Book Name:Fatawa Razawiyya jild 19

 

 

 

 

 

 

کتاب المنٰی والدررلمن عمدمنی اٰرڈر ۱۳۱۱ھ

(خواہشات اورموتیوں کی فراہمی اس کےلئے جس نے منی آرڈر کا قصد کیا)

 

مسئلہ ۲۲۸:            از کیمپ میرٹھ بازارلال کورتی مرسلہ جناب مولوی عبدالسمیع صاحب      ۲۰ رمضان المبارك ۱۳۱۱ھ

بخدمت شریف مخدوم ومکرم محقق و مدقق جناب مولانا محمد احمد رضاخاں صاحب ادام الله فیوضہ وبرکاتہ وضاعف اجورہ وحسناتہ۔

بعد اتحاف ہدیہ سلام مرفرع رائے خورشید انجلاء باداس مسئلہ میں آپ کی رائے دریافت کی جاتی ہے یہاں سے بعوض مساکین کے تنخواہ کسی کے دو رپے،کسی کے تین روپے معین ہے،ان میں سے پانچ چار آدمیوں نے مجھ سے کہا کہ ہم کودوروپے کے واسطے سفر کرکے آنا دشوار ہے او ریہ دقت کہ اس قدر تنخواہ ہے اورا س قدرکرایہ لگ جائے گا،تم ہم کو منی آرڈر کرکے روانہ کردیا کرو،میں نے یہ دیکھاکہ صیغہ منی آرڈر جابجا جاری ہے مدارس وغیرہ میں،پس ان بیچاروں شکستہ دلوں کا کام کرکے بہترہے کہ ثواب حاصل کروں جب نظر جواز وعدم جواز پرگئی تو بنظر سرسری یہ دیکھ لیا کہ ہم جو کچھ زیادہ دیتے ہیں وہ اجرت دیتے ہیں، اس بات کےلئے ڈاك والوں نے مرسل الیہ کے گھرروپیہ پہنچا کر اس کے دستخط کرائے پھر وہ رسید اس سے وصول کرکے ہم تك پہنچائی،بناءً علیہ یہ رباء نہیں،برسوں سے لوگوں کی کارروائی اسی طرح ہوتی رہی اب بعض عــــــہ علماء نے فتوٰی حرمت منی آرڈر کا چھاپ دیا

عــــــہ: یعنی رشید احمد گنگوہی ۱۲۔


 

 



Total Pages: 692

Go To