Book Name:163 Madani Phool

’’شانِ امامِ اعظم ابوحنیفہ ‘‘  کے اُنیس حُرُوف کی نسبت

سے تیل ڈالنے اور کنگھی کر نے کے19مَدَنی پھول

         خحضرت سیِّدُنا انس رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہ فرماتے ہیں کہ اللہ عَزَّ وَجَلَّ کیمَحبوب ، دانائے غُیُوب، مُنَزَّہٌ عَنِ الْعُیُوب صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم سرِ اقدس میں اکثر تیل لگاتے اور داڑھی مبارَک میں کنگھی کرتے تھے اور اکثر سرِ مبارَک پر کپڑا (یعنی سر بند شریف ) رکھتے تھے یہاں تک کہ وہ کپڑا تیل سے تر ہوجاتا تھا (اَ لشَّمائِلُ ا لْمُحَمَّدِیَّۃ لِلتِّرمِذیص۴۰ حدیث۳۲)معلوم ہوا’’سر بند ‘‘ کا استعمال سنّت ہے ،اسلامی بھائیوں کو چاہئے کہ جب بھی سر میں تیل ڈالیں ،ایک چھوٹا سا کپڑاسر پر باندھ لیا کریں ،اِس طر اور اِنْ شَآءَاللہ عَزَّ  وَجَلََّ ٹوپی عِمامہ شریف تیل کی آلُودَگی سے کافی حد تک محفوظ رہیں گے۔ اَلْحَمْدُلِلّٰہ عَزَّ وَجَلَّ سگِ مدینہ عُفِیَ عَنہُ  کا برسہا برس سے بہ نیّتِ سنّت ’’سر بند ‘‘ استِعمال کرنے کا معمول ہے خفرمانِ مصطَفٰے صَلَّی اللہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلِہٖ وَسَلَّم:’’ جس کے بال ہوں وہ ان کا احترام  کرے ‘‘(ابوداوٗد ج ۴ ص ۱۰۳حدیث۴۱۶۳)یعنی انہیں دھوئے ، تیل لگائے اور کنگھی کر ے  (اَشِعَّۃُ اللَّمعات ج۳ ص ۶۱۷)سر اور داڑھی کے بال صابن وغیرہ سے دھونے کا جن کا معمو ل  نہیں ہوتا اُن کے بالوں میں اکثر بد بُو ہو جاتی ہے خود کو اگر چِہ بدبُو نہ آتی ہو مگر دوسروں کو آتی ہے۔ منہ، بالوں ، بدن اور لباس وغیرہ سے بد بو آتی ہو اِس حا ل میں مسجِد کا داخِلہ حرام ہے کہ اس سے لوگوں اور فرِشتوں کو ایذا ہوتی ہے۔ ہاں بد بو ہو مگر چھپی ہوئی ہو جیسے بغل کی بد بو

 



Total Pages: 40

Go To