Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

پڑی ہے، یہ تھوڑے ہی دنوں کے لئے ہے، اِنْ شَآءَ اللہ عَزَّ  وَجَلَّ اسے بھی نکال دیں گے ۔اس کے باوُجُود میری سونے کی جگہ نیچے ہے ،میں یہیں سوتا ہوں قبلہ سمت کروٹ لے کر ، یہ سنّت بکس بھی ہوتاہے ، ساتھ سرہانے رکھتا ہوں۔ اللہ     عَزَّوَجَلَّ کی اُن پر رَحمت ہو اور ان کے صَدقے ہماری بے حساب مغفِرت ہو۔  امین بِجاہِ النَّبِیِّ الْاَمین صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وسلَّم

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                                                                                      صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

سوتے وقت چہرہ قبلے کی طرف رکھنا سنّت ہے

          اعلیٰ حضرت امامِ اہلِسنّت مجدِّدِ دین وملّت مولانا شاہ امام احمد رضاخان علیہ رحمۃُ الرَّحمٰنفرماتے ہیں :سنت یوں ہے کہ قُطب کی طرف سر کرے اور سیدھی کروٹ پر سوئے کہ سونے میں بھی منہ کعبہ کو ہی رہے۔(فتاوی رضویہ مخرجہ ج۲۳ص۳۸۵)

(۳۳) قبلہ سَمت بیٹھنے کی کوشش فرماتے

        سرکارِ مدینہ ، سُلطانِ باقرینہ ،قرارِ قلب وسینہ ، فیض گنجینہ، صاحِبِ مُعطَّر پسینہ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی علیہ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمعُمُوماً قِبلہ رُو بیٹھتے تھے ۔(اِحیاء العلوم ج۲ ص۴۴۹ )

           شیخِ طریقت امیرِ اہلسنّت دامت برکاتہم العالیہ کااپنے میٹھے میٹھے آقاصَلَّی اللہُ تَعَالٰی علیہ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم  کی پیروی میں قبلہ رُو بیٹھنے کامعمول ہے اور ان کی صحبت کی برکت سے محبوبِ عطّارحاجی زم زم رضاعطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ الباریبھی اکثر قبلہ رُو بیٹھا کرتے تھے چنانچِہ مبلغِ دعوتِ اسلامی ابورجب محمد آصف عطاری مدنی کا بیان ہے کہ

 

 



Total Pages: 208

Go To