Book Name:Auliya-e-Kiraam Kay Pakeeza Ausaaf

صَلُّوْا عَلَی الْحَبِیْب!                                   صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

سنت کی فضیلت اوربیعت کے  مدنی  پھول

میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو!بیان کو اِختِتام کی طرف لاتے ہوئے سنّت کی فضیلت اور بیعت  کےمدنی پھول بَیان کرنے کی سَعادَت حاصِل کرتا ہوں ۔ شَہَنْشاہِ نُبُوَّت ، مُصْطَفٰے جانِ رحمت، صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا فرمانِ جنّت نشان ہے: جس نے میری سنّت سے مَحَبَّت کی اُس نے مجھ سے مَحَبَّت کی اور جس نے مجھ سے مَحَبَّت کی وہ جنّت میں میرے ساتھ ہو گا ۔([1])

ان کی سنَّت کا جو آئینہ دار ہے                              بس وُہی تَو جہاں میں سمجھدار ہے

(وسائلِ بخشش،ص۴۷۲)

آیئےبیعت ہونے کے بارے میں چند مدنی پھول سننے کی سعادت حاصل کرتے ہیں:٭دنیا میں کسی صالح کو اپنا امام بنالیناچاہئے،شَرِیْعَت میں تقلید کر کے اور  طریقت میں  بَیْعَت کرکے  تاکہ حَشْر اچھوں کے ساتھ ہو۔(آدابِ مرشدِ کامل،ص۱۳)٭ایمان کی حفاظت کا ایک ذریعہ کسی مرشِد کامل سے مُرید ہونا بھی ہے۔(آداب مرشد کامل،ص۱۲)٭شیخ جامع شرائط کے ہاتھ پر بیعت سنت متوارثہ مسلمین(یعنی مسلمانوں میں چلنے والا پُرانا طریقہ ) ہےاور اس میں بے شمار منافع و برکت دین و دنیا و آخرت ہیں۔(فتاوی رضویہ ۲۶/۵۷۵) ٭پیر اُمورِ آخِرت کے لئے بنایا جاتا ہے تاکہ اُس کی رہنمائی اور باطنی توجّہ کی بَرَکت سے مُرید اللہ  پاک و رسول صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم کی ناراضی  والے کاموں سے بچتے ہوئے رِضائے رَبُّ الانام کے مَدَنی کام کے مطابق اپنے شب و روز گزار سکیں۔(آدابِ مرشد کامل،ص۱۳)٭جوشخص کسی شیخ جامع


 

 



[1]    مشکاۃ الصابیح،کتاب الایمان،باب الاعتصام بالکتاب والسنۃ،۱/۹۷،حدیث:۱۷۵