Book Name:Abu Jahal ki maut

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ عَلٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

ابو جہل کی موت ([1])

شیطٰن لاکھ سستی دلائے یہ بیان(26 صَفْحات)مکمَّل پڑھ لیجئے اِنْ شَآءَاللہ عَزَّ    وَجَلَّ آپ اپنے دل میں مَدَنی انقلاب برپا ہوتا محسوس فرمائیں گے ۔

دُرُود شریف لکھنے والے کی مغفرت ہوگئی

             حضرتِ سیِّدُناسفیان بن عُیَیْنَہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ فرماتے ہیں  : میرا ایک اسلامی بھائی تھا ، مرنے کے بعد اسے خواب میں دیکھ کر پوچھا : مَافَعَلَ اﷲُبِک؟یعنی اللہ تَعَالٰی نے آپ کے ساتھ کیامُعامَلہ فرمایا؟جواب دیا :  اللہ تَعَالٰی نے مجھے بخش دیا ۔  میں نے پوچھا : کس عمل کے سبب؟کہنے لگا : میں حدیث لکھتا تھا جب بھیشاہِ خیرُالْاَنام عَلَیْہِ الصَّلَاۃُ وَ السّٰلام کاذِکر ِخیر آتامیں ثواب کی نیّت سے ’’ صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ ‘‘لکھتا، اسی عمل کی بَرَکت سے میری مغفِرت ہوگئی ۔      (اَلْقَوْلُ الْبَدِ یع ص۴۶۳)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                                                صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

دُرُود کی جگہ                    ؐ لکھنا حرام ہے

       میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو! سُبْحٰنَ اللہ!دُرُود شریف لکھنے کی بھی کیا خوب برکتیں ہیں ۔ اس حکایت سے یہ بھی معلوم ہوا جب بھی دُرُود شریف پڑھیں یا لکھیں ’’ ثواب کی نیَّت‘‘ ہونا ضَروری ہے اور یہ تو ہر عمل میں لازم ہے ، اگر کسی اچّھے عمل میں اچّھی نیّت نہ ہو گی تو ثواب نہیں ملے گا ۔  اس لئے ہر ہر عمل سے قبل اچّھی اچّھی نیّتوں کی عادت بنانی چاہئے ۔  دُرُود شریف لکھنے کے تعلُّق سے بعض مَدَنی پھول قَبول فرمایئے : جب بھی نام اقدس لکھیں تو زَبان سے  صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَکہیں بھی اورلکھیں بھی نیزمکمّلصَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَلکھاکریں ، اسکی جگہ اِس کامُخَفَّف(Abbreviation) صلعم یا  ؐ لکھنا ناجائز و سخت حرام ہے ۔ (ماخوذ اَز بہارِشریعت ج۱ص۵۳۴)اسی طرح جلَّ جلالُہ کی جگہ ج یاعَلَیْہِ السَّلام کی جگہ   ؑ  ، رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ کی جگہ   ؓ اوررَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہ  کے بجائے   ؒ مت لکھاکیجئے ۔      

 



[1]     یہ بیان امیر اہلسنت نے تبلیغ قراٰن وسنت کی عا لمگیرغیر سیاسی تحریک دعوت اسلامی کے تین روزہ اجتماع (۵، ۶، ۷ رجب المرجب  ۱۴۲۰؁ ھ بروز اتوار مدینۃالاولیاء ملتان)میں فرمایا ۔ ضروری ترمیم کے ساتھ تحریراً حاضر خدمت ہے ۔ مجلسِ مکتبۃُ المدینہ



Total Pages: 14

Go To