Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

(۱۲۰)زم زم بھائی نے مجھے بچا لیا

*زم زم نگر(حیدر آباد باب الاسلام سندھ )کے اسلامی بھائی غلام فرید عطّاری کا بیان ہے کہ محبوبِ عطاررحمۃُ اللہ تعالٰی علیہ کا مجھ پربہت بڑا احسان ہے کہ انہوں نے مجھے بدمذہبوں کے چُنگل سے چھڑا کر دعوتِ اسلامی کے مَدَنی ماحول سے وابَستہ کیا ۔ اَلْحَمْدُللّٰہ عَزَّوَجَلَّ! مجھے مَدَنی ماحول میں تقریباً بیس سال ہوگئے،میں 17سال سے ایک ہی مسجِد میں امامت کرنے کی سعادت پا رہا ہوں ،یہ میرے زم زم بھائی کا صدقہ ہے ،اللہتعالیٰ مجھے ایمان پر عافیت کے ساتھ موت نصیب کرے۔اٰمِین بِجاہِ النَّبِیِّ الْامین صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم

بَقِیَّہ عُمر مَدَنی کام کرتے ہوئے گزاروں گا

          *مِٹھیاں (کھاریاں ،پنجاب پاکستان)کے ایک اسلامی بھائی محمد سعید عطاری نے مدنی چینل کو اپنے تأثرات کچھ یوں ریکارڈ کروائے کہ مجھے اٹھارہ سال ہوگئے دعوتِ اسلامی میں کچھ خاص کام نہیں کرسکا، مدنی چینل پر حاجی زم زم رضا عطاری علیہ رحمۃُ اللہِ الباری کا ذکرِخیر دیکھ کر ان کے کام کی مَدَنی بہاریں اور اِیصال ثواب کے خزانے دیکھ کر میں نیت کرتا ہوں کہ جو عمر باقی بچی ہے اب خوب خوب دعوتِ اسلامی کا مَدَنی کام کروں گا اور اسی جمعے سے مَدَنی قافلے میں سفر کی نیت بھی کرتا ہوں۔

 

 



Total Pages: 208

Go To