھگڑ رہا تھا۔  تو خواب دیکھنے والے نے کہا :  ’’معاملہ ایسا ہی ہے جیسے آپ نے فرمایا۔  ‘‘ پھر خواب دیکھنے والے نے کہا :  میں نے اپنی



Total Pages: 101

Go To