Book Name:Naik Bannay aur Bananay kay Tariqay

{ زبان کا قفل مدینہ}  {26مدنی پھول}

 {27}  اگر ہم کما حقہ فضول باتوں سے بچنے میں کامیاب ہوجائیں ،  تو یہ  اللّٰہ عَزَّوَجَلّ کی طرف سے نعمت ہے۔  (مدنی مذاکرہ، ۹ ربیع الآخر ۱۴۳۶ھ ،  مدنی پھول نمبر۲۶) (آف ائیر)

 {28}  قفل مدینہ میں سنجیدہ ہوجائیں ،  یوم قفل مدینہ پوری زندگی منانا ہے۔(مدنی مذاکرہ،۷ربیع الاول ۱۴۳۶ھ ،  مدنی پھول نمبر۹)

 {29} اگر فضول باتوں کی عادت ختم ہوجائے تو امن قائم ہوجائے۔(مدنی مذاکرہ،۱۵ محرم الحرام ۱۴۳۶ھ ،  مدنی پھول نمبر۲۰) (آف ائیر)

 {30}  خاموش رہنے میں دنیا و آخرت کے فوائد ہیں ۔(مدنی مذاکرہ،۷ صفر المفظر ۱۴۳۶ھ)

{31} فضول باتوں سے دل سخت ہوجاتا ہے، دل کا سخت ہونا بہت بری بات ہے۔ ایسا شخص  اللّٰہ عَزَّوَجَلّ کی رحمت سے محروم ہوجاتا ہے۔ (مدنی مذاکرہ،۷ صفر المفظر ۱۴۳۶ھ)

 {32}  کاش!  ایسا ہوجائے کہ جب ہم بولنا چاہیں تو تھوڑا سا رُک جائیں ،  سوچیں پھر بولیں ۔  (مدنی مذاکرہ، ۲۸صفرالمفظر۱۴۳۶ھ)

 {33}  گناہوں بھری باتوں سے ہر وقت بچنا واجب ہے۔(مدنی مذاکرہ، ۱ محرم الحرام ۱۴۳۶ھ ،  مدنی پھول۱۳)

 {34}  تمام اسلامی بھائی یوم قفل مدینہ منائیں ۔(مدنی مذاکرہ، ۴ذوالقعدۃالحرام ۱۴۳۵ھ ،  مدنی پھول نمبر ۳۳)

 {35}  فضول بات کی تعریف یہ ہے کہ ایسی بات جس میں نہ دین کا فائدہ ہو نہ دنیا کا۔  (مدنی مذاکرہ، ۴ذوالقعدۃالحرام ۱۴۳۵ھ ،  مدنی پھول نمبر ۲۱)

 {36}   اللّٰہ عَزَّوَجَلّ ہمیں ہر عضو کا قفل مدینہ نصیب فرمائے۔ (مدنی مذاکرہ، ۱۳ شوال المکرم ۱۴۳۵ھ ،  مدنی پھول نمبر ۱۷)

 {37}  کاش زبان پر حقیقی قفل مدینہ لگ جائے۔(مدنی مذاکرہ، ۳۰ شوال المکرم ۱۴۳۵ھ ،  مدنی پھول نمبر ۱۱)

 {38}  ہم نے گناہوں بھری باتوں سے بچانے کے لئے قفل مدینہ کا سلسلہ شروع کیا ہے۔(مدنی مذاکرہ،۲۰ شوال المکرم ۱۴۳۵ھ ،  مدنی پھول نمبر۱۴)

 {39} زبان،آنکھ کا قفلِ مدینہ لگانے والے اسلامی بھائی مسکرانے کی عادت بنائیں تاکہ لوگ آپ کے قریب آئیں ۔   ( مدنی مذاکرہ،یکم جمادی الاولیٰ ۱۴۳۶ھ ، مدنی پھول۵)

 {40} اپنی گفتگوپر غور وفکرکیا کریں کہ میں نے کیا اور کیوں بولا؟ ( مدنی مذاکرہ،۱۱جمادی الاولیٰ ۱۴۳۶ھ ، مدنی پھول۲) (آف ائیر)

  {41}  اللّٰہ عَزَّوَجَلّ کی رحمت سے قفل مدینہ لگانے والے طلباء پڑھتے بھی ہیں اور مدنی کام بھی کرتے ہیں ۔ ( مدنی مذاکرہ، ۱۳جمادی الاولیٰ ۱۴۳۶ھ ، مدنی پھول۱)

