Book Name:Bughz-o-Keena

اور مجھ سے بھی سرزد نہ کبھی بے ادبی ہو

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیب !                                                                                   صلَّی اللّٰہُ تعالٰی علٰی محمَّد

خلاصۂ کتاب

          کینہ مُہلک باطنی مرض ہے اور اس کے بارے میں جاننا فرض ہے

        کینہ یہ ہے کہ انسان اپنے دل میں کسی کو بوجھ جانے،  اُس سے دشمنی وبغض رکھے،  نفرت کرے اور یہ کیفیت ہمیشہ ہمیشہ باقی رہے 

        کسی مسلمان سے بلا وجہ شرعی کینہ رکھنا حرام ہے

          کسی ظالم سے کینہ رکھنا جائز جبکہ بدمذہب وکافر سے کینہ رکھنا واجب ہے ۔

کینہ رکھنے والے کو ان نقصانات کا سامنا ہوگا

           (۱) دوزخ میں داخلہ (۲)  بخشش سے محرومی  (۳) شبِ براء ت میں بھی محروم رہتا ہے (۴) جنت کی خوشبو بھی نہ پائے گا (۵) ایمان برباد ہونے کا خطرہ ہے  (۶) دعا قبول نہیں ہوتی (۷) دیگر گناہوں کا دروازہ کھل جاتا ہے  (۸) اسے سکون نصیب نہیں ہوتا (۹) صحابہ کرام علیہم الرضوان،  سادات عظام  رضی اللہ تعالٰی عنہم ،  علمائے کرام اور عربوں سے بُغْض وکینہ رکھنا زیادہ بُرا ہے ۔

کینے کا علاج

           (۱) ایمان والوں کے کینے سے بچنے کی دعا کیجئے

           (۲) کینے کے اسباب  (غصہ ، بدگمانی ،  شراب نوشی ،  جُوا وغیرہ) دور کیجئے

           (۳) سلام ومصافحہ کی عادت بنالیجئے

           (۴) بے جا سوچنا چھوڑ دیجئے

 (۵) مسلمانوں سے اللّٰہ کی رضا کے لئے محبت کیجئے

  (۶) دُنیاوی چیزوں کی وجہ سے بُغْض وکینہ رکھنے کے نقصانات پر غور کیجیے ۔

دوسروں کو اپنے کینے سے بچانے کے طریقے

  (۱)  کسی کی بات کاٹنے سے بچئے

  (۲)  کسی کی غلطی نکالنے میں احتیاط کیجئے

  (۳)  موقع محل کے مطابق عمل کیجئے

  (۴)  مشورہ بُغْض وکینے کو کافُور کرتا ہے

  (۵)  کسی کی اصلاح کرنے کا انداز محبت بھرا ہونا چاہئے

  (۶) رشتے پر رشتہ نہ بھیجئے

  (۷) خوامخواہ حوصلہ شکنی نہ کیجئے

  (۸) دوسروں کو نہ جھاڑئیے

  (۹) رُوحانی عِلاج بھی کیجئے  ۔

(تفصیل کے لئے رسالے کا پھر سے مطالعہ کیجئے(

 



Total Pages: 30

Go To