$header_html

Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

       مسلم علم کا خزانہ ہیں میں نے ان میں خیر کے سوا کچھ نہیں پایا ۔

وصال ۔آ پ کے وصال کا واقعہ بھی نہایت عجیب بیان کیاجاتاہے کہ کسی مجلس میں آپ سے ایک حدیث کے بارے میں سوال ہوا ،اتفاق سے وہ حدیث یاد نہ آئی ،گھر آکر اس حدیث کو کتابوں میں تلاش کرنا شروع کیا ،قریب ہی کھجور وں کا ایک ٹوکرابھی رکھا تھا ،حدیث کی تلاش کے دوران ایک ایک کھجور اٹھا کرکھاتے رہے اور اس انہماک میں مقدار کی طرف             توجہ نہ ہوسکی اور پورا ٹوکرا خالی ہوگیا ،جب حدیث مل گئی تو مڑ کردیکھا تو کھجوریں زیادہ کھا لینے کا احساس ہوا ، اس کی وجہ سے آپ بیمار ہوگئے اور ۲۴؍رجب ۲۶۱ھ بروز اتوار وصال ہوگیا ۔

 صحیح مسلم

      آپکی تصانیف کی تعداد بیس سے متجاوز ہے لیکن صحیح مسلم کو عظیم شہرت اور قبولیت عامہ کا شرف حاصل ہے ۔حتی کہ متقدمین میں بعض مغاربہ اور محققین نے صحیح مسلم کو صحیح بخاری پر بھی فوقیت دی ہے ۔

       امام بخاری کا مقصد احادیث صحیحہ مرفوعہ کی تخریج اور فقہ وسیرت نیز تفسیر وغیرہ کا استنباط تھا اس لئے انہوںنے موقوف معلق  ،صحابہ وتابعین کے فتاوی بھی نقل کئے جسکے نتیجہ میں احادیث کے متون وطرق کے ٹکرے کتاب میںبکھر گئے ۔ اور امام مسلم کا مقصد صرف احادیث صحیحہ کو منتخب کرنا ہے ،وہ استنباط وغیرہ سے تعرض نہیں کرتے بلکہ ہر حدیث کے مختلف طرق کو حسن ترتیب سے یکجا بیان کرتے ہیں جس سے متون کے اختلاف اور مختلف اسانید سے واقفیت حاصل ہوتی ہے اس لئے احادیث منقطعہ وغیرہ کی تعداد نادر ہے ۔

       آپ نے اپنے شیوخ سے براہ راست سماعت کی ہوئی تین لاکھ احادیث سے صحیح مسلم کا انتخاب کیا ہے ، اور مختلف حیثیات سے احادیث کی تعداد چار ہزار ،آٹھ ہزار اور بارہ ہزار شمار کی گئی ہے ۔ کتاب کی ترتیب میں ابواب کا لحاظ تو آپ نے رکھا تھا لیکن تراجم ابواب قائم نہیں فرمائے ،آپکے بعد دیگر محدثین نے یہ کام انجام دیا ۔(۱۹)

 

 

 

 

vbvbvbvbvbvbvbv

 



Total Pages: 604

Go To
$footer_html