Book Name:Naik Bannay aur Bananay kay Tariqay

( 15)  مبلغ اپنے بیان میں امیرِ اہلسنت دامَتْ بَرکاتُھُمُ العالیَۃ کی سیرت کے واقعات بھی سنائے اور سامعین کو یہ بھی بتائے کہ امیرِ اہلسنت دامَتْ بَرکاتُھُمُ العالیَۃ ہمیں کس طرح سے سادگی اور عاجزی والی زندگی سنت کے مطابق گزارنے کی تاکید فرماتے ہیں۔

( 16)  بیان کا مواد شیخِ طریقت، امیرِ اہلسنت دامَتْ بَرکاتُھُمُ العالیَۃ کی تصانیف اور بیانات سے لیں ۔علما ئے اہلسنت کی کتب کا مطالعہ بھی فرمائیں ۔ مطالعہ کی بَرَکت  سے نہ صرف معلوما ت میں بے حد اضافہ ہوتا ہے بلکہ خود اعتمادی کے ساتھ ساتھ بیان کرنے میں آسانی بھی پیدا ہوتی ہے ۔ ان کتب سے مدد طلب کرنا مفید رہے گا۔ 

٭ ترجمہ کنزالایمان  ٭ تفسیر ِ خزائن العرفان  ٭ فیضان ِ سنت اور امیر اہلسنت دامَتْ بَرکاتُھُمُ العالیَۃکے دیگرکتب ورسائل    ٭ عجائب القرآن   ٭ غرائب القرآن   ٭ جامع کرامات ِ اولیاء  ٭ بزمِ اولیاء  ٭ شرح الصدور  ٭ بہارِ شریعت ٭فتاویٰ رضویہ  ٭  احیاء العلوم  ٭  لباب الاحیاء ٭ منہاج العابدین ٭خوفِ خدا(مطبوعہ مکتبۃ المدینہ)  ٭جنت میں لے جانے والے اعمال ٭جہنم میں لے جانے والے اعمال٭ جہنم کے خطرات٭  کفریہ کلمات کے بارے میں سوال جواب  ٭غیبت کی تباہ کاریاں ٭علم و حکمت کے ۱۲۵ مدنی پھول٭تذکرۂ امیر اہلسنّت  اور مکتبۃ المدینہ سے شائع ہونے والی دیگر کتب کا مطالعہ فرمائیں ۔

( 17)  مطالعہ کے لئے کسی ایسے وقت کا انتخاب فرمائیں کہ جس میں دیگر مصروفیات اور کسی کی مداخلت کا اندیشہ نہ ہوتاکہ بالکل یکسوئی کے ساتھ مطالعہ ہوسکے یاد رکھئے کہ جو مطالعہ یک سوئی کے ساتھ کیا جائے وہ طویل عرصہ تک ذہن میں محفوظ رہتا ہے ۔

( 18)  مطالعہ روزانہ ہونا چاہئے ۔ اس میں تاخیر ہرگز نہ ہو اس کے لئے لمباوقت ضروری نہیں چاہے آدھا گھنٹہ ہی کرے لیکن روزانہ کریں ۔

( 19)  لیٹ کر یا جھک کر مطالعہ نہ کریں ۔ اس طرح ذہن پر بوجھ زیادہ پڑتا ہے نیز نظر کمزور ہونے کا اندیشہ ہے اور کتاب کو تھوڑا اٹھا کر پڑھیں ۔

( 20)  دورانِ مطالعہ ایک ڈائری اپنے پاس رکھیں اب آپ جو بھی آیت ِ پاک یا حدیث ِ مبارکہ یا واقعہ یا کسی بزرگ کا قول مبارک پڑھیں اس پر غور کریں کہ اس کو کس عنوان کے تحت استعمال کیا جاسکتاہے ۔ اب جوبھی عنوان سمجھ میں آئے اسے ڈائری کے ایک صفحے کے اوپر لکھ لیں ۔ نیچے اس کتاب کا نام اور صفحہ نمبر درج کر لیں مثلاً آپ  ’’ جہنم میں لے جانے والے اعمال  ‘‘  کا مطالعہ فرماتے ہوئے یہ حدیث ِ پاک پڑھی کہ سرکار مدینہ صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  نے ارشاد فرمایا :  ’’  حسد سے بچو کہ حسد نیکیوں کو اس طرح کھا جاتا ہے جیسے آگ لکڑی کو کھا جاتی ہے۔ ‘‘    (سنن أبی داود،کتاب السنۃ، باب فی الحسد ،  الحدیث :۴۹۰۳،ج۴، ص۳۶۱)

