Book Name:Naik Bannay aur Bananay kay Tariqay

قافلے کی باآسانی روانگی ممکن ہوسکے۔

(۳)روانگی سے قبل جو تربیت ملے اس کے مدنی پھول اسلامی بھائی اپنی ڈائری میں ضرور تاً لکھ لیں ۔

(۴)مدنی قافلے میں جدول کے مطابق سفر ہو ایک مدنی قافلے میں کم از کم 7اسلامی بھائی اور زیادہ سے زیادہ 12اسلامی بھائی ہوں ۔

 (۵)امیرقافلہ کے پاس سنّت بکس ،  چٹائی ،  پیٹ پر باندھنے کا پتھر، مٹی کے برتن، سنت کے مطابق 3انگلیوں سے کھانے کی عادت بنانے کیلئے ربڑ بینڈ ،  اذان و اقامت کے اعلانات کے کارڈ موجود ہونے چاہئیں ۔

(۶)امیر قافلہ کے پاس مدنی قافلہ پیڈ ،  مدنی قافلو ں کی نیت کا کارڈ ،  سامانِ مدنی انعامات اور خصوصی طور پر عطاری پیڈ ضرور ہونا چاہئے۔

(۷)مدنی قافلے میں امیر اہلسنت شیخ طریقت دَامَتْ بَرَکَاتُہُمُ الْعَالِیَہ کے رسائل ،  بیانات اور مدنی مذاکروں کی کیسٹیں تحفے میں پیش کرنے کی ترکیب بنائیں ۔

(۸)تربیت کے بعد امیرِ قافلہ سب اسلامی بھائیوں کو پہلے اپنے بارے میں بتائے پھر ان کا تعارف حاصل کرے،اس طرح وہ سب اسلامی بھائیوں کے نام سے واقف ہوجائے گا اور شرکا بھی ایک دوسرے کے نام جان لیں گے۔

(۹)امیرقافلہ اپنے اورشرکا کے نام وپتاوغیرہ فارم پرلکھ کرتربیت گاہ یامدنی قافلہ ذمہ دارکوجمع کروادے اورکارکردگی فارم میں بھی درج کرلے۔

(۱۰)پھر امیر قافلہ اسلامی بھائیوں کوان موضوعات پر سنتیں اور آداب بتائے:

            ٭سفر کی سنتیں اورآداب٭ بازار میں جانے کے آداب٭احترامِ  مسجد۔ نیزنئے اسلامی بھائیوں کو ترغیب دلانے کا طریقہ وغیرہ سمجھائے۔

(۱۱)امیرِ قافلہ روانگی سے قبل ہی مناسب اخراجات جمع کرکے لکھ لے تاکہ قافلہ ختم ہونے پر باآسانی حساب ہوسکے۔

(۱۲)ہر ایک سے یکساں رقم جمع کرائے اگر یہ ممکن نہ ہو تو جس کے پاس کم رقم ہو کوئی اسلامی بھائی اُس کی کمی پوری کر دے اگر یہ نہ ہو سکے توامیرِ قافِلہ فَقَط مُبہَم(یعنی غیر واضح)سا اعلان نہ کرے، بلکہ سب سے فرداً فرداً صَراحَۃً(یعنی ایک ایک سے صاف لفظوں میں ) اِجازت لے۔ہاں کم رقم دینے والے کی نشاندہی کر کے اُس کو شرمندہ نہ کیا جائے ۔ مَثَلاً امیرِ قافِلہ ایک ایک سے کہے: مَثَلاً ہم نے سب سے فی کس 92 روپے لئے ہیں مگر ایک اسلامی بھائی ایسے ہیں جنہوں نے 63 روپے دیئے ہیں ، کیا آپ کی طرف سے اجازت ہے کہ وہ بھی کھانے پینے وغیرہ مُعاملات میں برابر کے شریک رہیں ؟  (جو جو اجازت دیں گے صِر ف ان ہی کی طرف سےاِجازت مانی جائے گی۔بِالفرض کسی نے اجازت نہ دی تو اُس کا حساب الگ رکھنا ضَروری ہے)

