Book Name:Firon Ka Khwab

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ علٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

فرعون کا خواب

دُرُود شریف کی فضیلت

     فرمانِ مصطَفٰے صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ: جس نے مجھ پر ایک بار دُرُودِ پاک پڑھا اللہ عَزَّ وَجَلَّاُس پر دس رحمتیں  بھیجتا ہے۔  (مُسلِم ص۲۱۶حدیث۴۰۸)

{۱} فرعون کا خواب

     فرعون نے ایک مرتبہ خواب دیکھا کہ ’’بیتُ الۡمُقَدَّس  (بَے۔  تُلْ۔ مُقَدْ۔ دَسۡ)  کی طرف سے ایک آگ نکلی جس نے سارے مِصۡر کو گھیر لیا اور تمام قبطیوں  (قِبْ۔ طِی۔ یوں )  کو جلا ڈالا مگر بنی اسرائیل کو آگ سے کوئی نقصان نہ پہنچا ۔ ‘‘ یہ عجیب و غریب خواب دیکھ کر فرعون پریشان ہو گیا۔ اِس نے نجومیوں  سے تعبیر معلوم کی تو انہوں  نے بتایا کہ  ’’بنی اسرائیل میں  ایک لڑکا پیدا ہو گا جو تیری بادشاہت ختم ہو جانے کا سبب بنے گا۔ ‘‘ یہ سُن کر فرعون نے حُکۡم دیا کہ بنی اسرائیل میں  جوبھی لڑکا پیداہو اُسے قَتۡل کردیاجائے۔  اِس طرح فرعون کے حکم سے 12 ہزار یا 70 ہزار لڑکے قَتۡل  کردیئے گئے۔   (تفسیرِخازِن ج۱ص۵۲)

فرعون کااصلی نام کیا تھا؟

     میٹھے میٹھے مَدَنی مُنّو اور مُنّیو!  پرانے زمانے میں  ’’مِصۡر‘‘ کے بادشاہوں  کا لَقَب ’’فرعون ‘‘ ہوا کرتا تھا،  اِسی طرح ’’رُوم‘‘ کے بادشاہوں  کا قَیصَر،   ’’فارَس‘‘ (ایران)  کے بادشاہوں  کا کِسۡریٰ  (کس۔ را) ،  ’’یمن ‘‘ کے بادشاہوں  کا تُبَّع  (تُبْ۔  بَعْ)  ’تُرۡک‘‘ بادشاہوں کاخاقان اور ’’حَبۡشہ‘‘ کے بادشاہوں  کا لقب نجاشی تھا۔  مِصۡر کے جتنے بھی بادشاہ گزرے ان



Total Pages: 14

Go To