Book Name:Chal Madina ki Saadat mil gayi

پرایک آزمائش آپڑی ہوا یوں کہ مدنی قافلے میں جانے سے ایک دن پہلے میں قافلے کازادِراہ تیارکرنے میں مصروف تھی۔کام کے دوران گرم پانی کی بالٹی جوں ہی میں نے اٹھائی اچانک ہاتھ سے چھوٹ گئی اوراس میں موجودگرم پانی میرے پاؤں پرآگراجس کی وجہ سے میراپاؤں جل گیا اس حادِثے کاشکارہوجانے کے باوجودمیں مدنی قافلے میں سفرکی نیت کوعملی جامہ پہنانے اوراسلامی بہنوں کے ہمراہ قافلے میں شریک ہونے کی نیت سے سوگئی۔ اَلْحَمْدُلِلّٰہ عَزَّ وَجَلَّ جب میں نمازِفجرکی ادائیگی کے لئے بیدارہوئی تویہ دیکھ کرمیری حیرت کی انتہانہ رہی کہ میرے جلے ہوئے پاؤں میں رات تک جوشدّت کی تکلیف تھی وہ بالکل ختم ہوگئی، ایسالگ رہاتھاکہ میرے پاؤں میں کچھ ہواہی نہ تھا۔اَلْحَمْدُلِلّٰہعَزَّوَجَلیوں مجھے وقتِ مقررہ پر (اپنے محرم کی ہمراہی میں ) مَدَنی قافلے میں سفرکی سعادت نصیب ہوگئی۔

صَلُّواعَلَی الْحَبِیب!                  صلَّی اللّٰہُ تعالٰی عَلٰی محمَّد

 {10} جامعۃالمدینہ میں داخلہ لے لیا

            بابُ المدینہ (کراچی) میں قائم جامعۃُالمدینہ للبنات میں زیرِتعلیم ایک اسلامی بہن کے بیان کاخُلاصہ ہے:اعلی دنیاوی تعلیم حاصل کرنے کامجھے جنون کی حدتک شوق تھا۔صوم وصلوٰۃسے غافل، نیکیاں کمانے میں کاہل، دینی معلومات سے جاہل میں اپنی زندگی کے قیمتی لمحات بربادکررہی تھی۔میرااندازِگفتگوبالکل بازاری تھااوراَخلاقیات



Total Pages: 27

Go To