Book Name:Fatawa Razawiyya jild 16

 

 

 

بسم اﷲ الرحمٰن الرحیم

 

 

کتاب الشرکۃ

(احکام شرکت کا بیان)

 

مسئلہ ۱:              ۱۶جمادی الآخر ۱۳۳۸ھ

کیافرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ ہمارے دیار میں دستور ہے کہ پاٹ سن کی ڈھیر علیحدہ علیحدہ پانی میں بھگوتے ہیں، امسال کنوار کے مہینہ میں بہت سخت طوفان اور بارش کے سبب سے سب کے ڈھیر کو اکٹھا کرڈالا،بعدہ اکثر نے نہیں لیا بعض نے اس مال کو قبض کیا اور انتظام دے کر طیار کیا اب قبض کرنے والے بعض ان اکثر کو کہتے ہیں تمہارا جتنا ہولے لو،وہ لوگ کہتے ہیں جب ہمارا مال کا کوئی شناخت نہیں ہم نہیں لیتے،اب قبض کرنے والے لوگ خود خرچ کریں یا فقرا ء اور مساکین کو تقسیم کردیں اور قبض کرنے والے پر حلال ہوتو فقراء اور غنا ہونے میں برابر ہے یاتفاوت ہے؟

الجواب:

جب وہ لوگ نہیں لیتے تو قابضین صرف اپنا حصہ لے لیں باقی فقراء پر تصدق کردیں،ان میں اگر کوئی فقیر ہے تو اسے بھی دے سکتے ہیں،واﷲ تعالٰی اعلم۔

مسئلہ۲:                   از کوہ نینی تال                             ۱۲جمادی الاول ۱۳۰۸ھ

کیافرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ محمود بیگ و عبدالغفور بیگ دو بھائیوں کی دکان کوہِ نینی تال پر تھی،دونوں نے مال واسبابِ دکان اپنے باپ کے ترکہ سے پایا اور دونوں یکجا کارکن رہے اور یکجا ان کا


 

 



Total Pages: 631

Go To