Book Name:Rehnuma e Mudarriseen

کروائیے ۔  

            مُدَرِّس مدنی منّے کو سمجھائے کہ  الٓمّ ٓo اللّٰہ کو پڑھنے کے دو طریقے ہیں :

            (۱)… وصل :   ( اَلِفْ لَامْ ٓ مِیْمَ اللّٰہُ)(۲)…وَقْف :  (اَلِفْ لَامْ ٓ مِیْمo اَللّٰہُ)

          بعض مدنی منّے اس سبق میں درج ذیل چند غَلَطیاں کرتے ہیں جن کی طرف مُدَرِّس کو تَوَجُّہ دینا بے حد ضروری ہے :

            (۱)…کٓھٰیٰعٓصٓ  میں کھڑی حرکات کو ایک الف سے زیادہ دراز کرنا ۔  عین کے نون کو اور عٓسٓقٓ  میں عین اور سین کے نون کو بغیر اِخفاء کے پڑھنا ۔  

            (۲)…طٰسٓمّ ٓ میں سین کے نون کا میم میں اِدغام نہ کرنا ۔  

            (۳)…الٓمّ ٓoاللّٰہُ کو حالت ِ وصل میں بعضمدنی منّیمِیْمَ اللّٰہُ کے بجائے  مِیمْ مَ اللّٰہُ پڑھتے ہیں ۔  اس سے میم کا اضافہ ہوجاتا ہے ۔  لہٰذا ان اَغلاط پر خصوصی تَوَجُّہ فرماکردورکروائیے ۔  

 امتحان کی ترکیب : دی گئی ہدایات کے مطابق اس سبق کو پڑھاتے ہوئے امتحان کی ترکیب اس طرح بنائیے کہمدنی منّے سے نیچے سے اوپر  "  ،  اوپر سے نیچے  "   " ، دائیں سے بائیں " "  اور بائیں سے دائیں " " سنیں  نیز مختلف کلمات پر اُنگلی رکھ کرحُرُوفِ مقطعات کے قوا عِد کی پہچان کی جانچ کیجئے نیز اس بات کا بھی خیال رکھیے کہ مدنی منّا تمام قوا عِد کی دُرُست ادائیگی کر رہا ہے کہ نہیں ؟

مَدَ نی التجا : اگر اس سبق میں مدنی منّے کی کوئی کمزوری دیکھیں تو اُسے سابقہ اسباق کی مدد سے لازِمی دُرُست فرمائیے ۔  

 

طریقۂ تَدْرِیس

قواعِد سمجھانا اور سبق پڑھانا :

            مُدَرِّس کو چاہیے کہ مدنی منّے کو سمجھائے کہ٭  الف سے پہلے زبر ہو تو الف کو دو حرکات کے برابر کھینچ کر پڑھتے ہیں جیسے مَا ۔ ھَا ۔  ٭اگر ایسے الف کے بعد جزم یا تشدید والا حَرْف آجائے تو اس الف کو نہیں پڑھیں گے جیسے وَالْحِکْمَۃِ  ۔ وَمَا اللّٰہُ ۔  مگر قرآن مجید میں بعض کلمات ایسے ہیں جہاں الف کے بعد جزم یا تشدید والا حَرْف بھی نہیں لیکن پھر بھی الف نہیں پڑھا جاتا ۔  ایسے الف کو زائد الف کہتے ہیں اور عموماً قرآن مجید میں ایسے الف پر چھوٹا سا گول دائرہ بنا ہوتا ہے ۔  یہ الف  لکھنے میں آتا ہے پڑھنے میں نہیں آتا ۔  ٭اگرچہ ان کلمات کے نیچے پارہ، سورت اورآیت نمبردئیے گئے ہیں مگر پھر بھی بہتر یہ ہے کہ یہ کلمات مدنی منّے کو قرآن مجید میں بھی دکھادئیے جائیں تاکہ ان کلمات کی پہچان مزید پُختہ ہوجائے ۔  تھوڑی سی کوشش سے بات اچھی طرح سمجھ میں آجائے گی اور اس طریقہ کار سے مدنی منّے میں قرآن مجید پڑھنے کا شوق اجاگر ہوگا ۔  ٭بعض مدنی منّے ان پانچ کلمات :  (۱) اَنَا مِلَ(۲) اَنَا سِیَّ (۳) لِلْاَنَامِ (۴)  اَنَا بُوْا(۵) مَنْ اَنَابَمیں بھی الف کو نہیں پڑھتے جبکہ یہاں الف کو پڑھا جائے گا ۔ ٭سبق کے آخر میں دئیے گئے چھ کلمات میں زائد الف کو وصل میں نہیں پڑھیں گے جبکہ وَقْف کی صورت میں پڑھیں گے ۔  ٭اس سبق کو بھی ہجے

 اور رواں دونوں طریقوں سے پڑھائیے ۔  ٭ہجے اِس طرح کروائیے : جیسے اَفَا ئِنْ مَّاتَ  ہمزہ زَبر اَ ، فا زبر فَا =  اَفَ ،  ہمزہ نون میم زِیر   ئِنْ مّ = اَفَا ئِنْ مّ  ،  میم الف زَبر مَا   = اَفَـا ئِنْ مَّا  ، تا زبر  تَ =  اَفَـا ئِنْ مَّاتَ  ۔

 



Total Pages: 39

Go To