Book Name:Fatawa Razawiyya jild 10

میں کی ہے۔ت)احادیث صحاح وحسن وصوالح میں اور بھی بہت روزوں کے فضائل آئے ہیں جیسے شش عید وایامِ بیض کہ دونوں میں ہرایك سال بھر کے روزوں کا ثواب لاتا ہے کہ مَنۡ جَآءَ بِالْحَسَنَۃِ فَلَہٗ عَشْرُ اَمْثَالِہَا ۚ [1](جس نے کوئی نیکی کی اسے اس کا دس گنا اجر ملے گا ۔ت)  وروزہ دو شنبہ و روزہ پنجشنبہ وروزہ چہار شنبہ وپنجشنبہ کہ دوزخ سے آزاد ہیں[2] اور روزہ چہار شنبہ وپنجشنبہ و جمعہ کہ جنت میں گوہر ویاقوت وزبرجد کا گھر بناتے ہیں [3]بلکہ روزہ جمعہ یعنی جب اس کے ساتھ پنجشنبہ یا شنبہ بھی شامل ہو مروی ہوا کہ دس ہزار برس کے روزوں کے برابر ہے[4]رواہ البیہقی عن ابی ھریرۃ رضی اﷲ تعالٰی عنہ مرفوعًا(ا سے بیہقی نے حضرت ابوھریرہ رضی اﷲ تعالٰی عنہ سے مرفوعًا نقل کیا ہے۔ت)روزہ سے منع کرنا خیر سے منع کرنا اور منا ع للخیر(خیر سے روکنے والا )کے وبال میں داخل ہونا ہے جب تك ذاتًا یا عارضًا ممانعتِ شرعیہ نہ ثابت ہو، ٢٧ کے علاوہ روزہ ہائے رجب میں احادیث کثیرہ وارد ہیں جن میں بعض خود اوربعض بتعدد مرتبہ صالح رکھتی ہیں، شیخ محقق مولانا عبد الحق محدّث دہلوی قدس سرہ القوی نے ماثبت بالسنۃ میں اُن کی تفصیل فرمائی۔

ومایروی عن الفاروق الاعظم رضی اﷲ تعالٰی عنہ ،فلان رجب کانت تعظمہ الجاھلیۃ ایضا وقد کان العھد قریبا والاحکام لم تتبین عند کثیر من الاعراب فتخشی الزیادۃ ولکل وجھۃ ھو مولیھا۔ واﷲ  تعالٰی اعلم۔

اور جو فاروق رضی اﷲتعالیٰ عنہ سے مروی ہے پس اس لئے کہ اہلِ جاہلیت بھی رجب کی تعظیم کرتے تھے زمانہ جاہلیت اسلام سے قبل قریب تھا اور بہت سے عربوں پر احکام اچھی طرح واضح نہ ہوسکے تھے تو اس لئے رجب کے روزوں کے متعلق بیان میں از خود اضافہ کرنے کا خدشہ موجود ہے جبکہ ہر ایك کیلئے اپنے عمل کی راہ ہے۔ واﷲ تعالٰی اعلم(ت)

مسئلہ٢٧٥:            از موضع سرنیاں ضلع بریلی مرسلہ امیر علی صاحب        ١٣٣١ھ

اکثر عورتیں مشکل کشا علی کا روزہ رکھتی ہیں کیسا ہے؟

الجواب:

روزہ خاص اﷲ عزّوجل کے لیے ہے، اگر اﷲکا روزہ رکھیں اور اس کا ثواب مولا علی کی نذر کریں


 

 



[1] القرآن ٦/١٦٠

[2] کنز العمال حدیث ٢٤١٩١مؤسسۃ الرسالہ بیروت٤/٥٦٤،الترغیب والترھیب الترغیب فی صوم الاربعاء الخ مصطفی البابی مصر٢/١٢٦

[3] شعب الایمان حدیث ٣٨٧٣دارالکتب العلمیہ بیروت٣/٣٩٧

[4] الترغیب والترھیب الترغیب فی صوم الاربعاء مصطفٰے البابی مصر٢/١٢٦



Total Pages: 836

Go To