Book Name:Chal Madina ki Saadat mil gayi

سب کچھ ایک خواب لگ رہاتھامگریہ سب سوفیصدحقیقت تھی۔اَلْحَمْدُ لِلّٰہ عَزَّ وَجَلَّ اب میں دیگراسلامی بہنوں کے ہمراہ مَدَنی کام کرنے کی سعادت سے بھی بَہرہ مندہوتی ہوں ۔روزانہ فکرِمَدینہ کے ذَرِیعے مَدَنی انعامات کے رسالہ کوپُرکر کے ہرماہ جمع کرانامیرامعمول بن گیاہے۔ تادمِ تحریرحلقہ سطح پرمَدَنی انعامات کی ذمہ دارہ کی حیثیت سے مَدَنی کاموں کی دھومیں مچارہی ہوں ۔

اللّٰہ عَزَّ وَجَلَّ  کی امیرِاَہلسنّت پَررَحمت ہواوران کے صد قے ہماری مغفِرت ہو

صَلُّواعَلَی الْحَبِیب!                           صلَّی اللّٰہُ تعالٰی عَلٰی محمَّد

 {6} ذہنی وقلبی کیفیت تبدیل ہوگئی

          بابُ المدینہ (کراچی) میں مُقیم ایک عمررسیدہ اسلامی بہن اپنی نیک اولادپرفخرکرتے ہوئے بیان فرماتی ہیں :میں دنیاوی مصروفیات میں اتنی مگن رہتی تھی کہ نمازتک نہ پڑھاکرتی۔میری خوش بختی کہ میراایک بیٹادعوتِ اسلامی سے وابستہ ایک مبلِّغ کی انفرادی کوشش کے ذریعے قراٰن و سنّت کی عالمگیر غیرسیاسی تحریک دعوتِ اسلامی کے مہکے مہکے مشکبارمَدَنی ماحول سے وابستہ ہو گیااوروہ اس مَدَنی ماحول میں سکھائی جانے والی سنّتوں کاتذکرہ روزانہ میرے سامنے کرتالیکن میں کبھی تواس کی بات سن لیتی اورکبھی نظراندازکردیتی۔معاملہ یوں ہی چلتارہابالآخرایک دن میرے بیٹے نے مجھے دعوتِ اسلامی کے زیراہتمام ہونے والے اسلامی بہنوں کیہفتہ وارسنّتوں



Total Pages: 27

Go To