Book Name:Dus Aqeeday

(اور )  نام ان کا ہر جگہ نامِ الٰہی کے برابر:   ؎  ([1])

( وَرَفَعْنَا لَکَ ذِکْرَکَ کا ہے سایہ تجھ پر

  ذکر اُونچا ہے ترا، بول ہے بالا تیرااحکامِ تَشْرِیْعِیَّہ،([2])  شریعت کے فرامین، اَوامرو نَواہی سب ان کے قبضہ میں  ، سب ان کے سِپُرد، جس بات میں   جو چاہیں   اپنی طرف سے فرمادیں   وہی



[1] ۔۔۔ یعنی اللّٰہ عَزَّوَجَلَّ کے نام کے ساتھ رسولُ اللّٰہ صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا نام ذکر ہوا

ہے، چند مقامات ملاحظہ ہوں  ؛ اللّٰہ اور رسول دونوں   غنی کرتے ہیں  :چنانچہ ربّ ارشاد فرماتا ہے:

وَ مَا نَقَمُوْۤا اِلَّاۤ اَنْ اَغْنٰىهُمُ اللّٰهُ وَ رَسُوْلُهٗ مِنْ فَضْلِهٖ

ترجمۂ کنز الایمان: اور انہیں   کیا برا لگا یہی نہ کہ اللّٰہ  ورسول نے انہیں   اپنے فضل سے غنی کردیا۔ (پ۱۰، التوبۃ: ۷۴)

اللّٰہ اور رسول دونوں   دیتے ہیں   چنانچہ ارشاد فرمایا:

وَ لَوْ اَنَّهُمْ رَضُوْا مَاۤ اٰتٰىهُمُ اللّٰهُ وَ رَسُوْلُهٗۙ-وَ قَالُوْا حَسْبُنَا اللّٰهُ سَیُؤْتِیْنَا اللّٰهُ مِنْ فَضْلِهٖ وَ رَسُوْلُهٗۤ

ترجمۂ کنزالایمان:اور کیا اچھا ہوتا اگر وہ اس پر راضی ہوتے جو اللّٰہ  ورسول نے ان کودیا اور کہتے ہمیں   اللّٰہ کافی ہے اب دیتا ہے ہمیں   اللّٰہ اپنے فضل سے اور اللّٰہ  کا رسول۔ (پ۱۰، التوبۃ : ۵۹)

اللّٰہ اور رسول کو راضی کرنا:

وَ اللّٰهُ وَ رَسُوْلُهٗۤ اَحَقُّ اَنْ یُّرْضُوْهُ

ترجمۂ کنزالایمان: اور اللّٰہ  ورسول کا حق زائد تھا کہ اسے راضی کرتے ۔ (پ۱۰، التوبۃ : ۶۲)

اللّٰہ اور رسول دونوں   نعمت دیتے ہیں  :

وَ اِذْ تَقُوْلُ لِلَّذِیْۤ اَنْعَمَ اللّٰهُ عَلَیْهِ وَ اَنْعَمْتَ عَلَیْهِ

ترجمۂ کنزالایمان: اور اے محبوب یاد کرو جب تم فرماتے تھے اس سے جسے اللّٰہ نے نعمت دی اورتم نے اُسے نعمت دی۔ (پ۲۲، الاحزاب:۳۷)

اللّٰہ اور رسول کا حکم مانو:

وَ  مَنْ  یُّطِعِ  اللّٰهَ  وَ  رَسُوْلَهٗ 

ترجمۂ کنزالایمان: اور جو حکم مانے اللّٰہ اور اللّٰہ کے رسول کا ۔ (پ۴،  النساء: ۱۳)

رسول کا حکم مانناایسا ہی ہے جیسے اللّٰہ  کا حکم ماننا:

مَنْ یُّطِعِ الرَّسُوْلَ فَقَدْ اَطَاعَ اللّٰهَ

ترجمۂ کنزالایمان: جس نے رسول کا حکم مانا بے شک اس نے اللّٰہ  کا حکم مانا۔(پ۵،  النساء:۸۰)

اللّٰہ اور رسول کا حکم مانو:

اَطِیْعُوا اللّٰهَ وَ الرَّسُوْلَ

ترجمۂ کنزالایمان: حکم مانو اللّٰہ اور رسول کا۔(پ۳،  اٰل عمرٰن:۳۲)

اور فرمایا:

یٰۤاَیُّهَا الَّذِیْنَ اٰمَنُوْۤا اَطِیْعُوا اللّٰهَ وَ اَطِیْعُوا الرَّسُوْلَ

ترجمۂ کنزالایمان: اے ایمان والو! حکم مانو اللّٰہ کا اور حکم مانو رسول کا۔ (پ۵، النساء:۵۹)

اللّٰہ اور رسول کے بلانے پر حاضر ہوجاؤ:            

یٰۤاَیُّهَا الَّذِیْنَ اٰمَنُوا اسْتَجِیْبُوْا لِلّٰهِ وَ لِلرَّسُوْلِ اِذَا دَعَاكُمْ لِمَا یُحْیِیْكُمْۚ-

ترجمۂ کنزالایمان: اے ایمان والو! اللّٰہ و رسول کے بلانے پر حاضر ہو جب رسول تمہیں   اس چیز کے لیے بلائیں   جو تمہیں   زندگی بخشے گی۔ (پ ۹، الانفال: ۲۴)

اس کے علاوہ بہت سی آیتیں   ہیں   لیکن یہاں   چند پر اکتفا کیا گیا ہے۔

 

[2] ۔۔۔ احکام کے حلال وحرام کرنے کے اختیارات۔



Total Pages: 62

Go To