Book Name:Naik Bannay aur Bananay kay Tariqay

اَمَّا بَعْدُ فَاَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْمِ ط  بِسْمِ  اللہ  الرَّحْمٰنِ الرَّ حِیْم ط

 المد ینۃ العلمیۃ

            از:شیخِ طریقت، امیرِ اہلسنّت،بانی دعوتِ اسلامی حضرت علّامہ مولانا ابوبلال محمد الیاس عطاؔر قادری رضوی ضیائی دامت برکاتہم العالیہ

اَلْحَمْدُ لِلّٰہ عَلٰی اِحْسَا نِہٖ وَ بِفَضْلِ رَسُوْلِہٖصَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ

تبلیغِ قرآن و سنّت کی عالمگیر غیر سیاسی تحریک  ’’ دعوتِ اسلامی ‘‘ نیکی کی دعوت، احیاءے سنّت اور اشاعتِ علمِ شریعت کو دنیا بھر میں عام کرنے کا عزمِ مُصمّم رکھتی ہے، اِن تمام اُمور کو بحسنِ خوبی سر انجام دینے کے لئے متعدَّد مجالس کا قیام عمل میں لایا گیا ہے جن میں سے ایک مجلس ’’ المد ینۃ العلمیۃ ‘‘  بھی ہے جو دعوتِ اسلامی کے عُلماء و مُفتیانِ کرام کَثَّرَ ھُمُ اللّٰہُ تعالٰیپر مشتمل ہے ،  جس نے خالص علمی، تحقیقی او راشاعتی کام کا بیڑا اٹھایا ہے۔ اس کے مندرجہ ذیل چھ شعبے ہیں :

 {1} شعبۂ کُتُبِ اعلیٰ حضرت           {2} شعبۂ درسی کُتُب  

{3} شعبۂ اصلاحی کُتُب                 {4} شعبۂ تفتیشِ کُتُب

{5} شعبہ تخریج              {6} شعبۂ تراجمِ کتب

           ’’ ا لمد ینۃ العلمیۃ ‘‘ کی اوّلین ترجیح سرکارِ اعلیٰ حضرت اِمامِ اَہلسنّت،عظیم البَرَکت،عظیمُ المرتبت، پروانۂ شمعِ رِسالت، مُجَدِّدِ دین و مِلَّت، حامیٔ سنّت ،  ماحیٔ بِدعت، عالِمِ شَرِیْعَت، پیرِ طریقت،باعثِ خَیْر و بَرَکت، حضرتِ  علاّمہ مولیٰنا الحاج الحافِظ القاری شاہ امام اَحمد رَضا خان عَلَیْہِ رَحْمَۃُ الرَّحْمٰن کی گِراں مایہ تصانیف کو عصرِ حاضر کے تقاضوں کے مطابق حتَّی الْوَسْع سَہْل اُسلُوب میں پیش کرنا ہے ۔ تمام اسلامی بھائی اور اسلامی بہنیں اِس عِلمی ، تحقیقی اور اشاعتی مدنی کام میں ہر ممکن تعاون فرمائیں اورمجلس کی طرف سے شائع ہونے والی کُتُب کا خود بھی مطالَعہ فرمائیں اور دوسروں کو بھی اِس کی ترغیب دلائیں ۔

 اللّٰہ عَزَّ وَجَلَّ  ’’ دعوتِ اسلامی ‘‘  کی تمام مجالس بَشُمُول ’’ المد ینۃ العلمیۃ ‘‘ کو دن گیارہویں اور رات بارہویں ترقّی عطا فرمائے اور ہمارے ہر عملِ خیر کو زیورِ اخلاص سے آراستہ فرماکر دونو ں جہاں کی بھلائی کا سبب بنائے۔ہمیں زیرِ گنبدِ خضرا جلوۂ محبوبصَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  میں شہادت،جنّت البقیع میں مدفن اور جنّتُ الفردوس میں اپنے مدنی حبیبصَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  کاپڑوس نصیب فرمائے ۔اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم

 

                  

