Book Name:Shan O Karamaat e Ghaus e Azam

تِرا ذَرّہ مَہِ کامل ہے یاغَوْث                         تِرا قَطرہ یَمِ سائل ہے یاغَوْث

کوئی سَالِک ہے یا وَاصِل ہے یاغوث                 وہ کچھ بھی ہو تِرا سائل ہے یاغَوْث

                                                                                            (حدائقِ بخشش، ص۲۵۱)

صَلُّوْا عَلَی الْحَبِیْب!                                        صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

    میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو! پِیْروں کے پِیْر، پِیْـرِ دَسْتْ گِیْر، رَوْشَن ضَمِیْر، قُطْبِ رَبّانی ، مَحْبُوبِ سُبْحانی ، غَوْثِ صَمَدَانی، قِنْدِیْلِ نُورَانی، شَہْبَازِ لامَکانی، پیرِ پِیْراں ، مِیْرِ مِیْرَاں ، اَلشَّیْخْ اَبُو مُحمّد  سَیِّد عَـبْدُ الْقَادِر جِیْلانی قُدِّسَ  سِرُّہُ النّوْرَانِی عِلْمی میدان کے شَہْسُوَار ہونے کے عِلاوہ اللہ عَزَّ  وَجَلَّ  کے برگُزِیْدَہ ولی اور کَثِیْرُ الْکَرَامَات بُزُرْگ بھی ہیں ۔ چنانچہ

    اِمَامُ الْعُلَمَاء،حضرتِ عَلَّامَہ علی قاری عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ الْبَارِی بیان فرماتےہیں : شیخ سَیِّدُنا عَـبْدُ القَادِر جِیْلانی قُدِّسَ سِرُّہُ النُّوْرَانِی  کی کرامات حَدِّ تواتُر سے بھی زائد ہیں ۔ اور اس بات پر عُلَمَاء کا اِتّفاق ہے کہ جتنی کرامات آپ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ سے ظاہر ہوئیں ہیں آپ رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہ کےعلاوہ کسی بھی صاحِبِ وِلَایَت سے ظُہُوْر میں نہیں آئیں۔   (نزہۃ الخاطرالفاتر،عربی، ص۲۳)

          آپ رَحْمَۃُ اللّٰہ ِتَعَالٰی عَلَیْہ کی ذاتِ بابَرَکت تو کرامات و کمالات کا منبع ہے ہی ،صرف آپ کے نام مبارک کی یہ بَرَکت ہے کہ جہاں پُکارا جائے مُوْذِیْ جانوروں سے چُھٹکارا مل جاتا ہے ۔ چنانچہ

منقول ہے کہ  جو شخص شیر کے سامنے آۓ اور حُضُوْر غَوْثُ الاعظم عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ الْاَکْرَم کا نام لے شیر اُس پر حَمْلَہ آوَر نہیں ہوگا۔ اور جو شخص ایسی زمین میں مَوْجُود  ہو کہ جَہاں مَچھروں کی بَہُتَات ہو  تو وہاں حُضُوْر غَوْثِ اَعْظَمْ عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ الْاَکْرَم کا نام ِ نامی لے اور اِس کا ذِکْر کرے تو آپ رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہ کے نامِ نامی کی بَرَکَت سے وہ اِس آفَت سے مَحْفُوظ رہے گا۔  (نزہۃ الخاطرالفاتر، ص۲۵)آیئے آپ رَحْمَۃُ اللّٰہ ِتَعَالٰی عَلَیْہ کی مزید کرامات اور آپ کی  شان وعَظَمَت کا ذِکْر سُنتے ہیں۔ چنانچہ،