Book Name:Fatawa Razawiyya jild 11

 

 

 

رسالہ

عُبَابُ الْاَنْوَارِاَنْ لَّانِکَاحَ بِمُجَرِّدِ الْاِقْرَارِ ١٣٠٧ھ

(محض اقرار کی بنیاد پر نکاح نہ ہونے کے بیان میں انوار کی موج)

 

 

بسم اﷲ الرحمن الرحیم

 

مسئلہ ٥ و ٦:            از پنجاب فیروز پور صدر بازار مسجد جامع مرسلہ مولوی فضل الرحمن صاحب ٤ جمادی الاولٰی ١٣٠٧ھ

از فقیر محمد فضل الرحمان بخدمت حضرت فیض درجت مظہر علوم دینی ومصدر فیوض دنیوی جناب مولانا بالفضل والکمال اولٰنا جناب مولوی محمد احمدرضاخان صاحب فاضل بریلوی دام فیضہ القوی السلام علیکم!

سوال(١)زید نے ہندہ سے جو اپنے فعل شنیع قبیح سے تائب ہوئی،غیر ضلع میں جاکر نکاح کیا تا کہ کوئی مخل اور مانع اس کار خیر کا نہ ہو،اہل ضلع نے جب ان سے استفسار کیا کہ تمھار نکاح ہوا ہے؟ تو انھوں نے یہ پاسخ دیا کہ اس قدر مہر پر ہمارا نکاح ہوا ہے،آیا یہ صورتِ نکاح صحیح ہے؟

(٢)اگر زید نے اقرار کیا کہ یہ میری بی بی ہے اور ہندہ نے بیان کیا کہ یہ میرا خاوند ہے یہ قیل وقال محض شہود میں بیان کی گئی،کیا ان الفاظ سے انعقاد نکاح ہوجاتا ہے،اس صورت میں ذکر مہر نہیں آیا،بعد توفیق وتطبیق روایات کے جواب مزین بمہر ودستخط فرما کر ﷲ عطا فرمایا جائے تاکہ آئندہ کسی جاہل کو مجال باقی نہ رہے والسلام مع الاکرام۔


 

 



Total Pages: 739

Go To