 {42} بہترین گفتگو وہ ہے جومختصراور پُردلیل ہو۔( مدنی مذاکرہ،۶رجب المرجب ۱۴۳۶ھ ، مدنی پھول۴)

 {43} لکھ کر گفتگو کرنے کے لیے قفل مدینہ پیڈ اور قلم رکھنے کی حاجت ہوتی ہے، اس لیے اسلامی بھائیوں اور اسلامی بہنوں کو چاہئے کہ اپنے کْرتے میں جیب بھی رکھا کریں ۔  ( مدنی مذاکرہ،۵شعبان المعظم ۱۴۳۶ھ ، مدنی پھول۵)

 {44} اللّٰہ تعالٰی ہمیں ذکر کرنے والی زبان اور فکر کرنے والی خاموشی عطا فرمائے۔( مدنی مذاکرہ،۱۰شوال المکرم ۱۴۳۶ھ ، مدنی پھول۱۱)

95% {45} گناہ زبان کے غلط استعمال سے ہوتے ہیں ۔( مدنی مذاکرہ،۲۷رمضان المبارک ۱۴۳۶ھ ، مدنی پھول۱)

 {46}  غمِ رمضان باقی رکھنا چاہتے ہیں تو فضول نہ بولئے۔( مدنی مذاکرہ،۲۲رمضان المبارک ۱۴۳۶ھ ، مدنی پھول۹)

 {47}  خاموش طبیعت کی اپنی ہیبت ہوتی ہے، رسالہ  ’’ خاموش شہزادہ ‘‘ کا مطالعہ فرمائیں ۔ (مدنی مذاکرہ ، ۱۳ شوال المکرم ۱۴۳۵ھ، مدنی پھول نمبر ۱۴)

 {48}  اللّٰہ کرے ہم بولنے سے پہلے تولنے کی عادت بنائیں ۔(مدنی مذاکرہ، ۲۸شوال المکرم۱۴۳۵ھ،مدنی پھول نمبر۱۶)

 {49}  تمام مسلمان فضول باتوں اورگناہوں سے بچیں تو عالم اسلام میں امن آجائے۔ (مدنی مذاکرہ، ۱محرم ۱۴۳۵ھ،مدنی پھول نمبر ۱۴)

 {50} جو کم بولتا ہے ،  اسے مطالعہ کا وقت زیادہ ملتا ہے۔ (مدنی مذاکرہ، یکم ربیع الآخر ۱۴۳۶ھ ،  مدنی پھول نمبر۱۴)

 {51} مسجد میں بھی زبان کا قفلِ مدینہ نہیں لگائیں گے تو کہاں لگائیں گے۔ (مدنی مذاکرہ، ۱۱ ربیع الاول ۱۴۳۶ھ ،  مدنی پھول نمبر۸)

 {52} زبان کا قفل مدینہ دعوت اسلامی کی اصطلاح ضرور ہے مگر خاموش رہنے کی تلقین تواحادیث مبارکہ میں بھی موجود ہے۔       (مدنی مذاکرہ، ۱رمضان ۱۴۳۷ ھ)

 {آنکھوں کا قفل مدینہ}  {5مدنی پھول}

 {53} نگائیں جھکا کر بات کرنے کی عادت اپنے اوپر نافذ کرلیں اِنْ شَاءَ اللّٰہ عَزَّوَجَلّلطف آئے گا۔   (مدنی مذاکرہ،۱۵ محرم الحرام ۱۴۳۶ھ ،  مدنی پھول نمبر۲۱) (آف ائیر)

 {54} بدنگائی اور فضول نگائی سے بچنے کے لئے درس و بیان کرتے ہوئے نگائے نیچی رکھنے کی مشق کریں ۔یاد رکھیں !  قیامت کے روز فضول نظری کا بھی حساب ہے۔ (مدنی مذاکرہ، ۹ شوال المکرم ۱۴۳۵ھ ،  مدنی پھول نمبر ۷)

{55}  نگاہوں کی حفاظت کے لئے کوشش تیز تر کردیں ۔ (مدنی مذاکرہ، ۱۸ذوالقعدۃالحرام

Total Pages: 194

Go To