Book Name:Fatawa Razawiyya jild 17

٭ کفل الفقیہ الفاھم __________________________________________۳۹۵
٭کاسرالفقیہ الواھم __________________________________________۵۰۵

بسم الله الرحمن الرحیم

 

پیش لفظ

الحمدﷲ! اعلٰیحضرت امام المسلمین مولانا الشاہ احمد رضاخاں فاضل بریلوی رحمۃ اللہ علیہ کے خزائن علمیہ اور ذخائر فقہیہ کو جدید انداز میں عہدحاضر کے تقاضوں کے عین مطابق منظرعام پر لانے کے لئے دارالعلوم جامعہ نظامیہ رضویہ لاہور میں رضافاؤنڈیشن کے نام سے جو ادارہ ماہ مارچ ۱۹۸۸ء میں قائم ہواتھا وہ انتہائی کامیا بی اور برق رفتاری سے مجوزہ منصوبہ کے ارتقائی مراحل کو طے کرتے ہوئے اپنے ہدف کی طرف بڑھ رہاہے،اب تک یہ ادارہ امام احمدرضاکی متعدد تصانیف شائع کرچکاہے مگر اس ادارے کا عظیم ترین کارنامہ العطایا النبویہ فی الفتاوی الرضویہ المعروف بہ فتاوٰی رضویہ کی تخریج وترجمہ کے ساتھ عمدہ خوبصورت انداز میں اشاعت ہے۔ فتاوٰی مذکورہ کی اشاعت کا آغاز شعبان المعظم ۱۴۱۰ھ مارچ ۱۹۹۰ء میں ہواتھا اور بفضلہ تعالٰی جل مجدہ وبعنایت رسولہ الکریم تقریباً دس سال کے مختصرعرصہ میں سترہویں جلد آپ کے ہاتھوں میں ہے۔ اس سے قبل کتاب الطہارۃ، کتاب الصلٰوۃ، کتاب الجنائز، کتاب الزکوٰۃ، کتاب الصوم، کتاب الحج، کتاب النکاح، کتاب الطلاق،کتاب الایمان، کتاب الحدود والتعزیر، کتاب السیر، کتاب الشرکت اور کتاب الوقف پر مشتمل سولہ جلدیں شائع ہوچکی ہیں جن کی تفصیل سنین، مشمولات، مجموعی صفحات اور ان میں شامل رسائل کی تعداد کے اعتبار سے حسب ذیل ہے :

