Book Name:Fatawa Razawiyya jild 10

اور تل کا تیل  عــــہ۱  اگر چہ خالص ہوں بالوں میں یابدن میں لگانا جائز نہیں، اور گھی یا چربی جائز ہے۔

م:                                                                                  حلق شعر ثم قلم ظفر                                                                                    عقد النکاح ثم صیدالبر

ت: اور بال مُونڈ نا، ناخن کترنا، عقد نکاح، جنگلی شکار۔

ش: یعنی سر سے پاؤں تك کسی جگہ کے بال مونڈکر، کترکر، نورہ سے، موچینہ سے، آپ یا دوسرے کے ہاتھ سے دورکرنا اصلا جائز نہیں، مگر جو بال آنکھ میں نکلے، اور نکاح کرنا حنفیہ کے نزدیك اور دریا کا شکار عــــہ۲ بالاتفاق جائز ہے۔

ف: اس کے سوا منہ عــــہ۳ یا سر کو ڈھانکنا اگر چہ سوتے میں، یا کسی سے ناحق لڑنا، یا جماع کرنا، یا شہوت سے بوسہ لینا عہ۴ ، یا مساس کرنا، یا عورتوں کے آگے جماع کا تذکرہ لانا، کسی کا سر مونڈنا اگر چہ اس کا احرام نہ ہو، جنگلی شکار عہ۵  کے ہلاك میں کسی طرح شریك ہونا مثلا شکاری کو بتانا، اشارہ کرنا، بندوق یا بارود دینا، ذبح کے لیے چُھری دینا، اس کے انڈے توڑنا، پَر اُکھاڑنا، پاؤں یا بازو توڑنا، اس کا دودھ دوہنا، اس کا گوشت یا

عــــہ۱:  ان دو تیلوں میں اگر چہ خوشبو نہیں ناجائز ہیں، ان کے سوا اور بے خوشبو کے تیل جیسے روغن بادام وغیرہ، درمختار سے ان کا جواز نکلتا ہے اور شرح لباب میں مطلقًا ناجائز کہا، والله تعالیٰ اعلم ۱۲ منہ)

عــــہ۲: یعنی جبکہ خاص کھانے یا دوا کی غرض سے ہو، یا مذہب راجح پر بطور پیشہ وحرفت بھی، ورنہ تفریحًا شکار جیسا کہ آجکل عوام میں رائج، دریا کا ہو یاجنگل کا، احرام میں ہو یا غیر احرام میں، ہر طرح حرام ہے کما فی الدر المختار وغیرہ(جیسا کہ درمختار وغیرہ میں ہے۔ ت ۱۲ منہ)

عــــہ۳:یعنی کل منہ یا بعض، یہاں تك کہ تکیہ پر منہ رکھ کر اوندھے لیٹنا جائز نہیں، ہاں چت یا کروٹ سے رواہے اگر چہ اس میں رخسارے یاسر کے ایك ٹکڑے کا ڈھانکنا ہوا کہ شرع میں خاص اس کی اجازت ہے اور اس میں مرد وزن کا ایك حکم ہے یہاں تك کہ اسے منہ چھپانے کے لیے روانہیں کہ پنکھا وغیرہ منہ پر رکھ لے بلکہ سر پر منہ سے الگ یوں رکھے کہ آڑ ہوجائے۔ ہاں سرکا ڈھانکنا عورت کو احرام میں بھی ضرور ہے ۱۲ منہ غفرلہ)

عــــہ ۴:یعنی اپنی عورت یا کنیز شرعی کے ساتھ بھی یہ باتیں بشہوت ناروا ہیں پھر غیر کے ساتھ دو ہرا گناہ، ایك تو فعل آپ ہی ناجائز دوسرے احرام کا محظور ۱۲ منہ)

عــــہ۵:پالتو جانور جیسے اونٹ، گائے، بکری، مرغی کے ذبح کرنے ،کھانے پکانے میں حرج نہیں ۱۲ منہ غفرلہ)


 

 



Total Pages: 836

Go To