Book Name:Faizan-e-Safar-ul-Muzaffar

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ عَلٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

اَلصَّلٰوۃُ وَ السَّلَامُ عَلَیْكَ یَا رَسُولَ اللہ                                                                    وَعَلٰی اٰلِكَ وَ اَصْحٰبِكَ یَا حَبِیْبَ اللہ

اَلصَّلٰوۃُ وَ السَّلَامُ عَلَیْكَ یَا نَبِیَّ اللہ                                                                                      وَعَلٰی اٰلِكَ وَ اَصْحٰبِكَ یَا نُوْرَ اللہ

نَـوَیْتُ سُنَّتَ الاعْتِکَاف   (ترجَمہ:میں نے سنّتِ اعتکاف کی نیّت کی)

      پیارے پیارےاسلامی بھائیو!جب کبھی داخلِ مسجدہوں،یادآنےپر اِعْتِکافکی نِیَّت کرلیا کریں کہ جب تک مسجد میں رہیں گے اِعْتِکاف کا ثَواب مِلتا رہےگا ۔یادرکھئے !مسجد میں کھانے،پینے، سونےیاسَحَری،اِفطاری کرنے،یہاں تک کہ آبِ زَم زَم یادَم کیاہواپانی پینےکی بھی شَرعاً اِجازت نہیں،اَلبتَّہ اگراِعْتِکاف کی نِیَّت ہوگی تویہ سب چیزیں ضِمْناًجائزہوجائیں گی۔ اِعْتِکافکی نِیَّت بھی صِرف کھانے،پینےیاسونےکےلئےنہیں ہونی چاہئےبلکہ اِس کامقصداللہکریم کی رِضاہو۔” فتاویٰ شامی“میں ہے:اگرکوئی مسجدمیں کھانا،پینا،سوناچاہےتو اِعْتِکاف کی نِیَّت کرلے،کچھ دیرذِکْرُ اللہ کرے،پھر جو چاہےکرے(یعنی اب چاہے تو کھا  پی یا       سو سکتا ہے)

دُرُودِ پاک کی فضیلت

اُمّتیوں پر مہربان،محبوبِ رحمٰن،راحتِ دِل و جانصَلَّی اللّٰہُ عَلَیْہِ واٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا فرمانِ  عالیشانہے:بے شک اللہ  پاک نے ایک فرشتہ میری قبر پرمقرر فرمایا ہے، جسے تمام مخلوق کی آوازیں  سننے کی طاقت دی ہے،پس قیامت تک جوکوئی مجھ پر دُرودِ پاک پڑھتا ہے تو وہ مجھے اِس کا اوراس کے باپ کا نام پیش کرتا ہے،کہتا ہے:فُلاں بن فُلاں نے آپ پر اِس وقت دُرُودِ پاک پڑھا ہے۔(مسند بزار، مسندابن الحمیری عن عمار، ۴/ ۲۵۵، حدیث:۱۴۲۵)