  رمضان المبارک ۱۴۲۵ھ       

ضرور پڑھئے

             اَلْحَمْدُ لِلّٰہ عَزَّ وَجَلَّ تبلیغِ قرآن و سنت کی عالمگیر غیر سیاسی تحریک دعوتِ اسلامی، جس کی بنیاد آج سے تقریباتیس سال قبل ذوالقعدۃ الحرام ۱۴۰۱ ھ؁ بمطابق ستمبر1981؁ء میں باب المدینہ کراچی میں شیخ طریقت، امیرِ اہلسنت حضرت علامہ مولانا محمد الیاس عطار قادری رضوی دامت برکاتہم العالیہ نے رکھی، میٹھے میٹھے مصطفی صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  کی عنایتوں ،  صحابہ کرام رضوان اللّٰہ تعالٰی علیہم کی برکتوں ،  اولیاءے عظام رحمۃ اللّٰہ تعالٰی علیہم کی نسبتوں ،  علماء و مشائخ اہلِ سنت دامت فیوضہم کی شفقتوں اورامیرِ اہلسنت دامت برکاتُہُمُ الْعَالِیَہ کی شب و روز کوششوں کے نتیجے میں آج  ’’ دعوت ِ اسلامی ‘‘  کا مدنی پیغام تادمِ تحریر دنیا کے کم وبیش150 ممالک میں پہنچ چکا ہے اور کامیابی کا سفر ابھی جاری ہے ۔

          امیرِ اہلسنت دامت برکاتہم العالیہ کی تربیت کی برکت سے تیار ہونے والے مبلغینِ دعوتِ اسلامی کے ذریعے دنیا کے مختلف ممالک میں  ’’    مدنی قافلوں  ‘‘  کا مدنی جال بچھایا جاچکا ہے،عاشقانِ رسول کے سنَّتوں کی تربیّت کے بے شمار مدنی قافِلے3 دن ، 12دن،30دن اور12 ماہ کے لئے ملک بہ ملک،شہر بہ شہراور قَریہبہ قَریہ سفر کرکے علمِ دین اور سنّتو ں کی بہاریں لُٹارہے اور نیکی کی دعوت کی دُھومیں مچارہے ہیں ۔ مُتَعَدَّد مقامات پر مدنی تربیّت گاہیں قائم ہیں جن میں دُورونزدیک سے اسلامی بھائی آکرقِیام کرتے،عاشقانِ رسول کی صحبت میں سنّتوں کی تربیَّت پاتے اور پھرقُرب وجوار میں جاکر  ’’ نیکی کی دعوت ‘‘  کے مدنی پھول مہکاتے ہیں ۔ نئے مُبَلِّغینکی تربیَّت کے لئے مختلف کورسز کا اہتمام کیا گیا ہے مثلاً 41 دن کا مدنی قافلہ کورس،63 دن کا تربیّتی کورس ، گونگے بہروں کے لئے30 دن کا تَربِیّتی کورس ، امامت کورس اور مُدرِّس کورس وغیرہم۔

پیارے اسلامی بھائیو! یقینا راہِ خدا میں سفر کرنے والے عاشقانِ رسول کے ہمراہ دعوتِ اسلامی کے  مدنی قافلوں میں سفر کرنا بہت بڑی سعادت ہے۔ ان مدنی قافلوں کی برکت سے پنج وقتہ نماز ونوافل کی پابندی کے ساتھ ساتھ پیارے آقا صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَکی سنتیں بھی سیکھنے کو ملتی ہیں اور علمِ دین کے لئے سفر کا ثواب الگ سے حاصل ہوتا ہے۔

             حضرتِ  ابودَرْدَاء      رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہُسے روایت  ہے کہ میں نے رسولُ اللّٰہ صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَکو فرماتے ہو ئے سناکہ  ’’ جو علم کی تلاش میں کسی راستے پر  چلتاہے تو اللّٰہ تعالٰی اس کے لئے جنت کا راستہ آسان فرما دیتا ہے اور بیشک فرشتے طالبُ العلم کے عمل سے خوش ہوکر اس کے لئے اپنے پر بچھا دیتے ہیں اور بے شک  زمین وآسمان میں رہنے والے یہاں



Total Pages: 194

Go To