Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

اللہ تعالیٰ عنہ کے عہد پاک کے بارے میں توآپ پڑھ ہی چکے کہ تدوین حدیث کا عظیم کارنامہ آپکے ہاتھوں سے امام زہری کے ذریعہ انجام پایا۔

       غرضکہ اس دور میں محدثین وفقہاء نے اپنے خلوص وایثار سے علم حدیث کی حفاظت

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۱۱۲۔   تدوین دیچ،         ۹۶

 فرمائی توارباب حکومت نے بھی بہت سے علماء وحفاظ کی خدمات کوسراہتے ہوئے انکی کفالت کی ذمہ داری قبول کی اوراس طرح  وضع حدیث کے فتنہ کی سرکوبی میں ان لوگوں نے بھی کافی بڑھ

چڑھ کر حصہ لیا ۔چند واقعات سے اس رخ  کی تصویر بھی ملاحظہ کرتے چلیں ۔

        یہ ہی عبدالملک بن مروان ہے جسکا علم حدیث سے شغف آپ گذشتہ واقعہ سے سمجھ سکتے ہیں کہ کتناتھا ،ایک مرتبہ اپنے منبر سے اعلان کیا ۔

       قد سالت علینا احادیث من قبل ہذاالمشرق لانعرفھا ۔(۱۱۳)

        اس مشرق کی طرف سے ایسی حدیثیں بہ بہ کہ ہماری طرف آرہی ، ہیں  جنہیں  ہم نہیں

پہچانتے ۔

       اسی عبدالملک بن مروان نے ایک موقع پر حارث بن سعید کذاب کو ا س لئے دار

پرکھینچاکہ وہ حدیثیں وضع کرتا تھا ۔

        اسکے بیٹے ہشام نے غیلان دمشقی کو اسی لئے قتل کرایا کہ حضور اقدس  صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم کی طرف منسوب کرکے غلط حدیثیں عوام میں پھیلاتااور دین میں رخنہ اندازیاں کرتاتھا ۔

       خالد بن عبداللہ قسری مشہور گورنر نے بیان بن زریق کو محض وضع حدیث کے جرم میں قتل کرایا۔

        اسی طرح خلفائے بنو عباس میں ابو جعفر منصور نے محمدبن سعید کو سولی دی جسکا جرم حضور  صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم کی طرف غلط نسبت کرنا تھا ۔ اسکے ساتھ حکام وقت اور قاضی شرع بھی سخت چوکنے رہتے تھے ، بصرہ کے حاکم محمد بن سلیمان نے عبدالکریم بن ابی العوجاء مشہور وضاع

حدیث کو قتل کرادیا ۔

       خطیب بغدادی لکھتے ہیں:۔

 



Total Pages: 604

Go To