Book Name:Naik Bannay aur Bananay kay Tariqay

(یہ نِیّتیں اُسی صورت میں مُفید ہوں گی جبکہ بھوک سے کم کھائے، خوب ڈٹ کر کھانے سے اُلٹا عبادت میں سُستی پیدا ہوتی، گناہوں کی طرف رُجحان بڑھتا اور پیٹ کی خرابیاں جَنَم لیتی ہیں ) (11) زمین پر (12)دستر خوان بچھانے کی سنّت ادا کرکے (13) سنّت کے مطابِق بیٹھ کر (14)کھانے سے قبل بِسْم ِاللّٰہ اور (15)دیگردُعائیں پڑھ کر (16) تین انگلیوں سے (17)چھوٹے چھوٹے نوالے بناکر (18)اچھی طرح چبا کر کھاؤں گا(19) ہر دو ایک لقمہ پر یَاوَاجِدُپڑھوں گا (20)جو دا نہ وغیرہ گر گیا اٹھا کر کھالوں گا(21)روٹی کا ہر نوالہ سالن کے برتن کے اوپر کرکے توڑوں گا تاکہ روٹی کے ذرّات برتن ہی میں گریں  (22) ہڈّی اور گرم مصالحہ اچھی طرح صاف کرنے اور چاٹنے کے بعد پھینکوں گا (23)بھوک سے کم کھاؤں گا (24)آخِرمیں سنّت کی ادائیگی کی نیّت سے برتن اور(25)تین بار انگلیاں چاٹوں گا (26)کھانے کے برتن دھوکر پی کر ایک غلام آزاد کرنے کے ثواب کا حقدار بنوں گا(احیا ء العلوم، ج۲،ص۷) (27)جب تک دستر خوان نہ اُٹھالیا جائے اُس وقت تک بِلا ضرورت نہیں اُٹھوں گا (28)کھانے کے بعد مسنون دعائیں پڑھوں گا (29)خِلال کروں گا۔

مل کر کھانے کی مزید نیّتیں

(30)دسترخوان پر اگر کوئی عالم یا بزرگ موجود ہوئے تو اُن سے پہلے کھانا شروع نہیں کروں گا (31)مسلمانوں کے قرب کی بَرَکتیں حاصِل کروں گا (32)ان کو بوٹی، کدّوشریف،کُھرچن اور پانی وغیرہ پیش کرکے اُن کا دل خوش کروں گا (33) اُن کے سامنے مسکراکر صدقہ کا ثواب کماؤں گا (34)کھانے کی نیّتیں اور (35)سنتیں بتاؤں گا (36)موقع ملا تو کھانے سے قبل اور (37) بعد کی دعائیں پڑھاؤں گا (38)غذاکا عمدہ حصّہ مَثَلاً بوٹی وغیرہ حرص سے بچتے ہوئے دوسروں کی خاطر ایثار کروں گا (39)ان کو خلال کا تحفہ پیش کروں گا (40) کھانے کے ہر ایک دولقمہ پر ہو سکا تو اس نیّت کے ساتھ بلند آواز سے     یَاوَاجِدُ    کہوں گا کہ دوسروں کو بھی یاد آجائے۔اللّٰہ تعالٰی ہمیں سنت کے مطابق کھانا کھانے کی توفیق عطا فرمائے۔اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم

پانی پینے کی سنتیں اورآداب

          میٹھے میٹھے اسلامی بھائیو!  پانی بیٹھ کر ،  اُجالے میں دیکھ کر ،  سیدھے ہاتھ سے بِسْمِ اللّٰہ پڑھ کر اس طرح پئیں کہ ہر مرتبہ گلاس کو منہ سے ہٹا کر سانس لیں ،  پہلی اور دوسری بار ایک ایک گھونٹ پئیں اور تیسری سانس میں جتنا چاہیں پئیں ۔

             حضرت سیدناابن عباس   رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنھْما سے روایت ہے کہ نور کے پیکر، تمام نبیوں کے سروَر، دو جہاں کے تاجْوَر، سلطانِ بَحرو بَرصَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  نے فرمایا: ’’ اونٹ کی طرح ایک ہی گھونٹ میں نہ پی جایا کرو بلکہ دو یا تین بار پیا کرو اورجب پینے لگو تو بِسْمِ اللّٰہپڑھا کرو اورجب پی چکو تواَلْحَمْدُ لِلّٰہ کہا کرو۔ ‘‘  (جامع ترمذی،کتاب الاشربۃ،باب ماجاء فی التنفس فی الانائ،الحدیث: ۱۸۹۲، ج۳، ص۳۵۲)

            حضرت سیدناانس   رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہُ سے روایت ہے کہ سرکارِ مدینہ ،  راحت ِ قلب وسینہصَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ  پینے میں تین بار سانس لیتے تھے اور فرماتے تھے : ’’ اس طرح پینے میں زیادہ سیرابی ہوتی ہے اور صحت کے لئے مفید وخوش گوار ہے۔(صحیح مسلم،کتاب الاشربۃ،باب کراھۃ التنفس۔۔۔الخ،حدیث: ۱۲۳۔(۲۰۲۸ص۱۱۲۰)

             حضرت سیدناابن عباس   رَضِیَ اللّٰہُ تَعَالٰی عَنْھما سے روایت ہے کہ اللہ   عَزَّوَجَلَّ کے پیارے محبوب ، دانائے غیوب،منزہٌ عن العیوب صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے برتن میں سانس لینے اور پھونکنے سے منع فرمایاہے۔ (سنن ابی داود،کتاب الاشربۃ ، باب فی النفخ فی الشراب،الحدیث:۳۷۲۸،ج۳،ص۴۷۵)

            حضرت سیدناانس   رَضِیَ  اللہ  تَعَالٰی عَنْہُ سے روایت ہے کہ مدینے کے تاجدار صَلَّی  اللہ  تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے کھڑے ہوکر پانی پینے سے منع فرمایاہے۔ (صحیح مسلم،کتاب الاشربۃ،باب کراھۃ التنفس۔۔۔الخ، ص۱۱۱۹، حدیث:۲۰۲۴)

پانی پینے کی  ’’ 15 ‘‘ نیتیں

(از شیخِ طریقت امیرِ اہلِسنّت بانی ٔدعوت اسلامی حضرت علامہ مولانا محمد الیاس عطار قادری رضوی مدظلہ العالی)

(1)عبادت(2)تِلاوت(3)والدین کی خدمت (4) تحصیلِ علمِ دین

 (5) سنّتوں کی تربیّت کی خاطِر مدنی قافلے میں سفر(6) عَلاقائی دورہ برائے نیکی کی دعوت میں شرکت(7)اُمورِ آخِرت اور(8)حسبِ ضَرورت کسبِ حلال کیلئے بھاگ دوڑ پر قوّت حاصِل کروں گا۔

             یہ نیّتیں اُسی وقت مُفید ہوں گی جب کہ فریزر یا برف کاخوب ٹھنڈا پانی نہ ہو کہ ایسا پانی مزید بیماریاں پیدا کرتا ہے۔ (9)بیٹھ کر (10بِسْمِ اللّٰہپڑھ کر (11)اُجالے میں دیکھ کر (

Total Pages: 194

Go To