Book Name:Akhbar kay baray main Sawal Jawab

(وسائلِ بخشش ص۹۹)

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!   صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

بدکاری کی خبر لگانا کیسا؟

سُوال : بدکاری کے ملزَمِین کی اخبار میں خبریں لگانے کے بارے میں آپ کیا کہتے ہیں ؟

جواب : ان خبروں کا موجودہ انداز عُموماً غیر مُحتاط اور گناہوں بھرا ہوتا ہے ۔ گندی خبروں کا بعض اخباروں میں باقاعِدہ سلسلہ چلایا جاتا ہے ، ملزَم اور ملزَمہ کی تصاویر شائع کی جاتیں اور خوب حیا سوزباتیں لکھی جاتی ہیں اور یہ یقینا ناجائز ہے۔اور اِس طرح بسا اوقات ملکِ پاکستان کے ’’  قانونِ مطبوعات وصَحافت ‘‘  کی بھی خلاف ورزی کی جاتی ہے۔ دفعہ 24کے تحت جن15 شِقّوں کا بیان ہے اُس کی شق نمبر  (3) اور  (7)  مُلاحظہ ہو:  (3)  تَشَدُّدیاجِنْس سے تعلُّق رکھنے والے جرائم کی ایسی رُودادجس سے غیرصحّت مندانہ تَجَسُّس یانَقْل کا خیال پیدا ہونے کا اِمکان ہو  (7) غیرشائِستہ ،فحش،دُشنام آمیز یاہتک آمیزمَوادکی اِشاعت۔

زِنا کا شَرْعی ثُبُوت

          یہ بات خوب ذِہْن نشین کر لیجئے کہ کسی کو زانی اور زانیہ ثابِت کرنا نہایت دشوار اَمْر ہے۔ اِس کے شَرعی ثُبُوت کی صورت یہ ہے کہ یاتو وہ خود اقرار کرے یاپھر چار ایسے عادِل گواہ چاہئیں جنہوں نے آنکھوں سے زِنا ہوتے دیکھا ہو۔ مگر اِتنی بات پر بھی ان پر ’’  حد ‘‘  جاری نہیں ہو سکتی جب تک قاضی مختِلف سُوالات کر کے ہر طرح سے اطمینان نہ کر لے۔ اَلغرض زِنا کے شَرـعی ثُبُوت میں کافی باریکیاں ہیں ،جوبِغیرشَرعی ثُبُوت کے کسی پاکدامن مسلمان کو زانی یا زانیہ کہے یا لکھے وہ سخت گنہگار اور عذابِ نار کا حقدار ہے۔

لوہے کے 80کوڑوں کی سزا

          اِس ضِمْن میں ایک دل ہلا دینے والی روایت سنئے اور خوفِ خدا وندی سے تھر تھرایئے!  چُنانچِہدعوتِ اسلامی کے اِشاعَتی اِدارے مکتبۃُ الْمدینہکی مطبوعہ 1182 صَفْحات پر مشتمل کتاب ،  ’’ بہارِ شریعت جلد2 ‘‘  صَفْحَہ394پر ہے: (حضرت) عبد الرَّزّاق  (رَحْمَۃُ اللہِ تَعَالٰی عَلَیْہِ)   (سیِّدُنا) عِکْرَمہ  (رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ)  سے روایت کرتے ہیں ، وہ کہتے ہیں : ایک عورت نے اپنی باندی کو زانِیہ کہا۔ عبدُاللہ بن عمر رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُمَانے فرمایا: تُو نے زِنا کرتے دیکھا ہے؟  اُس نے کہا: نہیں ۔ فرمایا: قسم ہے اُس کی جس کے قبضے میں میری جان ہے! قِیامت کے دن اِس کی وجہ سے لوہے کے اَسی ۸۰ کوڑے تجھے مارے جائیں گے۔  (مُصَنَّف عَبْد الرَّزّاق ج۹ ص۳۲۰ رقم۱۸۲۹۱)    (خصوصاً صَحافیوں سے مَدَنی التجا ہے : مکتبۃُ المدینہکی مطبوعہ بہارِ شریعت جلد 3 کے اندر شامل حصّہ 9 میں زِنا ،تہمت ،شراب نوشی وغیرہ کے فقہی احکامات مُلاحَظہ فرما لیجئے اِنْ شَآءَاللہ عَزَّ وَجَلَّ معلومات میں اضافہ ہو گا اور خوفِ خدا میں ترقی ہو گی) وَاللہُ اعلَمُ ورسولُہٗ اَعلَم عَزَّوَجَلَّ و صلَّی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم۔

دے خدا ایسی نظر جو خوبیاں دیکھا کرے

خامیاں دیکھے نہ بس اچّھائیاں دیکھا کرے

 صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!   صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

اشتِہارات کے بارے میں مَدَنی پھول

سُوال: اَخبارات عام طور پر اشتِہارات ہی کی آمَدَنی سے چلتے ہیں ،اِس ضِمْن میں کچھ مَدَنی پھول دے دیجئے۔

 



Total Pages: 24

Go To