جلد عنوان جواباتِ اسئلہ تعدادِ رسائل سنینِ اشاعت صفحات

۱ کتاب الطہارۃ ۲۲ ۱۱ شعبان المعظم ۱۴۱۰ھ ______مارچ ۱۹۹۰ء ۸۳۸

۲ کتاب الطہارۃ ۳۳ ۷ ربیع الثانی ۱۴۱۲___________نومبر ۱۹۹۱ء ۷۱۰

۳ کتاب الطہارۃ ۵۹ ۶ شعبان المعظم ۱۴۱۲_________فروری ۱۹۹۲ ۷۵۶

۴ کتاب الطہارۃ ۱۳۲ ۵ رجب المرجب ۱۴۱۳ ________جنوری ۱۹۹۳ ۷۶۰

۵ کتاب الصّلوٰۃ ۱۴۰ ۶ ربیع الاوّل ۱۴۱۴___________ستمبر ۱۹۹۳ ۶۹۲

۶ کتاب الصّلوٰۃ ۴۵۷ ۴ ربیع الاوّل ۱۴۱۵___________اگست۱۹۹۴ ۷۳۶

۷ کتاب الصّلوٰۃ ۲۶۹ ۷ رجب المرجب ۱۴۱۵_________دسمبر۱۹۹۴ ۷۲۰

۸ کتاب الصّلوٰۃ ۳۳۷ ۶ محرم الحرام ۱۴۱۶___________جُون۱۹۹۵ ۶۶۴

۹ کتاب الجنائز ۲۷۳ ۱۳ ذیقعدہ۱۴۱۶______________اپریل۱۹۹۶ ۹۴۶

۱۰ کتاب زکوٰۃ،صوم،حج ۳۱۶ ۱۶ ربیع الاوّل۱۴۱۷___________اگست۱۹۹۶ ۸۳۲

۱۱ کتاب النکاح ۴۵۹ ۶ محرم الحرام۱۴۱۸___________مئی۱۹۹۷ ۷۳۶

۱۲ کتاب نکاح،طلاق ۳۲۸ ۳ رجب المرجب۱۴۱۸_________نومبر۱۹۹۷ ۶۸۸

۱۳ کتاب طلاق،ایمان اور حدود و تعزیر ۲۹۳ ۲ ذیقعدہ ۱۴۱۸_____________مارچ ۱۹۹۸ ۶۸۸

۱۴ کتاب السیر (ا) ۳۳۹ ۷ جمادی الاخریٰ ۱۴۱۹_________ستمبر ۱۹۹۸ ۷۱۲

۱۵ کتاب السیر(ب) ۸۱ ۱۵ محرم الحرام۱۴۲۰__________ اپریل ۱۹۹۹ ۷۴۴

۱۶ کتاب الشرکۃ،کتاب الوقف ۴۳۲ ۳ جمادی الاولٰی ۱۴۰ __________ستمبر ۱۹۹۹ ۶۳۲

سترہویں جلد

یہ جلدفتاوٰی رضویہ قدیم جلد ہفتم مطبوعہ سنی دارالاشاعت مبارکپور اعظم گڑھ بھارت کے شروع سے صفحہ ۲۹۰ تک ۲۹۸ سوالوں کے جوابات پر مشتمل ہے۔ رسالہ" کفل الفقیہ الفاھم فی احکام قرطاس الدراھم"کے علاوہ اس جلد کی عربی وفارسی عبارات کا ترجمہ راقم الحروف نے کیاہے اس سے قبل گیارہویں،بارھویں، تیرہویں اور سولہویں جلد بھی راقم کے ترجمہ کے ساتھ شائع ہوچکی ہیں جبکہ "کفل الفقیہ الفاھم فی احکام قرطاس الدراھم"کانہایت شاندار اور زوردار ترجمہ مصنف علیہ الرحمۃ کے فرزند ارجمند حجۃ الاسلام حضرت علامہ مولانا محمدحامدرضاخان بریلوی نوراللہ مرقدہ، کا ہے۔یاد رہے کہ رسالہ مبارکہ "کفل الفقیہ الفاہم"جونوٹ سے متعلقہ تمام مسائل پر محیط ہے مصنف علیہ الرحمہ نے مکہ مکرمہ میں ایک دن اور چندگھنٹوں میں علماء مکہ کی طرف سے پیش کردہ بارہ سوالات کے جواب میں تحریر فرمایا۔ رسالہ میں مذکورتحقیقات وتدقیقات کودیکھ کر علماء مکہ بہت مسرور ومحظوظ ہوئے اور مصنف علیہ الرحمہ کو انتہائی شاندار الفاظ میں خراج تحسین پیش فرمایا، رسالہ مذکورہ کی تصنیف کے بعد جب آپ حرمین شریفین سے وطن واپس تشریف لائے تومولوی رشیداحمدگنگوہی اور مولوی عبدالحی لکھنوی صاحب کے نوٹ سے متعلق فتوے نظر سے گزرے جن کے رَد میں مصنف علیہ الرحمہ نے رسالہ "کاسرالسفیہ الواھم فی ابدال قرطاس الدراھم "ملقب بلقب تاریخی "الذیل المنوط لرسالۃ النوط"تحریر فرمایا پیش نظر جلد بنیادی طور پر کتاب البیوع، کتاب الکفالہ اورکتاب الحوالہ کے مباحث جلیلہ پر مشتمل ہے تاہم متعدد ابواب فقہیہ وکلامیہ وغیرہ کے مسائل ضمناً زیر بحث آئے ہیں، مسائل ورسائل کی مفصل فہرست کے علاوہ مسائل ضمنیہ کی الگ فہرست بھی قارئین کرام کی سہولت کے لئے تیارکردی گئی ہے۔ اتنہائی وقیع اورگرانقدر تحقیقات وتدقیقات پر مشتمل مندرجہ ذیل دو رسالے بھی اس جلد کی زینت ہیں :

 (۱)کفل الفقیہ الفاہم فی احکام قرطاس الدراہم (۱۳۲۴ھ)

کاغذی نوٹ کے بارے علماء مکرہ مکرمہ کے بارہ سوالوں کا تحقیقی جواب

(۲) کاسرالسفیہ الواھم فی ابدال قرطاس الدراھم ملقب بلقب تاریخی الذیل المنوط لرسالۃ النوط (۱۳۲۴ھ)

 



Total Pages: 247

Go To