Book Name:Mahboob e Attar ki 122 Hikayaat

ہوں ، میرے دل کو بھی خوشی حاصل ہوگی۔‘‘ تو اسلامی بھائیوں نے آپ  دامت برکاتہم العالیہ کی آواز پر لبیک کہتے ہوئے باب المدینہ کراچی،مرکزالاولیاء لاہور،اسلام آباد، راولپنڈی،نواب شاہ ،گوجرانوالہ،پاک پتن،عطار والا( بُورے والا)،خانیوال ، بلوچستان اوربیرون ملک ساؤتھ افریقہ ، سی لنکا وغیرہ میں مسجدیں بنانے کی ہاتھوں ہاتھ نیتیں کیں اور تادمِ تحریرملک وبیرونِ ملک تقریباً72مسجدیں بنانے کی نیتیں پیش کی جاچکی ہیں ، جن میں سے کم وبیش 40پلاٹ خرید لئے گئے اور تادمِ تحریر (یعنی ۱۲ محرم الحرام۱۴۳۴ھ میں )پانچ جگہ پر تعمیراتی کام بھی شروع ہوچکاہے ۔

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                                                                                      صلَّی اللہُ تعالٰی علٰی محمَّد

پیٹ کی بیماری میں مرنے والا شہید ہے

          حاجی زم زم رضا عطاری عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللہِ الباری کا انتقال پیٹ کی بیماری کی وجہ سے ہوا ہے ، اور پیٹ کی بیماری میں انتقال کرنے والے کو شہید قرار دیا گیا ہے ، چنانچہ حضرتِ سیِّدُناابوہریرہ رضی اللہ تعالٰی عنہسے روایت ہے کہ رسولِ اکرم ، نُورِمُجَسَّمصلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّمنے فرمایا: تم کس کو شہیدسمجھتے ہو؟صحابۂ کرام عَلَیْہِمُ الرضواننے عرض کی: یارسول اللہصلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم ! جوشخص اللہ عَزَّوَجَلَّ کی راہ میں قتل کیاجائے وہ شہید ہے۔ آپ صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم نے فرمایا:پھر تو میری امَّت کے شہداء بَہُت کم ہوں گے!صَحابۂ کرامعَلَیْہِمُ الرضوان نے عرض کی: یارسول اللہصلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم ! پھروہ کون لوگ ہیں ؟ آپ صلَّی


 

 



Total Pages: 208

Go To