(۱۳)چولہا، دستر خوان و برتن وغیرہ سامان کودیکھ لے جس چیزکی کمی ہواسے شامل کرلے ۔

(۱۴)فیضانِ سنت، رسائل اور ضروری اسلامی کتابیں اور اگر ضرورت ہو تو مصالحہ جات وغیرہ بھی ساتھ لے جائیں ۔

(۱۵)روانگی سے قبل تمام اسلامی بھائی دورکعت نماز سفر ادا کریں بشرطیکہ مکروہ وقت نہ ہو۔

(۱۶) پھر دعا کرکے روانہ ہوں ،  یہ دعا امیر قافلہ کرائے۔

(۱۷)امیر قافلہ ہر دو اسلامی بھائیوں کو آپس میں رفیق بنادے۔

(۱۸)رفیق جان پہچان والے یا دوستی والے نہ ہوں بلکہ ایک نئے اور ایک پرانے کو رفیق بنایا جائے۔

(۱۹)جس سواری میں سفر کرنا ہے مثلاً ٹرین یا بس اس کی معلومات پہلے سے لے لیں اور وقت وغیرہ بھی معلوم کرلیں اور پھر جس پر آسانی ہو اس سواری پر سفر فرمائیں ۔

دوران سفرمدنی پھول:

(۲۰)اب ہر اسلامی بھائی اپنا اپنا سامان خود اٹھائیں اور اپنے اپنے رفیق کے ساتھ چلیں ۔ منتشر ہوکر چلنے کی بجائے دو دو کی قطار میں چلیں ،  تسبیح وغیرہ پر درود شریف پڑھتے رہیں یا آپس میں صرف اور صرف سنتوں کی خدمت ،  اپنی اصلاح اور ساری دنیا کے لوگوں کی اصلاح کی کوشش کرنے کا ذہن بنائیں ۔

(۲۱)اسی طرح سواری پر امیر قافلہ کی اجازت سے سوارہوں ۔

(۲۲)سواری پر ہمیشہ صبر وتحمل سے سوار ہوں ،  دھکم پیل سے گریز کریں ۔

(۲۳)امیر قافلہ سب کوسوار کرنے کے بعد سوار ہو۔جب سب کو نشست مل جائے تو آخر میں خود بیٹھے ورنہ کھڑا رہے یا نیچے بیٹھ جائے۔

(۲۴)امیر قافلہ خود دعا پڑھائے یا شرکاء میں سے کسی کوپڑھانے کی اجازت دے۔

(۲۵) بے وقوفوں کی طرح بس میں شور نہ مچائیں اور نہ بس کی دیواریں بجائیں ۔

 (۲۶)جہاں کہیں ٹھہریں تو ایک ساتھ ٹھہریں منتشر ہو کر نہ ٹھہریں ۔

(۲۷)رفیق سفر تمام سفر اکٹھا کریں فضول گوئی سے مکمل اجتناب کریں بلکہ سنتیں اور دعائیں یاد کروائیں ۔

(۲۸) اگر سفر میں تھکاوٹ یا غنودگی طاری ہو تو گفتگو کے بجائے آرام کریں ۔

(۲۹)الگ الگ بیٹھیں ہوں تو برابر میں بیٹھنے والے سے حسن اخلاق کے ساتھ بات چیت شروع کریں ،   ’’ دعوتِ اسلامی ‘‘  کا تعارف کرانے کے بعد مدنی قافلے کی دعوت پیش کریں ۔

(۳۰) اگر کوئی سوال یا تنقید کرے تو خاموش رہیں مناسب خیال فرمائیں تو امیر قافلہ سے ملاقات کرادیں ۔

(۳۱) تمام اسلامی بھائی اپنے سامان کی خود حفاظت کریں اور خود اٹھائیں ۔

 



Total Pages: 194

Go To