Book Name:Ham Q Nahi Badltay

شکار ہوجاتا ہے۔(منہاج العابدین ،ص۸۱)لہٰذا ہمیں چاہئے کہ لمبی امیدوں سے چھٹکارا پانےکےلئےلمبی امیدوں کےنقصانات اورموت کویادکرنے کےفضائل پرنظررکھیں، اس کی برکت سے ہم اپنی اصلاح کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔اِنْ شَاۤءَ اللہ ،آئیے ملکر دعا کرتے ہیں ۔

مرے اَشک بہتے رہیں کاش ہر دم                                                 تِرے خوف سے یا خُدا یا الٰہی

مرے دل سے دنیا کی چاہت مٹا کر                                            کر اُلفت میں اپنی فنا یا الٰہی

(وسائل بخشش مرمم،ص۱۰۵)

صَلُّوْا عَلَی الْحَبِیْب!                                                                                      صَلَّی اللّٰہُ عَلٰی مُحَمّد

دوسرا سبب خود احتسابی کا نہ ہونا  

      پیارے پیارےاسلامی بھائیو!ہماری اصلاح میں رکاوٹ اور ہمارے نہ بدلنےکی  دوسری اہم ترین وجہ خوداحتسابی(یعنی اپنے اعمال کا جائزہ لینے کی سوچ) کانہ ہو نابھی ہے،کیونکہ ہم اپنےاعمال کااحتساب  نہیں کرتے،یادرکھئے!خوداحتسابی  کانہ ہوناانسان کواپنی آخرت سے غافل  کردیتاہے ،خود احتسابی کا نہ ہوناانسان کو نیک اعمال سے دُور کر دیتاہے ،جو انسان اپنا محاسبہ کرتاہے،اپنے اعمال کا جائزہ لیتا رہتاہے،وہ نیکیوں کا حریص بن جاتا ہےاورگناہوں سےہردم بچنےکی کوشش کرتا ہے،موت کا تصورہردم اس کی آنکھوں  میں رہتاہےاورخوفِ خُدا اس کےدل میں رچ بس جاتا ہے ، یہی وجہ تھی کہ ہمارے بزرگان ِدین روزانہ  اپنا محاسبہ کرتے،اپنے اعمال کا جائزہ لیتےاورخوف ِ خُدا سے لرزتےرہتےتھے ،چنانچہ