$header_html

Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

بسقبۃ‘‘  کے کیا معنی ہیں ، فرمایا:میں  اپنی رائے سے اس حدیث کی تفسیر نہیں کر سکتا۔  البتہ اہل  عرب ’سقب‘ کے معنی  قرب و نزدیکی بیان کر تے ہیں( ۳۱)

       یہ دونوں واقعے اسی غات احتیاط کی طرف مشیر ہیں ۔

       بہترین  تفسیر وہ کہلاتی ہے جو خود حضور ہی  سے کسی دوسری  حدیث میں منقول ہو۔

        صل قائما فان لم تستطع فقاعدا فان لم تستطع  فعلی جنبْ ۔  (۳۲)

        کھڑے ہو کر نماز پڑھو،  اور اگر یہ نہ  ہو سکے تو بیٹھ کر  پڑھو اور اگر یہ   نہ ہو سکے تو پہلو پر۔

       دوسری  روایت  جو حضرت  علی کرم اللہ تعالیٰ وجہہ الکریم   سے ہے اس میں  حضور  نے ’فعلی جنب‘  کی تفسیر یو ں  فرمائی ، داہنی کروٹ کے بل  قبلہ  رخ  ہو کر ۔

 تصانیف فن

٭     کتاب  نضر بن شمیل ، اولین کتاب                    م ۲۰۴

 ٭     غریب الحدیث لا بن عبید قاسم بن سلام        م  ۲۲۴

 ٭     غریب الحدیث  لعبد  اللہ بن  مسلم الدینوی              م ۲۲۷

 ٭     النہایۃ فی غریب الحدیث و الاثر لا بن  اثیر             م ۶۰۶

 ٭     الفائق لجاراللہ  الزمخشری                            م  ۵۳۸

 ٭     مجمع  بحار الانوارلمحمد  بن طاہر الہندی             م  ۹۸۶

 

 

 فقہاء احناف اور تقسیم مذکور

        خبر باعتبار نقل  فقہا کے نزدیک  قدرے  اختلاف کے ساتھ یوں منقول ہے:۔

                     اولاً باعتبار نقل  دو قسمیں  ہیں ۔

                     Xسند                 Xمرسل

 مسند :۔  وہ  حدیث جو پوری  سند کے ساتھ مروی ہو۔

مرسل :۔ جسکے بعض یا کل  راوی غیر مذکور ہوں۔

 



Total Pages: 604

Go To
$footer_html