Book Name:Naik Bannay aur Bananay kay Tariqay

ایک وقت میں دو جگہ جلوہ نما ئی

          پنجاب کے اسلامی بھائی کے بیان کا لُبّ لُباب ہے کہ ہمارا مدنی قافِلہ ایک گاؤں کی مسجِد میں پہنچا توانتظامیہ نے رات ٹھہرنے کا منع کرتے ہوئے کہا کہ اس مسجِد میں جنّات ہیں ،  اگرآپ اپنی جواب داری پر رُکتے ہیں توٹھیک ہے ۔ مدنی قافلہ کے شرکا میں سے میں اور ایک دوسرے اسلامی بھائی جاگ کر پہرا دینے لگے ، سب اسلامی بھائی سو رہے تھے اور ہم خوفزدہ مسجِد میں بیٹھے اِدھر اُدھر دیکھ رہے تھے کہ اچانک مسجِد کا دروازہ کھلا اور شیخِ طریقت امیراہلسنّت دامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعالِیَہ بیداری میں تشریف لے آئے ہم بے اختیار کھڑے ہوکر آگے بڑھے ،  آپ نے ہمیں شفقت سے سینے لگالیا اور فرمایا کہ کیوں گھبرا رہے ہو ؟  ہم نے عرض کی اس مسجِد میں جنّات  ہیں تو آپ مسکرا تے ہوئے فرمانے لگیجنّات  ہیں توکیوں گھبراتے ہو وہ دیکھو سامنے ! ہم نے جیسے ہی سامنے نظر کی تو امیر اہلسنّت دامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعالِیَہ کے بڑے شہزادے ابو اُسید عبید رضا عطاری المدنی مد ظلہ العالی کو تشریف فرماپا یا ، پھرا میرِاہلسنّت دامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعالِیَہ نے مسجِد کے دوسرے کو نے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے فرمایا کہ اُدھردیکھو تو وہاں چھوٹے شہزادے حاجی بلال رضا عطاری مد ظلہ العالی تشریف فرماتھے، پھر امیر اہلسنّت دامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعالِیَہ نے مزید مسجِد میں ایک طرف اشارہ کرکے فرمایا کہ وہاں دیکھو تو وہاں نگرانِ شوریٰ تشریف فرماتھے ۔ایسا لگتا تھا کہ یہ تمام مدنی قافلے والوں کی حفاظت کیلئے جلوہ فرماہیں ، ا میرِاہلسنّتدامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعالِیَہ کی یہ کرامت دیکھ کربے اختیا ر ہماری آنکھوں سے آنسو بہہ نکلے ، ا میرِاہلسنّتدامَتْ بَرَکاتُہُمُ الْعالِیَہ کچھ دیر تشریف فرما رہے پھر واپس تشریف لے گئے ۔ سُبحٰنَ اَللّٰہعَزَّ وَجَلَّ۔

          تمام اسلامی بھائی نیت فرمالیں کہ  اِنْ شَآءَ اللہ  عَزَّ وَجَلَّہم ہر ماہ اس پیارے پیارے مدنی انعام پرعمل کرنے کی نیت سے تین دن کے لئے مدنی قافلے میں ضرور سفر کریں گے ۔  اِنْ شَآءَ اللہ  عَزَّ وَجَلَّ سے دعا ہے کہ ہمیں دُنیا اور آخرت کی بھلائیوں کے حصول میں آسانی عطا فرمائے۔ ( دیئے گئے بیان کرنے کے طریقۂ کار کے ذریعے با آسانی 12یا26منٹ بلکہ

جتنا طویل بیان کرنا چاہیں کر سکتے ہیں ، صرف مدنی انعامات کے فضائل بڑھاتے جائیں اور جب اختتام کرنا ہو تو فکر مدینہ کا ذہن دے کر اس پر استقامت کے لئے وقت مقرر کرنے کا طریقہ بتا دیجئے اور آخر میں مدنی قافلے کی ترغیب و دعوت پر بیان ختم فرمادیجئے)

٭٭٭٭٭

کامل مسلمان کی تعریف

فرما نِ مصطفی صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ : اَلْمُسْلِمُ مَنْ سَلِمَ الْمُسْلِمُوْنَ مِنْ لِّسَانِہٖ وَیَدِہٖ۔ یعنی مسلمان وہ ہے کہ اس کے ہاتھ اور زَبان سے دوسرے مسلمان محفوظ رہیں ۔ ( صحیح البخاری،ج۱،ص۱۵،حدیث:۱۰)

