$header_html

Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

النبی  صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم یقول :لا تجلسوا  عن القبو ر ولا تصلوا الیہا ۔ (۹۰)

        ابو مرثد غنوی رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ  میں نے حضور نبی کریم صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم کو فرماتے سنا : قبروں پر نہ بیٹھو اور نہ ان کی طرف رخ کر کے نماز پڑھو ۔

        اس حدیث  کی سند میں دو راویوں کی زیادتی ہے ۔

       Xسفیان                     Xابو ادریس

        یہ زیادتی محض وہم کی بنیاد پر ہے ۔

 ٭    سفیان کی زیادتی امام  عبد اللہ بن مبارک سے نقل کرنے والے رواۃ کے وہم کی بنا پر ہے ۔ کیونکہ ثقہ حضرات نے ابن مبارک کے بعد براہ راست عبد الرحمن بن یزید کی روایت نقل کی ۔(۹۱)

       اور بعض راویوں نے تو ’’عن ‘‘  کے بجائے صریح ’’ اخبر‘‘  استعمال کیا ہے ۔

 ٭      ابوادریس  کا اضافہ خود ابن مبارک  کا ہے  ، اس لئے کہ ان کے استاذ عبد الرحمن سے روایت کرنے والے ثقات کی ایک جماعت نے ابو ادریس کا ذکر  نہیں کیا اور بعض نے تو تصریح کردی ہے کہ ’’ بسر ‘‘ نے براہ راست ’ واثلہ ‘‘سے  سنا ہے ۔(۹۲)

  حکم:-         وہم کی بنا پر مردود ہوتی ہے ، ہاں زیادتی کرنے والا اپنے مقابل سے فائق ہو تو پھر

راجح و مقبول ہے ۔ اور دوسری منقطع  ،لیکن یہ انقطاع خفی ہوتا جس سے حدیث مرسل خفی ہوجاتی ہے ۔

 

 

تصنیف فن

٭    تمیز المزید فی متصل الاسانید للخطیب ،       م۴۶۳

       یہ اس فن کی اہم کتاب ہے ۔

مضطرب

تعریف:-  وہ حدیث جس کے تمام راوی ثقہ اور ہم پلہ  ہوں لیکن  مختلف صورتوں کے ساتھ مروی ہو۔ کبھی ایک



Total Pages: 604

Go To
$footer_html