Book Name:Dukhyari umat ki Khayr Khuwahi

گلی سے ان کی شیطاں دُم دبا کر بھاگ جاتا ہے                       ہے ایسا رُعب ایسا دبدبہ فاروقِ اعظم کا

شہادت اے خدا! عطّارؔ کو دیدے مدینے میں                     کرم فرما الٰہی! واسطہ فاروقِ اعظم کا

(وسائل بخشش مرمم،ص۵۲۶،۵۲۷)

صَلُّوْا عَلَی الْحَبِیْب!                                   صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

       سُبْحٰنَ اللہ عَزَّ  وَجَلَّ  ! اتنی بلند وبالا شان و شوکت کےباوجودحضرت سَیِّدُنافاروقِ اعظم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُپیارے آقا،محبوبِ خداصَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلِہٖ وَسَلَّمَ کی اُمّت کے ساتھ خیرخواہی اور حاجت روائی  فرمارہےہیں۔لہٰذا اگر ہمارا کوئی مسلمان بھائی  کسی تکلیف میں ہو یا کسی بھی معاملے میں اسے ہماری ضرورت ہواور ہم اس کی پریشانی (Distress)دُور کرنےکی قدرت بھی رکھتے ہوں تو ہمیں بھی حضرت سَیِّدُنافاروقِ اعظم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُکی سیرت پرعمل کرتے ہوئے اپنے مسلمان بھائی کی خیر خواہی  کرنی چاہیے ۔بعض اوقات ایسا بھی ہوتاہے کہ ہم خوداُس کی مددکرنے کی طاقت نہیں رکھتے، مگر کسی سے کہہ کراُس کی مددکرواسکتے ہیں توحسبِ موقع اِ س طرح بھی دُکھیاری اُمّت کی خیرخواہی و مددکرنی چاہئے۔

       حضرتِ سیدنا  فاروقِ اعظم رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ کی خیر خواہیِ اُمّت کے مزید واقعات بھی ہم سُنیں  گے لیکن اس سےپہلےآئیے!آپرَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُکامختصر تعارف سنئے ، چُنانچہ

مختصر  تعارف :

٭آپ کی  کُنْیَت’’ابُوحَفْص‘‘،لقَب’’فارُوقِ اَعظم‘‘اور نام  ’’عمر‘‘ہے۔٭آپ کےاِسلام قَبول کرنے سےمُسلمانوں کو بے حَدخُوشی ہوئی اوراُن کو بَہُت بڑا سہارا مل گیا،یہاں تک کہ حُضُوررحمتِ عالَم،نورِ مُجسّم صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلِہٖ وَسَلَّمَ نےمُسلمانوں کےساتھ مل کرحَرَم ِمُحْتَرم میں اِعْلانیہ نَماز اَدافرمائی۔ ٭آپ