Book Name:Jame Ul Ahadees Jild 1

نے کبھی آپکی زبان سے یہ الفاظ نہیں سنے کہ حضور نے یہ فرمایا ۔

       ایک شام انکی زبان سے یہ الفاظ نکلے کہ حضور اقدس صلی اللہ  تعالیٰ علیہ وسلم کا ارشاد ہے ۔ کہتے ہیں : یہ الفاظ کہتے ہی وہ جھک گئے ،میں نے انکی طرف دیکھا تووہ کھڑے تھے ،ان کی قمیص کے بٹن کھلے ہوئے تھے ،آنکھوں سے سیل رشک رواں تھا اورگردن کی  رگیں پھولی ہوئی تھیں ۔

       حضرت انس بن مالک فرماتے ہیں : مجھے غلطی کا خوف نہ ہو تو میں تمہیں بہت سی ایسی باتیں سنائوں جو میں نے حضور سے سنی ہیں۔ (۶۴)

       حیرت ہے کہ جس عہد کے لوگ روایت حدیث کے بارے میں اتنے محتاط ہوں وضع حدیث کو اس دورکا کارنامہ خیال کیاجاتاہے ۔

       صحابہ کرام رضوان اللہ تعالیٰ علیہم اجمعین کے بعد تابعین اورتبع تابعین نے بھی حدیث رسول کے چشمۂ صافی کو غایت درجہ ستھرا رکھنے کی مساعی جاری رکھیں اور اپنے ادوار میں کامل احتیاط سے کام لیا ،انہیں کے زمانہ خیر میں  تدوین حدیث یعنی باقاعدہ حدیثوں کو کتابی شکل میں مدون کیاگیا جواس زمانہ کی ضرورت کے بالکل عین مطابق تھا جیسا کہ تفصیل آئندہ آرہی ہے ۔

 

 

 

 

XZXZXZXZXZX

XZXZXZXZX

 

 

 

 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

۶۴۔    ضیاء النبی،                             ۷/۱۰۲

 



Total Pages: 604

Go To