Book Name:163 Madani Phool

سینہ تری سنّت کا مدینہ بنے آقا

جنت میں پڑوسی مجھے تم اپنا بنانا

صَلُّوا عَلَی الْحَبِیْب!      صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد

’’مسواک کرنا سنت مبارکہ ہے ‘‘ کے بیس حُرُوف کی

نسبت سے مسواک کے 20 مَدَنی پھول

       پہلےدو فرامینِمصطَفٰے صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم ملاحظہ ہوں : خدو رَکعت مِسواک کر کے پڑھنا بغیرمِسواک کی 70 رَکعتوں سے اَفضل ہے(اَلتَّرغِیب وَالتَّرہِیب  ج۱ ص۱۰۲ حدیث۱۸)خمِسواک کا اِستعمال اپنے لئے لازِم کر لو کیونکہ اِس میں منہ کی صفائی اور رب تعالیٰ کی رِضا کا سبب ہے (مُسندِ اِمام احمد بن حنبل ج۲ ص۴۳۸حدیث ۵۸۶۹)خ دعوتِ اسلامی کے اِشاعتی ادارے مکتبۃُ المدینہ کی مطبوعہ  بہارِ شریعت  جلد اوّل صَفْحَہ 288پرصدرُ الشَّریعہ ،بدرُ الطَّریقہ حضرتِ علّامہ مولانامفتی محمد امجد علی اعظمی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ القَوِیکھتے ہیں ،مَشایخ کِرا م فرماتے ہیں : جو شخص مِسواک کا عادی ہو مرتے وَقت اُسیکلمہ پڑھنا نصیب ہوگا  اور جو اَفیون کھاتا ہو مرتے وَقت اسے کلمہ نصیب نہ ہوگاخحضرتِ سیِّدُنا ابنِ عبّاس رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْھما سے روایت ہے کہ مِسواک میں دس خوبیاں ہیں :منہ صاف کرتی ، مَسُوڑھے کو مضبوط بناتی ہے، بینائی بڑھاتی ، بلغم دُور کرتی ہے ، منہ کی بدبو ختم کرتی ، سنّت کے مُوافِق ہے ،فرشتے خوش ہوتے ہیں ، رب راضی ہوتا ہے،

 



Total Pages: 40

Go To