            تو اس حدیثِ مبارکہ کو جس صفحے پر لکھا پایا کتاب کا نام لکھ کر آگے صفحہ نمبر لکھ لیجئے اس طرح ترکیب رکھیں گے تو مواد کو جمع کرنے میں آسانی رہے گی ۔

( 21)  ایسا نہ ہو کہ ہم اپنے بیان کے لئے بہترین اور منفرد مواد تیار کرنے کی جستجو میں اپنی اصلاح سے ہی غافل ہوجائیں کیونکہ ہمارا مدنی مقصد یہ ہے کہ

 ’’ مجھے اپنی اور ساری دنیا کے لوگوں کی اصلاح کی کوشش کرنی ہے ۔ ‘‘   اِنْ شَآءَ اللہ  عَزَّ وَجَلَّ

 ( 22) کسی بھی موضوع پر بیان ہو مدنی انعامات پر عمل کرنے اورروزانہ فکرمدینہ کرتے ہوئے اس کا رسالہ پُر کرکے ہرمدنی ماہ کے ابتدائی دس دن کے اندر اندر اپنے یہاں کے ذمہ دار کو جمع کروانے اور مدنی قافلے میں سفر کرنے کی دعوت ضرور شامل فرمائیں ۔

٭٭٭٭٭٭

فجر کے بیانات

بیان نمبر1:

فیضانِ ذ   ِکراللّٰہ

        شیخ ِطریقت، امیر ِاہلسنت، بانیء دعوتِ اسلامی حضرت علامہ مولانا ابو بلال محمد الیاس عطار قادری رضوی دَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ العَالِیَہ  ’’  رسائل ِعطاریہ ‘‘  (حصہ دوم) کے صَفْحَہ 12 پر حدیث ِپاک نقل فرماتے ہیں کہ تاجدارِ رسالت، شمعِ بزمِ ہدایت ،   صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَ اٰلِہٖ وَسَلَّم نے ارشاد فرمایا: ’’  جس نے مجھ پر ایک بار دُرود پاک پڑھا  اِنْ شَآءَ اللہ  عَزَّ وَجَلَّاس پر دس رحمتیں نازل فرماتا ہے، دس گناہ مٹاتا ہے اور دس درجات بلند فرماتا ہے۔ ‘‘  (سنن النسائی،کتاب السہو،باب الفضل فی الصلاۃ۔۔۔الخ،الحدیث:۱۲۹۴،ص۲۲۲)

صَلُّوْا عَلَی الْحَبِیْب                                                        صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

          میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو! آج ساری دنیا میں ایک عالمگیر بے چینی پائی جارہی ہے کوئی ملک ، شہر اور گاؤ ں بلکہ کوئی گھر ایسانہیں جہاں بدامنی اور بے چینی نہ ہو آج ہر شخص بے چینی کا شکار نظرآتا ہے آہ!  نادان انسان شراب ورباب کی محفلوں ،  سینما گھروں کی گیلریوں ، ڈرامہ گاہوں اور فُحش وعُریانی سے مُرَصَّع نا ئٹ کلبوں اور جنسی ورومانی ناولوں کے مطالعہ میں سکون کی تلاش میں سرگرداں ہے آخر سکون کہاں ملے گا؟  آئیے دیکھیں قرآن پاک نے اس بارے میں ہماری کیا  رہنمائی فرمائی ہے، ارشاد باری تعالیٰ ہے:

اَلَّذِیْنَ اٰمَنُوْا وَ تَطْمَىٕنُّ قُلُوْبُهُمْ بِذِكْرِ اللّٰهِؕ-اَلَا بِذِكْرِ اللّٰهِ تَطْمَىٕنُّ الْقُلُوْبُؕ(۲۸)      (پ۱۳،الرعد:۲۸)

ترجمۂ کنزالایمان:وہ جو ایمان لائے اور انکے دل اللّٰہ  کی یاد سے چین پاتے ہیں سن لو اللّٰہ  کی یاد ہی میں دلوں کا چین ہے

            اس آیت مبارکہ کے تحت صدر الافاضل سید محمد نعیم الدین مراد آبادی علیہ رَحمَۃُ اللّٰہِ الھَادِی تحریر کرتے ہیں :  ’’ اس کے رحمت و فضل اور اس کے احسان و کرم کو یاد کرکے بے قرار دلوں کو قرار و اطمینان حاصل ہوتا ہے۔    (خزائن العرفان)

 



Total Pages: 194

Go To