Book Name:Bijli Istemal Karnay Kay Madani Phool

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ علٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

کچھ اس رسالے کے بارے میں ۔   ۔   ۔   ۔   ۔   ۔  

   پچھلے دنوں بجلی فراہمی کے ادارے کا ایک وَفد عالَمی مَدَنی مرکز فیضانِ مدینہ    (بابُ المدینہ )  میں حاضِر ہوا ،   دعوتِ اسلامی کی مرکزی مجلسِ شوریٰ کے نگران حاجی عمران سَلَّمَہُ الرَّحْمٰنسے ملاقات کی سعادت حاصِل کی اور مَدَنی چینل پر بجلی کے بے جا صَرْف اوربجلی چوری کرنے والوں کی مذمّت کو خوب سراہا اور بجلی کی بچت میں معاون بننے والے دو عدد ہینڈبلز پیش کئے۔   نگرانِ شوریٰ نے سگِ مدینہ عفی عنہ کو ہینڈ بلزدیکر کچھ لکھنے کا ذہن دیا اور میں نے چند مشورے لکھ کر وہ ہینڈ بلز دعوتِ اسلامی کی مجلس’،  ’ المدینۃُ العِلمِیہ ‘‘ کو بھجوادیئے ،   اِس پر اُنہوں نے کچھ مَواد تیّار کر کے عنایت فرمایا اور سگِ مدینہ نے اس کی تَدوین میں اپنا حصّہ مِلایا ،   مذکورہ اِدارے کی نظر سے گزارا،   نگرانِ شوریٰ نیز المدینۃُ العِلمِیہ سے نظرِ ثانی کروائی دعوتِ اسلامی کی ’’ مجلسِ اِفتاء ‘‘ نے شَرْعی تفتیش فرمائی اور اَلْحَمْدُلِلّٰہ یوں رسالہ،  ’’ بجلی استِعمال کرنے کے مَدَنی پھول‘‘ منظر عام پر آیا۔    رسالۂ ھٰذا میں پیش کردہ تکنیکی   (Technical)  معلومات زیادہ تر مذکورہ دو عدد ہینڈ بلزہی سے لی گئی ہیں ۔    اللہ عَزَّوَجَلَّاِس رسالے کو عاشِقانِ رسول کیلئے دنیا و آخِرت کے فوائد و برکات کا باعِث بنائے اور اس کی ترتیب میں حصّہ لینے والوں اور اسے مکمَّل پڑھنے اور بجلی کے اسراف سے بچنے والے اور بچنے والیوں کی بے حساب بخشش فرمائے۔   اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صَلَّی اللہ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم

                                                                                                                                                                                                                        غمِ مدینہ و بقیع و مغفرت و

                                                                                                                بے حساب  جنّت الفردوس  میں آقا کے پڑوس کا طالب

                                                                                                                                               

                                                                                                                                         ۸ ذولحجۃ الحرام ۱۴۳۳ھ

                                                                                                                                                                        2012-10-25

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!      صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ علٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

بجلی استعمال کرنے کے مدنی پھول

 غالِباًآپ کو شیطٰن یہ رسالہ  ( 27 صفحات)  نہیں پڑھنے دے گامگر آپ کوشِش کرکے پورا پڑھ کر شیطٰن کے وار کو ناکام بنادیجئے۔  

دُرُود شریف کی فضیلت

          حضور ِ اکرم ،  نُورِ مُجَسَّم صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا فرمانِ رحمت نشان ہے:   ‘’ جس نے کتاب میں مجھ پر دُرُودِ پاک لکھا تو جب تک میرا نام اُس میں رہے گا فرشتے اُس کے لیے استغفار  (یعنی دعائے مغفِرت)  کرتے رہیں گے۔   ‘‘   (اَلْمُعْجَمُ الْاَ وْسَط  ج۱ص۴۹۷ حدیث۱۸۳۵)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!                       صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

ولیُّ اللّٰہ کی دعوت کی حِکایت

       حضرتِ سَیِّدُنا حاتِمِ اَصَمّ عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ الْاَکْرَمکو ایک مالدار شخص نے بَاِصراردعوتِ طَعام دی ،   فرمایا:   میری یہ تین شَرطیں مانو توآؤنگا،  {۱} میں جہاں چاہوں گا بیٹھوں گا {۲}جو چاہوں گا کھاؤں گا {۳}جو کہوں گا وہ تمہیں کرنا پڑے گا۔   اُس مالدار نے وہ تینوں شرطیں منظور کرلیں ۔    ولیُّ اللّٰہکی زیارت کیلئے بَہُت سارے لوگ جَمْع ہوگئے۔   وَقتِ مقررہ پر حضرتِ سَیِّدُنا حاتِمِ اَصَمّ عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ الْاَکْرَم بھی تشریف لے آئے اور جہاں لوگوں کیجُوتے پڑے تھے وہاں بیٹھ گئے ۔    جب کھانا شُروع ہوا ،  سَیِّدُنا حاتِمِ اَصَمّ عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ الْاَکْرَمنے اپنی جھولی میں ہاتھ ڈال کرسُوکھی روٹینکال کر تناوُل فرمائی۔   جب سلسلۂ طَعام کا اختتام ہوا ،   میزبان سے فرمایا:   ’’  چُولہا لاؤاور اُس پر تَوَا رکھو،  ‘‘ حکم کی تعمیل ہوئی،  جب آگ کی تَپِش سے تَوا سُرخ انگارہ



Total Pages: 12

Go To