باب4

   علاقائی د   ورہ برائے نیکی کی دعوت کی اہمیَّت

          اَلْحَمْدُ للّٰہعَزَّوَجَلَّ ! ہم دعوت اسلامی کے     مدنی ماحول سے وابستہ ہیں ۔

 یہ  اللہ   عَزَّوَجَلَّ کا بہت بڑا کر م ہے کہ اس نے ہمیں مدنی ماحول کی برکت سے نیکی کی دعوت کو عام کرنے کا جذبہ عطا فرمایااور امیرِ اہلسنتحضرت علامہ مولانا ابوبلال  محمد الیاس عطار قادری رضوی  دامَتْ بَرکاتُھُمُ العالیَۃ نے ہمیں اپنی زندگی کامدنی مقصد  ’’ مجھے اپنی اور ساری دنیا کے لوگوں کی اصلاح کی کوشش کرنی ہے۔ ‘‘ عطافرمایا۔

            اسی مدنی مقصد کے تحت ہمارے مدنی مرکز نے ہمیں مختلف مدنی کا م کرنے کا ذہن دیا ۔ مثلاًدرس دینا ،  بیان کرنا، مدنی قافلوں میں سفر کرنا، صدائے مدینہ لگانا، ہفتہ وار اجتماع میں شرکت کرنا وغیرہ۔جب بھی ہمارا مدنی مرکز ہمیں کوئی بھی مدنی کا م کرنے کا ذہن دیتا ہے تو اس مدنی کام میں طویل تجربہ کارفرما ہوتا ہے ۔ ہر مدنی کام اپنی الگ اہمیت رکھتا ہے لیکن ایک مدنی کام ایسا ہے کہ اگر وہ کماحقہ نافذ ہوجائے تو نہ صرف ہمارے علاقے میں مدنی کام کی بہاریں آجائیں گی، بلکہ مدنی قافلوں کی دھوم مچ جائے گی، مساجد میں نماز پڑھنے والوں کی تعداد بڑھ جائے۔وہ مدنی کام علاقائی دورہ برائے نیکی کی دعوت ہے۔

          میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو!  امیر اہلسنتدامَتْ بَرکاتُھُمُ العالیَۃ فرماتے ہیں  کہ  ’’ دعوت اسلامی کی بقا مدنی قافلوں میں ہے اور مدنی قافلوں کی بقا علاقائی دورہ برائے نیکی کی دعوت میں ہے ‘‘  بلکہ آپ نے یوں بھی ارشاد فرمایا:  ’’  علاقائی دورہ برائے نیکی کی دعوت مدنی قافلوں کو چلانے کی مشین ہے ‘‘ ۔

            یاد رکھئے!  ہم علاقائی دورہ برائے نیکی کی دعوت سے خاطر خواہ فوائد اسی وقت حاصل کر سکتے ہیں جب ہم مدنی مرکز کے دئیے گئے طریقۂ کار کے مطابق علاقائی دورہ برائے نیکی کی دعوت کا سلسلہ اپنے اپنے علاقوں میں شروع کردیں تو اِنْ شَآءَ اللہ  عَزَّ وَجَلَّ  ہماری مسجدوں سے مدنی قافلے روانہ ہونے شروع ہوجائیں ۔  

          اَلْحَمْدُ للّٰہعَزَّوَجَلَّ!  مدنی مرکز کے دئیے گئے طریقۂ کار پر عمل کی بے شماربرکتیں ہیں مثلاً ایک مرتبہ ایک اسلامی بھائی مدنی تربیت گاہ سے کسی علاقے میں علاقائی دورہ برائے نیکی کی دعوت کے لئے تشریف لے گئے۔ اس علاقے کے ذمہ دار اسلامی بھائی نے کہا کہ یہاں سے مدنی قافلے تیار نہیں ہوتے اورنہ ہی علاقائی دورہ کامیاب ہوتا ہے۔ مگرجب اسلامی بھائی نے وہاں جاکر مدنی مرکز کے طریقۂ کار کے مطابق علاقائی دورہ برائے نیکی کی دعوت کا سلسلہ شروع کیا تو اَلْحَمْدُ للّٰہعَزَّوَجَلَّ!  مدنی مرکز  کے دئیے گئے طریقۂ کار  کی برکت سے عصر سے مغرب تک کافی اسلامی بھائی ہاتھوں ہاتھ مسجد میں تشریف لائے۔نمازِ مغرب کے بعد بیان ہوا اور اَلْحَمْدُ للّٰہعَزَّوَجَلَّ ہاتھوں ہاتھ مدنی قافلہ تیار ہوا اور راہِ خدا میں سفرپرروانہ ہوگیا۔

            اَلْحَمْدُ للّٰہعَزَّوَجَلَّ! علاقائی دورہ برائے نیکی کی دعوت کی برکت سے تادمِ تحریر سینکڑوں غیر مسلم مسلمان ہوچکے ہیں ۔ حال ہی میں اسلامی بھائی ایک علاقے میں علاقائی دورہ برائے



Total Pages: 194

Go To