$header_html

Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

نہایت خلوص کے ساتھ یہ فریضہ  انجام دیا اور کبھی  طمع و لالچ نے  راہ نہ پا  ئی ،اور آجکل اس  مسند پر متمکن ہیں تاج شریعت حضرت مفتی محمد  اختر رضا خاںصاحب قبلہ ازہری مد ظلہ  العالی۔

       امام احمد رضا قدس سرہ  نے  فتاوی اردو، فارسی اور عربی زبان  میں تحریر فرمائے۔ جس زبان میں سوال آتا اسی میں جواب دیا  جا تا، حتی کہ سوال منظوم ہوتا  تو جوا ب  بھی  نظم  ہی میں  دیا  جاتا ۔ اسکے علاوہ  انگریزی میں  بھی  بعض  فتاوی منقول ہیں ۔

       فتاوی رضویہ  چودھویں  صدی کا  بلا شبہ فقہی انسائکلوپیڈیا ہے  اور مجھ جیسا ہیچمداں اسکی  کما حقہ  خوبیاں کرنے سے قاصر اور اسکی  علمی گہرائی  تک  پہونچنا  مشکل ہے ۔وہ ایسا بحر بیکراں ہے جسکے ساحل پر کھڑے رہ کر اسکے  مناظر قدرت تو دیکھے جا سکتے   ہیں لیکن اسکی گہرائی کو ناپنا اور غواصی کر کے  موتی برآمد کرنا ہر کہہ و مہ کا کام نہیں  ہوتا ۔

       آپ کے فتاوی سے  متاثر ہو کر  بڑے بڑے  علامۂ  وقت  اتنا لکھ چکے ہیں کہ انکو جمع کیا  جائے توضخیم کتاب  بن جائے ۔ آپ کے بعض  عربی فتاوی کو ملاحظہ  فرمانے کے بعد محافظ کتب حرم  سید اسمعیل خلیل نے  لکھا اور کیا خوب لکھا ۔

        وااللہ  اقول والحق اقول: لو رأھا ابو حنیفۃ النعمان لا قرت عینہ ویجعل  مؤلفہ من جملۃ  الاصحاب۔

        قسم کھا کر کہتا ہوں اور حق کہتاہوں کہ اگر ان فتاوی کو امام اعظم ابو حنیفہ  ملاحظہ  فرماتے تو انکو خوشی  ہوتی اور صاحب فتاوی کو  اپنے شاگردوں میں شامل کر  لیتے۔

          آپ  کو پچاس سے  زیادہ  علوم و فنون میں تبحر حاصل  تھا اور جس فن میں  قلم اٹھا یا تحقیق انیق کے دریا  بہائے ۔

        آپ نے پچاس سے زیادہ علوم و  فنون پر تقریبا  ایک ہزار کتابیں  تصنیف فرمائیں ۔

 مختلف  علوم و فنون پر تصانیف اور انکی  تعداد

       ابتک  جن تصانیف کی فہرستیں تیار ہوئیں  ان میں سب سے طویل  اور محتاط فہرست فاضل  گرامی مرتبت حضرت مولانا  عبد المبین صاحب نعمانی  مد ظلہ   کی  مرتب کردہ ہے جسکا اجمالی خاکہ اسطرح ہے ۔

      

علوم و فنون                                        تعداد تصانیف

 



Total Pages: 604

Go To
$footer_html