Book Name:163 Madani Phool

اور رنگے ہوئے کپڑے پہننے کا نام نہیں بلکہ حُضورِ اقدس صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ کی پوری پَیروی کرنے اور خواہِشاتِ نفس کو مٹانے کا نام ہے (بہارِ شریعت ج۳ص۵۸۷)خ  عورت کا سر مُنڈوانا حرام ہے( خلاصہ ازفتاوٰی رضویہ ج۲۲ ص۶۶۴) خ عورت کو سر کے بال کٹوانے جیسا کہ اِس زمانے میں نصرانی عورتوں نے کٹوانے شروع کردیے ناجائز و گناہ ہے اور اس پر لعنت آئی۔ شوہر نے ایسا کرنے کو کہا جب بھی یہی حکم ہے کہ عور ت ایسا کرنے میں گنہگار ہوگی کیونکہ شریعت کی نافرمانی کرنے میں کسی (یعنی ماں باپ یا شوہر وغیرہ )کاکہنا نہیں مانا جائے گا۔ (بہارِ شریعت ج۳ص۵۸۸ )چھوٹی بچیوں کے بال بھی مردانہ طرز پر نہ کٹوایئے، بچپن ہی سے ان کو زنانہ یعنی لمبے بال رکھنے کا ذہن دیجئےخ بعض لوگ سیدھی یا اُلٹی جانب مانگ نکالتے ہیں یہ سنتکے خلاف ہے خ  سنت  یہ ہے کہ اگر سر پربال ہوں تو بیچ میں مانگ نکالی جائے (ایضاً)خ مرد کو اختیار ہے کہ سر کے بال منڈائے یا بڑھائے اور مانگ نکالے  (رَدُّالْمُحتار ج۹ص۶۷۲)خ حضور اقدس صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ سے دونوں چیزیں ثابت ہیں۔ اگرچہ منڈانا صرف اِحرام سے باہَر ہونے کے وَقت ثابت ہے۔ دیگر اوقات میں مونڈانا ثابت نہیں (بہارِ شریعت ج۳ص۵۸۶)خآج کل قینچی یا مشین کے ذَرِیعے بالوں کو مخصوص طرز پر کاٹ کر کہیں بڑے تو کہیں چھوٹے کر دیئے جاتے ہیں ، ایسے بال رکھنا سنَّت نہیں خ فرمانِ مصطَفٰے صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّمَ : ’’جس کے بال ہوں وہ ان کا اِکرام کرے۔‘‘  ( ابوداوٗد ج ۴ ص ۱۰۳حدیث ۴۱۶۳)یعنی ان کو دھوئے، تیل لگائے اور

 

 



Total Pages: 40

Go To