Book Name:Dukhyari Ummat Ki Khairkhuwahi

ہر مبلغہ بیان کرنے سے پہلے کم از کم تین بار پڑھ لے

اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَ وَ الصَّلٰوۃُ وَالسَّلَامُ عَلٰی سَیِّدِ الْمُرْسَلِیْنَ ط

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

اَلصَّلٰوۃُ وَ السَّلَامُ عَلَیْكَ یَا رَسُولَ اللہ                                                                    وَعَلٰی اٰلِكَ وَ اَصْحٰبِكَ یَا حَبِیْبَ اللہ

اَلصَّلٰوۃُ وَ السَّلَامُ عَلَیْكَ یَا نَبِیَّ اللہ                                                                                       وَعَلٰی اٰلِكَ وَ اَصْحٰبِكَ یَا نُوْرَ اللہ

دُرُوْدِ پاک کی فضیلت

       حضورِاکرم صَلَّی اللّٰہُ  عَلَیْہِ واٰلِہٖ وَسَلَّمَ کا فرمان ِعالیشان ہے :

                             مَامِنْ عَبْدَيْنِ مُتَحَابَّيْنِ فِي اللهِ يَسْتَقْبِلُ اَحَدُهُما صَاحِبَهُ فَيُصَافِحُهُ ويُصَلِّيَانِ عَلَى النَّبِيِِّ صَلَّی اللّٰہُ عَلَیْہِ واٰلہٖ وَسَلَّمَ اِلَّا لَمْ يَفْتَرِقَا حَتّٰى تُغْفَر َذُنُوْبُهُمَامَا تَقَدَّمَ مِنْهُمَا وَمَا تَأَخَّرَ تْ

                             یعنیاللہپاککی خاطر آپس میں  مَحَبَّت رکھنے والے جب آپس میں ملیں اور ہاتھ ملائیں اورنبی(صَلَّی اللّٰہُ  عَلَیْہِ واٰلِہٖ وَسَلَّمَ  )پر دُرُودِ پاک بھیجیں  تو ان کے جُدا  ہونے سے  پہلے دونوں  کے اگلے پچھلے گناہ بخش دیئے جاتے ہیں۔  

(مُسْنَدُ اَبِیْ یَعْلٰی ، ۳ / ۹۵ ، حدیث : ۲۹۵۱)

صَلُّوْا عَلَی الْحَبِیْب!                                   صَلَّی اللّٰہُ  عَلٰی مُحَمَّد

پیاری  پیاری اسلامی بہنو!آئیے!اللہ پاک کی رضا پانے اورثواب کمانے کے لئے پہلے اَچّھی اَچّھی نیّتیں کر لیتیہیں۔ فَرمانِ مُصْطَفٰے صَلَّی اللّٰہُ عَلَیْہِ واٰلِہٖ وَسَلَّمَ ’’نِیَّۃُ الْمُؤمِنِ خَیْرٌ مِّنْ عَمَلِہٖ‘‘ مُسَلمان کی نِیَّت اُس کے عمل سے بہتر ہے۔ ([1])


 

 



[1]    معجم کبیر ، سہل بن سعد الساعدی   الخ ، ۶ / ۱۸۵ ، حدیث : ۵۹۴۲